Book Name:Jannatiyon Ko Sab Say Pehlay Kia Khilaya Jaye Ga

نہ رہ جاتا لىکن نمک رہ جانے کے سبب پھر گُردے فىل ہو جاتے ہىں۔ ہم اللہ پاک سے عافىت کا سُوال کرتے ہىں۔ بہرحال نمک محدود مِقدار مىں ہی کھائىے اور غىر ضَرورى نمک کے اِستعمال سے خود کو  بچائیے ۔ کھانے کے عِلاوہ جو دِىگر اِضافى چىزىں وقتاً فوقتاً کھاتے رہتے  ہىں ان سے اگر بچىں گے تو اِنْ شَآءَاللّٰہ گُردے بھى محفوظ رہىں گے، بلڈ پرىشر اور کئى بىمارىوں سے بھی  حفاظت رہے گى۔ اپنے بدن کى حفاظت کرنى چاہىے تاکہ ہم اچھى طرح عبادات بجا لاسکىں اور مَدَنى قافلوں مىں سفر کر سکىں۔  

کون سا نمک اِستعمال کرنا چاہیے؟

سُوال: کھانے مىں سمندرى نمک اِستعمال کیا جائے یا  کان کا نمک ؟ جو ڈىلر منافع کے لىے نمک میں ملاوٹ کر کے بىچتے ہىں ان کے بارے مىں آپ کىا فرماتے ہىں؟

جواب: مىرى ناقص معلومات کے مُطابق پہاڑى نمک جسے لاہورى نمک بھی کہتے ہیں  یہ زىادہ مُفىد ہے۔ ہم لوگ بڑا پىس لے کر اسے  کوٹ کر اِستعمال کرتے ہىں۔ لاہوری نمک پِسا ہوا بھی  ملتا ہے لیکن اس میں کنکر پتھر کا مِکس ہونا ممکن ہے اس  لیے کہ ملاوٹ کرنے والے تو  پانى مىں بھى ملاوٹ کر کے منرل واٹر کے نام پربیچتے ہىں ۔ترقى ىافتہ ممالک میں سختى ہوتى ہے جس کے سبب وہاں خالص پانى دَستىاب ہو جاتا ہے لىکن کم ترقى ىافتہ ممالک مىں ملاوٹىں زىادہ ہوتى ہىں۔لہٰذا ملاوٹ کرنے والے نمک مىں بھى پتھر وغىرہ پىس دىتے ہوں گے۔اللہ پاک انہیں ہداىت دے کہ اتنى  سستى چىز مىں بھى ملاوٹ کرتے ہىں اور  پىسے کھىنچنے کے لىے لوگوں کى جانوں سے کھىلتے ہىں۔ نمک میں  اگر ملاوٹ کو چىک کرنا چاہیں تو تھوڑا سا نمک پانى مىں گھلا لىں، اگر نمک گھلنے کے بعد کچھ ذَرّات پانى کى تہہ مىں نظر آئیں تو یہ ملاوٹ والا کچرا ہوگا جو پانی میں گھلا نہیں ۔  

برف باری میں جامعۃ المدینہ کی دُعائے مدینہ

سُوال: اتنى سردى مىں برف پر بچوں کو کھڑا کر کے دُعائے مدىنہ کروانا کىسا؟(جامعۃ المدینہ فیضانِ مدینہ،تحصیل نکیال ضلع کوٹلی کشمیر میں ہونے والی دُعائے مدینہ کے مَناظر دِکھائے گئے اور پھر یہ سُوال کیا گیا۔)

جواب:اتنى سردى مىں بچوں کو  گھروں مىں رکھنا کىسا؟ اىسے سرد  علاقوں مىں انہیں  پڑھانا کىسا ؟ اىسى سردى مىں انہیں پانى پلانا اور  وُضو کروانا کىسا؟انہیں  نماز پڑھوانا اور  مسجد لے جانا کىسا ؟اِس طرح کے  بہت سارے سُوالات قائم ہوتے ہىں۔ ظاہر ہے کہ  جہاں بَرف باری ہوتى ہىں تو وہاں کے باشندے اس کے عادى ہوتے ہىں اور اسے   بَرداشت کر لىتے ہىں۔جب زندگى کا سارا نِظام ہى چل رہا ہے تو برف بارى مىں صِرف دُعائے مدىنہ پر ہى سُوال کىوں؟ اللہ پاک انہیں  بَرکت دے کہ مَاشَآءَاللّٰہ دعوتِ اسلامى کہاں کہا ں ہے۔ میں نے برف بارى کبھی دىکھى نہىں اور نہ میں اس میں کھڑا ہو سکتا  ہوں لىکن مىرى دعوتِ اسلامى کا مَدَنى کام برف بارى مىں بھى ہو رہا ہے ،بس یہ اللہپاک کى شان  ہے۔

مٹھائی میں شکر ڈالیں یا سکرین؟

سُوال:بعض لوگ مٹھائى بنانے کے لىے شکر اِستعمال کرتے ہىں اور بعض لوگ سکرىن،تو یہ اِرشاد فرمائىے کہ مٹھائى مىں شکر ڈالنا دُرُست ہے ىا سکرىن ؟

جواب:مىں تو  شکر اور سکرىن دونوں سے ڈرتا (یعنی اِستعمال کرنے میں اِحتیاط کرتا) ہوں مگر شکر حَسبِ ضَرورت اِستعمال ہو ہى جاتى ہے۔سکرىن تو مٹھائیوں میں دھوکے سے اِستعمال ہوتى ہے ورنہ  اگر گاہک کو پتا چل جائے کہ اِس مىں سکرىن ہے  تو وہ یہ مٹھائی کبھی بھی نہىں خرىدے گا۔ سکرین  مىٹھا زہر ہے اور لوگ اسے پسند بھی نہیں کرتے۔اگر چىنى والى چىز ہے تو بتانے کى ضَرورت نہىں ہے کیونکہ سب کو معلوم ہوتا  ہے کہ مٹھائی کو  چىنى سے ہی  مىٹھا کیا جاتا ہے، کوئی بھی اسے شہد سے مىٹھا نہىں کرتا۔ اگر کسی کو شہد کى مٹھائى کہہ کر دی حالانکہ وہ چىنى  کى تھی تو جھوٹ بولنے کے سبب گناہ گار ہوگا البتہ واقعى شہد کى مٹھائی ہے تو اب  کہنے مىں کوئى حرج نہىں ہے۔

میٹھے کے اِنسانی صحت پر مُضِر اَثرات

سُوال:اِنسانى صحت کے لىے شکر اور  سکرىن کے کىا مضر اَثرات ہىں؟ ([1])

جواب:مٹھاس کى ایک حَد تک اِنسان کے جسم کو ضَرورت رہتى ہے لىکن ہر چىز Limited(یعنی محدود) ہے۔اگر Unlimited (یعنی غیر محدود) ہو گى تو نقصان کرے گى۔ محدود مٹھاس بھی سفىد چىنى کے ذَرىعے حاصِل نہ کى جائے کیونکہ سفىد چىنى کے متعلق کہا جاتا ہے کہ یہ نقصان دہ ہے۔ سفىد چىنى کے مُضِر اَثرات میں سے  بَدن کا موٹا ہونا ، شوگر ہو جانا بھی ہے۔ جو لوگ بہت تیز میٹھی چائے پىتے ہىں ،یُوں ہی گھروں مىں جو مىٹھى ڈشىں پکتى ہىں تو ان مىں بھی بہت زیادہ چىنى ڈالتے ہىں تو اىسے لوگوں کا شوگر کے مَرض سے بچنا بڑا مشکل ہوتا ہے اور جس کو شوگر ڈکلىئر ہو جاتی ہے تو اس کى زندگى تلخ،کڑوى اور بَدمزہ ہوجاتى ہے۔ گویا اس نے اپنے حصے کی شوگرجلدى جلدى کھا کر اپنا  خون مىٹھا کر لىا۔اس لىے میٹھے کو جلدی جلدى کھا کر ختم کرنے کے بجائے تھوڑا تھوڑا  اِستعمال کرکے زندگى کے آخر مىں پورا کرنا چاہىے۔  

سفید چینی کے بجائے گڑ اِستعمال کیجیے

       اب بَراؤن شوگر آئی ہے جس کے متعلق یہ کہا جاتا ہے کہ یہ نقصان دہ نہىں ہے لىکن ایسا ہونا مشکل نظر آتا ہے ۔ اب  خُدا جانے بَراؤن شوگر اصل میں بھی ہے ىا اِسی  وائٹ شوگر کو بَراؤن کلر ڈال کر بَراؤن شوگر بنا کر مہنگے داموں بىچ رہے ہیں۔ ممکن ہو تو گڑ اِستعمال کیجیے کیونکہ  گڑ صحت کے لىے مفىد ہے۔اگر اسے Limit(یعنی حَد) کے اندر اِستعمال کیا جائے تو اس کے  کافى فوائد ہىں لیکن شوگر کے مَرىض کے لىے  گُڑ بھى نقصان دہ ہے۔چائے بھى بہت سے لوگ گُڑ کى پىتے  ہىں۔اَلْحَمْدُلِلّٰہمجھے بھی گُڑ کی چائے  اچھى لگتى ہے۔  

اِنتقال کے وقت ہاتھ اُٹھانا

سُوال: کوئى مسلمان اِنتقال کے وقت اپنے ہاتھ اِس طرح کرے جىسے کسى سے مُصافحہ کىا جاتا ہے ،پھر فوت ہو جائے تو اس کے بارے مىں آپ کىا فرماتے ہىں؟

جواب:ظاہر ہے کہ یہ ایک پَردہ ہے ۔اب اس پَردے کو کون اُٹھائے کہ اِنتقال کرنے والے  نے کس سے مُصافحہ کىا ہے؟ اگر اِنتقال کرنے والا والد یا کوئى عزیز ہے،تو اب اس کے متعلق یوں کہہ



[1]    یہ سُوال شعبہ فیضانِ مَدَنی مذاکرہ کی طرف سے قائم کیا گیا ہے جبکہ جواب امیر اہلسنَّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کا عطا فرمودہ  ہی  ہے ۔  (شعبہ فیضانِ مَدَنی مذاکرہ)



Total Pages: 7

Go To