Book Name:Aghwa Se Hifazat Kay Aurad

پڑیں گے ۔  

کھانے کو ضائع ہونے سے بچانے کا طریقہ

سُوال : کھانے کو ضائع ہونے سے بچانے کا طریقہ بیان فرما دیجیے ۔ ( [1])

 جواب : عموماً  کھانے کے بعد بَرتنوں میں بچا ہوا سالن ، ہانڈی میں لگے ہوئے کھانے کے ذَرّات اور بچی ہوئی روٹیوں کے ٹکڑوں کو ضائع کر دیا جاتا ہے حالانکہ کھانے کے وہ ذَرّات جو کھائے جا سکتے ہوں انہیں  پھینک دینا اِسراف ہے جو سرا سر حرام اور جہنم میں لے جانے والا کام ہے ۔ لہٰذا کھانے کے بچے ہوئے اَجزاء کو پھینک دینے کے بجائے ان کی ثرید بنا لی جائے ۔ ثرید سرکار صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کو پسند تھی ۔ ( [2])

ثرید بنانے کا طریقہ یہ ہے کہ جو کچھ کھانا بچے یعنی سالن ، دال اور چاول وغیرہ اسے  فریج میں محفوظ کر  لیں ۔ جب یہ بچا ہوا کھانا زیادہ مِقدار میں جمع ہو جائے ان سب کو ایک ساتھ پکانے کے لیے ہانڈی میں ڈال دیں اور اوپر سے روٹی کے ٹکڑے ڈال کر اس میں بھگو لیں ، سالن کم ہو تو تھوڑا پانی مِلا لیں اور حَسبِ ذائقہ نمک مرچ اور زیرہ ڈال کر اسے ڈھک دیں اور کوئی وزنی چیز اس کے ڈھکن پر رکھ دیں پھر اس کو خوب اچھی طرح پکائیں ۔ جب اندازہ ہو جائے کہ یہ خوب اچھی طرح پک چکا ہے تو اس کو تھال میں نکالیں اور اوپر سے کھجور کے  ٹکڑے ڈال دیں اس طرح اِنْ شَآءَ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ   کھانا  ضائع ہونے سے بھی بچ جائے گا اور بہترین غِذا بھی تیار ہو جائے گی ۔

      اگر کوئی روٹی کے ٹکڑے اور غِذا کے دانے وغیرہ سے اس طرح ثرید نہ بنائے تو وہ انہیں پھینکنے کے بجائے مُرغیوں ، چیونٹیوں یا بکریوں کو کھلادے تو بھی یہ غذا ضائع ہونے سے بچ جائے گی ۔

روزانہ کتنا دُرُود شریف پڑھنا چاہیے ؟

سُوال : دُرُود شریف پڑھنے کی بہت زیادہ تَرغیب دِلائی جاتی ہے تو یہ اِرشاد فرمائیے کہ روزانہ کتنی تعداد میں دُرُود شریف پڑھا جائے ؟ ( لندن کے اسلامی بھائی کا سُوال)

جواب : دُرُود شریف جتنا زیادہ پڑھا جائے اتنا ہی فائدہ ہے لہٰذا زیادہ سے زیادہ دُرُود شریف پڑھنے کا مَعمول بنانا چاہیے ۔ روزانہ کم ازکم313بار دُرُود شریف پڑھ لینا چاہیے ۔

٭٭٭٭٭٭٭



[1]    اِس صفحہ کے دونوں  سُوالات  شعبہ فیضانِ مَدَنی مذاکرہ کی طرف سے قائم کیے گئے ہیں جبکہ جوابات امیرِ اہلسنَّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کے عطا فرمودہ  ہی ہیں ۔  ( شعبہ فیضانِ مَدَنی مذاکرہ)

[2]    ابوداود ، کتاب الاطعمة ، باب فی اکل الثرید ، ۳ / ۴۹۲ ، حدیث : ۳۷۸۳  دار احیاء التراث العربی بیروت 



Total Pages: 13

Go To