Book Name:Kia Qabar Par Phool Dalnay Say Murday Ki Naikiyan Barhti Hain

رَسُول اور اللہ پاک کے نىک بندوں کى صحبت  مىں ہى عافىت ہے ورنہ عام دوستوں کے دَرمیان رہ کر  گناہوں سے بچنا بہت مشکل ہے ۔  

کیا جَنَّت میں اولاد ہو گی؟

سُوال:کیا  جَنَّت مىں اولاد ہو گى؟ (بابُ المدینہ کراچی سے سُوال)

جواب:جى ہاں !جَنَّت مىں اولاد ہو گى ۔ ([1])

مَیِّت کی بخشش ہونے کی صورت میں جَنَّت میں داخِلہ کب ہو گا؟

 سُوال:اگر مَرنے والے کی بخشش ہو جائے تو کیا اس کو اسی وقت جَنَّت مىں داخِل کر دىا جاتا ہے  ىا قىامت کے دِن داخِل کىا جائے گا؟

جواب:اگر مَرنے والے کی بخشش ہو جائے تو اس کى قبر مىں جَنَّت کى کھڑکى کھول دی جاتى ہے، جس سے وہ لطف اندوز ہوتا رہتا ہے ۔  باقاعدہ جَنَّت مىں داخِلہ تو قىامت کے دِن ہوگا ۔ ([2])(مَدَنی مذاکرے میں شریک مفتی صاحب نے فرمایا:) شہدا کى رُوحىں عرش کے نىچے قندىلوں مىں پرندوں کے پوٹوں مىں ہوتى ہىں اور انہیں جَنَّت میں آنے جانے کی اِجازت ہوتى ہے ۔

  یوں ہی اللہپاک جن جن کے لیے چاہے تو ان کى اَرواح کا جَنَّت میں آنا جانا رہتا ہے ۔ ([3])باقى رہا  جَنَّت میں داخِلہ تو  وہ قىامت کے دِن ہى ہو گا  ([4]) اور سب سے پہلے حضور نبىٔ کرىم صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم جَنَّت میں تشرىف لے جائىں گے ۔ ([5])  

روزے میں مِسواک کرنا

سُوال:کیا روزے میں مِسواک کرنا جائز ہے ؟

جواب:جس طرح روزے کے عِلاوہ مِسواک کرنا سُنَّت ہے اِسى طرح روزے مىں بھى مِسواک کرنا سُنَّت ہے ۔ ([6])

کیا شوگر Lowہونے پر روزہ توڑنے کی اِجازت ہے؟

سُوال: کىا شوگر والا مرىض شوگرLow ہونے کى وجہ سے روزہ توڑ سکتا ہے؟ (YouTubeکے ذَریعے سُوال)

جواب:شوگرLow ہوتے ہى روزہ توڑ دىنے کى اِجازت نہىں ۔ روزہ توڑنے کی اِجازت اس وقت ہے جب جان جانے ىا عقل چلى جانے کا خوف ہو ۔ اِس کا عِلم یوں ہوسکتا ہے کہ اس کا اپنا تجربہ ہے ىا کوئی ماہر طبىب  جو نىک خوفِ خُدا والا ہو وہ کہےکہ روزے کے سبب نقصان ہوگا تو اب روزہ چھوڑ سکتے ہیں ۔ ([7]) آج کل ڈاکٹر بات بات پر کہہ دىتے ہىں کہ روزہ مَت رکھنا شرىعت نے کوئى سختى نہىں کی تو ان کے کہنے پر روزہ نہیں چھوڑ سکتے ۔ یوں ہی ڈاکٹر معمولی مَرض میں کہہ دیتے  ہیں کہ ”بىٹھ کر نماز پڑھنا، اِسلام میں بہت آسانی ہے ۔ “بے شک اِسلام میں آسانی ہے لىکن جو اللہپاک اور اس کے  رَسُولصَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمنے فرماىا وہ اِسلام ہے، ہم نے اپنی سمجھ سے کچھ بول دیا تو یہ اِسلام نہىں ہے ۔

کیا روزہ دار ڈرپ  لگوا سکتا ہے؟

سُوال: شوگر Lowہونے کى صورت مىں مرىض پر کمزوری کے سبب کپکپاہٹ طارى ہوتى ہے  ۔ اگر فورى طور پر اس کو کوئى مىٹھى چىز کھلا دى جائے تو اس کى شوگر نارمل ہو جاتى ہے  ۔ اگر روزہ دار شوگر Low ہونے پر کچھ کھائے گا تو اس کا روزہ ٹوٹ جائے گا ۔ اگر روزہ دار کو میٹھا کھلانے کے بجائے گلوکوز وغیرہ کى ڈرپ لگا دى جائے تو اس سے اس کی  شوگر نارمل ہو جائے گی اور اس کا روزہ بھى نہىں ٹوٹے گا ۔ اِس بارے میں آپ کیا اِرشاد فرماتے ہیں؟ (رُکنِ شُوریٰ کا سُوال )

جواب:مَاشَآءَ اللّٰہ !اگر ایسا کر لیا جائے تو  مدىنہ مدىنہ ۔ (ڈرپ وغیرہ لگانے کے سبب روزہ بھی نہیں ٹوٹے گا([8])اور شوگر بھی نارمل ہو جائے گی ۔ )

 



[1]    اگر مسلمان(جنت میں) اولاد کی خواہش کرے تو اس کا حمل اور وضع(بچے کاماں کے پیٹ میں ٹھہر نا اور اس کی پیدائش) اور پوری عمر (یعنی تیس سال کی)، خواہش کرتے ہی ایک ساعت میں ہو جائے گی ۔ (بہارِ شریعت، ۱ / ۱۶۰، حصہ : ۱)نبیٔ اکرم صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم نے اِرشاد فرمایا :  مؤمن جب جنَّت میں اَولاد کی خواہش کرے گا تو اس کا حمل، پیدائش اور بڑا ہونا پَل بھر میں ہو جائے گا ۔  (ترمذی، کتاب صفة الجنة  ، باب  ما  جاء  فی   كلام الحور العين، ۴ / ۲۵۴، حدیث : ۲۵۷۲ دار الفكر بيروت)اِس حدیث سے معلوم ہوا کہ بعض جنتی اَولاد چاہیں گے اور ان کے اولاد ہو گی مگر  اَولاد کی پیدائش، اس کی پَرورش، اس کا تیس سالہ جوان ہوجانا ایک ہی گھڑی میں ہو گا، وہ بچے یا تو دُنیاوی عورتوں سے ہوں گے یا حور کے شکم سے ۔  معلوم ہوا کہ حور سے اولاد ہوسکتی ہے کہ جنتی نورانی ہیں اور حوریں نور مگر اولاد کی خواہش پر انہیں اولاد ملے گی اسی نوری مخلوق سے ۔ (مراٰۃ المناجیح، ۷ / ۵۱۱) 

[2]    مراٰۃ المناجیح ، ۱ / ۱۲۶  ماخوذاً 

[3]    مسلم، کتاب الامارة، باب بيان ارواح الشهداء فی الجنة ...الخ، ص۸۰۷، حدیث : ۴۸۸۵  دار الکتاب العربی بیروت

[4]    مشہور   مُفَسّر، حکیمُ الْاُمَّت حضر تِ مفتی احمد یار خان رَحْمَۃُ اللّٰہِ  عَلَیْہِ فرماتے ہیں :  وہ (نماز کے بعد آیَۃُ الْکُرْسِی پڑھنے والا)مَرتے ہی جنَّت میں جائے گا قیامت سے پہلے روحانی طور پر اور بعدِ قیامت جسمانی طور پربھی لہٰذا اس حدیث پر یہ اعتراض نہیں کہ قیامت سے پہلے جنَّت میں داخلہ کیسا؟ خیال رہے کہ عام مسلمین کی قبروں میں جنَّت کی ہوا اور خوشبو آتی ہے یہ خود وہاں نہیں پہنچتے نہ جسمًا نہ روحًا  ۔ جنَّت میں پہنچ جاتے ہیں جیسے شہدا اوریہ لوگ ۔ (مراٰۃ المناجیح ، ۲ / ۱۲۶)

[5]    دلائل النبوة، الفصل الرابع ذکر الفضیلة الرابعة باقسام الله بحیاته وتفردہ بالسیادة لولد آدم فی القیامة...الخ، الجزء : ۱، ص۳۳، حدیث :  ۲۷ المکتبة العصرية  بیروت 

[6]    البحرالرائق، کتاب الصوم ، باب ما یفسد الصوم وما لا یفسدہ ، ۲  / ۴۹۱ کوئٹه  - روزہ کی حالت میں ہر قسم کی مِسواک کر سکتے ہیں اس کے کرنے سے روزہ نہیں ٹوٹتابلکہ جس طرح عام دِنوں میں مِسواک کرنا سُنَّت ہے اِسی طرح روزہ کی حالت میں بھی سُنَّت ہے ہاں البتہ یہ بات یاد رہے کہ اگر روزہ دار ہونا یاد ہو اور چبانے سے ریشے ٹوٹے یا ذائقہ محسوس ہو تو چبانے سےبچنا چاہئے  ۔

(فتاویٰ اہلسنَّت(قسط9)، ص۱۴مکتبۃ المدینہ باب المدینہ کراچی)

[7]    در مختار مع رد المحتار ، کتاب الصوم، فصل فی العوارض ، ۳ / ۴۶۴-۴۶۳  ماخوذاً

[8]    فتاویٰ مفتی اعظم، ۳ / ۳۰۲.امام احمد رضا اکیڈمی- فتاویٰ فیض الرسول، ۱ / ۵۱۶ شبیر برادرز مرکز الاولیا لاہور



Total Pages: 7

Go To