Book Name:Jannatiyon Ko Sab Say Pehlay Kia Khilaya Jaye Ga

پڑے ہیں یاں خود جہت کو لالے کسے بتائے کِدھر گئے تھے

                                                                                                        (حدائقِ  بخشش)

       خرد کا معنیٰ ہے عقل اور سمجھ ،گمان یعنی خیال،جہت کا معنیٰ ہے سمت یا ڈائریکشن۔شعر کا مطلب یہ  ہوا کہ  عقل سے کہہ دو کہ اب ہتھیار ڈال دے سوچے نہیں کیونکہ گزرنے والے خیال سے بھی وَراءُ الوریٰ ہو گئے ہیں،بلکہ یہاں خود جہت اور سمت کو بھی لالے پڑ ے ہیں نہ اوپر نہ نیچے نہ دائیں نہ بائیں۔ اِس طرح پیارے آقا صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم اپنے سر کی آنکھوں سے اللہ پاک کی زیارت سے مُشَرَّف ہوئے  ہیں۔کس طرح دیکھا؟ یا کیسے دیکھا؟ یہ باتیں سوچنے کی نہیں بلکہ مان لینے کی ہیں۔

نماز میں وَسوسوں کے سبب بھولنا

سُوال: مجھے نماز مىں بہت وَسوسے  آتے ہىں ۔ نماز مىں سجدہ کرتا ہوں تو اىک سجدہ کر کے بھول جاتا ہوں۔اِس کا کوئی حَل بتا دیجئے۔

جواب:نماز مىں جس کو وَسوسے آتے ہوں تو  اُسے  چاہیے کہ نماز شروع کرنے سے پہلے  اپنے بائىں کندھے کى طرف تىن بار تُھو تُھو کرے اور لَاحَوْلَ وَلَا قُوَّةَ اِلَّا بِاللہِ الْعَلِىِّ الْعَظِیْم پڑھے۔ نماز مىں قىام ىعنى ہاتھ باندھ کر جب کھڑے ہوتے ہىں تو اس وقت جہاں سجدہ کرتے ہىں اس جگہ پر نظر رکھے، رُکوع مىں پاؤں پر ،سجدے مىں ناک پر اور اَلتَّحِیَّات مىں گود پر نظر رکھے اِنْ شَآءَاللّٰہ وَسوسے نہىں آئىں گے۔([1])یاد رہے کہ تُھو تُھو کرنے کا عمل دوسرے کى موجودگى مىں اِس طرح کرنا ہے کہ اسے سمجھ نہ پڑے ، ورنہ اسے دیکھ کر تعجب ہو گا نیز ہو سکتا ہے کہ وہ  بحث بھی کرے لہٰذا  اِحتىاط کى جائے ۔ ([2])

سجدوں کی تعداد بُھول جائیں تو کیا کریں؟

      اگر کوئی نماز میں بُھول جائے کہ اىک سجدہ کىا ہے یا دو سجدے؟ تو اِس موقع پر غالِب گمان جس طرف ہے اس پر عمل کیا جائے مثلاً اگر ظَنِّ غالِب ہو کہ مىں نے اىک ہى سجدہ کىا ہے تو اب دوسرا بھی کر لے۔ اگر ظَنِّ غالِب اِس طرف ہو کہ دو سجدے کر لىے ہىں تو  دو قرار دے۔  

اگر وُضو سے پہلے مِسواک کرنا بُھول جائیں تو کیا کریں؟

سُوال:اگر کوئى شخص وُضو سے پہلے مِسواک کرنا بُھول جائے تو کىا وہ نماز سے پہلے مِسواک کر سکتا ہے؟

جواب:جی ہاں ! اگر کوئى شخص وُضو سے پہلے مِسواک کرنا بُھول جائے تو وہ نماز سے پہلے مِسواک  کر سکتا ہے۔     

شادیوں میں پیسے لُٹانا کیسا ہے؟

سُوال: شادىوں مىں نوٹ لُٹائے جاتے ہىں ،اِس کے بارے مىں راہ نُمائى فرمادىجئے کہ نوٹ لُٹانا جائز ہے ىا نہىں؟

جواب:شادىوں مىں چُھوارے لُٹانا تو سُنَّت ہے۔([3]) نوٹ وغىرہ لُٹانے کا جہاں رواج ہے تو اس مىں بھی حَرج نہىں ہے البتہ ایک صورت میں چُھوارے اور نوٹ دونوں کے لُٹانے کی مُمانعت ہو گى  جىسے بارات کىچڑ سے گُزر رہى ہے اور وہاں کسى نے چُھوارے یا نوٹ  لُٹائے جو کىچڑ  یا دھول کچرے مىں گر کر ضائع ہو رہے ہیں ،اب لُٹانے والے کو بھی معلوم  ہے کہ یہ چیزیں  کىچڑ میں گِر کر ضائع ہو رہی  ہیں لیکن پھر بھی لُٹا رہا ہے اور جان بوجھ  کر ضائع کر رہا ہے تو ایسا شخص گناہ گار ہو گا ۔ اگر نوٹ یا چُھوارے صاف ستھرى جگہ پر گِر یں جہاں سے کوئی اُٹھالےگا اور کسی کے کام آئیں گے تو اب جائز ہے۔ البتہ اگر کوئی  نوٹ اىسے موقع پر لُٹا رہا ہے جہاں چھىنا جھپٹى والے لوگ ہىں ، چھینا جھپٹی کے سبب نوٹ ٹکڑے ٹکڑے ہو کر  ہاتھوں میں جا رہے ہىں تو اب بھى نوٹ  لُٹانے کی اِجازت نہىں ملے گى کیونکہ ٹکڑے ٹکڑے ہونے کے بعد یہ نوٹ کسى کام کے  نہ رہے بلکہ ضائع ہو گئے۔

تفسیر صِراطُ الجِنان کے مُطالعے کی تَرغیب

سُوال:میرا 12ماہ کے مَدَنی قافلے میں سَفر جاری ہے اور اس دَوران میں نے  مکمل فتاوىٰ رضوىہ شرىف کا مُطالعہ کر لیا ہے لہٰذا اَب مجھے کون سی کتاب کا مُطالعہ کرنا           چاہیے ؟ 

جواب:اگر آپ نے بِالاستیعاب مکمل   فتاویٰ رضویہ پڑھ لیا ہے تو یہ بڑی بات ہے،آپ کو اِس کی مُبارَک  ہو ۔ اب اگر آپ تفسیر صِراطُ الجِنان سے فىض حاصِل کرنا شروع کر دىں تو  کىا ہی بات ہے۔ تفسیر صِراطُ الجِنان شاید اس دَور کی اُردو زبان  میں لکھی گئی سب سے آخری تفسیر ہے۔ ہو سکتا ہے عُلمائے کِرام اِس کے بعد بھی مَزید   تَفاسیر لکھیں مگر اب تک کی  یہ سب سے آخری اور Latest(یعنی تازہ ترین) تفسیر ہے۔اِس کی 10 جِلدیں ہیں اور ہر جِلد میں تین تین  پارے ہیں۔ اِس میں تَرجمۂ قرآن  کنزُ الایمان بھی ہے اور  اسے آسان کرنے کے لیے تَرجمۂ کنزُ العِرفان بھی ہے،آپ اِس تفسیر کو پڑھیں اِنْ شَآءَ اللّٰہ  مزے کو بھی مزہ آجائے گا اور آپ کو  بہت سی معلومات بھی حاصِل ہوں گی۔ شیطان پڑھنے نہیں دے گا لیکن شیطان کے خلاف ہماری جنگ جاری رہے گی ۔  

قیامت کے دِن حُقوقُ العباد میں سب سے پہلے قتل کا سُوال ہو گا

سُوال:کیا یہ بات دُرُست ہے کہ بروزِ قیامت حُقو قُ العباد میں  سے سب سے  پہلے قتل کے بارے میں سُوال ہو گا ؟

جواب:جی ہاں! حدیثِ پاک میں ہے کہ قیامت کے دِن حقوقُ العباد مىں سے سب سے پہلے  قتل کے بارے مىں سُوال ہو گا۔([4])

زیادہ منافع والا دُرُود کون سا ہے؟

 



[1]    مِراۃ المناجیح ،۱/۸۹ ضیاء القرآن پبلی کیشنز مرکز الاولیا لاہور 

[2]    مزید معلومات حاصِل کرنے کے لیے شیخِ طریقت،امیرِ اہلسنَّت،بانیِ دعوتِ اسلامی حضرتِ علّامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطار قادری رضوی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کا رِسالہ” وَسوسے اور ان کا علاج“ کا مُطالعہ کیجیے ۔  (شعبہ فیضانِ مَدَنی مذاکرہ) 

[3]    اسلامی زندگی ،ص۵۳مکتبۃ المدینہ باب المدینہ کراچی

[4]    بخاری،کتاب الدیات،باب قول اللہ تعالٰی(ومن یقتل مؤمنا متعمداً...الخ ۴/۳۵۶،حدیث:۶۸۶۴ 



Total Pages: 7

Go To