Book Name:Saman-e-Bakhsish

کبھی دِل جلوہ گہ سروَرِ خوباں ہوگا

میرے دل پر جو کبھی جلوئہ جاناں ہوگا

لَمعَۂ نور مرے رُخ سے نمایاں ہوگا

جلوئہ مصحفِ رُخ دِل میں جو پنہاں ہوگا

پارے پارے میں مرے قلب کے قرآں ہوگا

چوندھ جائے گی تری آنکھ بھی مہر محشر

ان کے ذَرَّہ کو جو دیکھے گا پریشاں ہوگا

دیکھ مت دیکھ مجھے گرم نظر سے خاوَر

شوخیٔ چشم سے تو آپ پریشاں ہوگا

حسن وہ پایا ہے خورشیدِ رسالت تونے

تیرے دِیدار کا طالب مَہِ کنعاں ہوگا

 

جلوۂ حسن جہاں تاب کا کیا حال کہوں

آئینہ بھی تو تمہیں دیکھ کے حیراں ہوگا

کون پوچھے گا بھلا روزِ جزا وہ بھی مجھے

اُن کی رحمت کے سوا کوئی بھی پُرساں ہوگا

چاکِ تقدیر کو کیا سوزَنِ تدبیر سئے

لاکھ وہ بخیہ کرے چاک گریباں ہوگا

مجھ کو دعویٰ نہیں عصمت کا مگر بے موقع

عیب جوئی نہ کرے گا جو سخن داں ہوگا

دلِ دشمن کے لیے تیغِ دو پیکر ہے سخن

چشمِ حاسد کو مرا شعر نمک داں ہوگا

عمر ساری تو کٹی لہو میں اپنی نوریؔ

کب مَدینے کی طرف ُکوچ کا ساماں ہوگا

 

میرا گھر غیرتِ خورشید دَرخشاں ہوگا

میرا گھر غیرتِ خورشیدِ دَرخشاں ہوگا

خیر سے جانِ قمر جب کبھی مہماں ہوگا

 



Total Pages: 123

Go To