Book Name:Bachon Ko Dhoop Laganay Kay Fawaid

سُوال : مىں اُٹھتے بیٹھتے ، چلتے پھرتے کلمہ شرىف پڑھتا رہتا ہوں تو کیا ایسا کرنا دُرُست ہے ۔  (مدینۂ مُنَوَّرہ سے سُوال) 

جواب : اُٹھتے بىٹھتے ، چلتے پھرتے کلمۂ طَىِّبَہ پڑھنا اچھى بات ہے البتہ بیتُ الخلا اور دِیگر گندى جگہوں پر پڑھنے سے بچنا  ہو گا ۔  

خوفناک طوفان میں مسجد و مَزار کا بچ جانا

سُوال : گزشتہ دِنوں انڈونىشىا میں خوفناک سونامى آىا ۔  مناظر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ طوفان کے سبب پوری بستی ملبے کا ڈھیر بن گئی لیکن ایک مسجد بالکل صحىح سلامت دِکھائى دے رہى ہے تو مسجد کے اس طرح بچ جانے کو معجزہ ىا کرامت کہا جا سکتا ہے ؟

جواب : مسجد کے بچ جانے کو معجزہ نہیں کہا جاسکتا اس لیے کہ معجزہ نبی سے اِعلان نبوت کے بعد ظاہر ہوتا ہے ۔ ([1])البتہ اتنے شدید طوفان یا زلزلے میں کوئی مسجد یا مزار شریف سلامت رہے تو اسے اللہ پاک کى رَحمت کہہ سکتے ہیں ۔  اگر سلامت نہ بھی رہیں جب بھی مسجد یا مزار شریف  کی عظمت پر  کوئی حَرف نہیں آئے گا ۔  خود کعبہ شرىف کى تارىخ مىں اىسا ملتا ہے کہ سىلاب کی وجہ سے شہید ہو گیا تھا ۔ ([2]) نیز جب ىزىدى لشکر نے منجنىق کے ذَرىعے پتھر بَرسائے تھے تو اس وقت بھی کعبہ شرىف کے غلاف مىں آگ لگ گئی تھی ۔ ([3]) تو مُقَدَّس مقامات یا جگہوں پر کوئى اچھى علامت نظر آئے تو مَرحبا لیکن اگر اس طرح کا کوئى نقصان ہو جائے تو ان کی عظمت و شان پر شک و شُبہ نہیں کیا جا سکتا ۔  

کیا طوطے کے سَلام کا جواب دینا بھی واجب ہے ؟

سُوال : طوطے کو سَلام کرنا سکھاىا گیا ہے ، اب وہ بار بار سَلام کرتا ہے تو کىا اس کے سلام  کا جواب دىنا بھی  واجب ہو گا؟ (میسج کے ذَریعے سُوال)

جواب : طوطے کے سَلام کا جواب دینا  واجِب نہىں ۔

ثواب کے لیے نِیَّت ضَروری ہے

سُوال : اِسلامى مُعاشرے مىں اللہ  پاک کى عبادت کرنے کے ساتھ ساتھ ناپ تول پورا کرنے ، غرىبوں کى مدد کرنے ، اچھے اَخلاق سے پىش آنے ، دوسروں کو تکلىف نہ دىنے وغیرہ باتوں کا بھى ذہن دىا جاتا ہے تو یہ اِرشاد فرمائیے کہ کىا اِن کاموں کو کرنے سے پہلے بھى اچھی نىت  ضَرورى ہے ؟

جواب : کسی بھی مُباح(یعنی جائز) کام میں ثواب جبھی ملے گا جب وہ  اچھی نیت سے کیا جائے گا اور جو چیز باعثِ ثواب ہے اس میں بِلا نیت بھی ثواب ہے ۔  اَلبتہ اس میں مزید اچھی نیتیں کر کے ثواب بڑھایا جا سکتا ہے ۔ لہٰذا اِن کاموں میں بھی اچھی اچھی  نیتیں کر لینی چاہئیں ۔  یاد رَکھیے !اَعمال کا دارومدار نىتوں پر ہے  تو جىسى نىت وىسا اس کا پھل ۔

تسبیح زبان سے پڑھنا اَفضل ہے یا دِل میں؟

سُوال : ذِکر و اَذکار ىا نماز کے بعد تسبىحِ فاطمہ زبان سے پڑھنا بہتر ہے ىا بغىر زبان ہلائے دِل میں پڑھنا افضل ہے ؟ (سوشل میڈیا کے ذَریعے بلوچستان سے سُوال)

جواب : جہاں کچھ پڑھنا ہوتا ہے تو وہاں زبان سے پڑھنا ضَروری ہے اور آواز بھی اتنى ہو کہ عُذر نہ ہونے کی صورت میں اپنے کانوں سے سُن لے ۔ ([4]) لہٰذا تسبىحِ فاطمہ بھى زبان سے پڑھنى ہو گى ۔

مَیِّت کی تجہیز و تکفین وغیرہ کے اَخراجات کا حکم

سُوال : شادی شُدہ بہنوں یا  بیٹیوں کا اِنتقال ہو جائے تو ہمارے یہاں اُن کی  تجہیز و تکفین کا خرچ والدین اُٹھاتے ہیں ، اس کا  کیا حکم ہے ؟نیز ان کے اِیصالِ ثواب کے لیے کی جانے والی قرآن خوانی وغیرہ میں ہونے والے اَخراجات کا کیا حکم ہے ؟

 



[1]    وہ عجیب و غریب کام جو عادتًا ناممکن ہوں جیسے مُردوں کو زندہ کرنا ، اِشارے سے چاند کے دو ٹکڑے کر دینا ، اُنگلیوں سے چشمے جاری کرنا ، ایسی باتیں اگر نبوت کا دعویٰ کرنے والے سے اس کی تائید میں ظاہر ہوں ، ان کو” معجزہ“ کہتے ہیں ۔ (کتاب العقائد ، ص۱۹مکتبۃ المدینہ باب المدینہ کراچی)

[2]    سیرة حلبیة ، باب بنیان قریش الکعبة شرفھا الله تعالٰی ، ۱ / ۲۰۴ دار الکتب العلمیة بیروت

[3]    البدایة  والنھایة ، دخول سنة اربع وستين ، ۵ / ۷۳۸ ملتقطاً دار الفکر بیروت

[4]    فتاویٰ هندية ، کتاب الصلا ة ، الباب الرابع  فی صفة الصلا ة ، ۱ / ۶۹ دار الفکر بیروت



Total Pages: 8

Go To