Book Name:Ummahatul Momineen

مگر نو بیبیاں حضورصلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم کی وفات اقدس کے وقت موجود تھیں ۔

          ان گیارہ امت کی ماؤں میں سے چھ خاندان قریش کے اونچے گھرانوں کی چشم وچراغ تھیں جن کے اسماء مبارکہ یہ ہیں :

{۱} خدیجہ بنت خویلد {۲} عائشہ بنت ابوبکر صدیق  {۳} حفصہ بنت عمر فاروق  {۴}ام حبیبہ بنت ابوسفیان  {۵} ام سلمہ بنت ابوامیہ  {۶} سودہ بنت زمعہ

         اورچار ازواج مطہرات خاندان قریش سے نہیں تھیں بلکہ عرب کے دوسرے قبائل سے تعلق رکھتی تھیں وہ یہ ہیں :

 {۱} زینب بنت جحش   {۲}  میمونہ بنت حارث   {۳} زینب بنت خزیمہ

 {۴} جویریہ بنت حارث اور ایک زوجہ یعنی صفیہ بنت حیی ،یہ عربی النسل نہیں تھیں بلکہ خاندان بنی اسرائیل کی ایک شریف النسب رئیس زادی تھیں ۔

          اس بات میں بھی کسی مؤرخ کا اختلاف نہیں ہے کہ سب سے پہلے حضور صلی اللہ تعالیٰ علیہ والہ وسلم نے حضرت خدیجہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا سے نکاح فرمایا اور جب تک وہ زندہ رہیں آپ نے کسی دوسری عورت سے عقد نہیں فرمایا۔

( شرح العلامۃ الزرقانی، المقصد الثانی،الفصل الثالث فی ذکر ازواجہ الطاہرات، ج۴،ص۳۵۹)

 

ان کے مولیٰ کے ان پر کروڑوں درود                       ان کے اصحاب وعترت پہ لاکھوں سلام

پارہائے صحف غنچہائے قدس                                       اہل بیت نبوت پہ لاکھوں سلام

اہل اسلام کی مادران شفیق                                   بانوان طہارت پہ لاکھوں سلام

(حدائق بخشش،حصہ دوم، ص۲۲۳)

 

 



Total Pages: 58

Go To