Book Name:Saman-e-Bakhsish

دِل ذِکرِ شریف اُن کا ہر صبح و مسا کرنا

دن رات جپا کرنا ہر آن رَٹا کرنا

سینہ پہ قدم رکھنا دل شاد مرا کرنا

دَردِ دِلِ مُضطَر کی سرکار دَوا کرنا

سَنسار بھکاری ہے جگ داتا دَیا کرنا

ہے کام تمہارا ہی سرکار عطا کرنا

کب آپ کے کوچہ میں منگتا کو صدا کرنا

خود بھیک لیے تم کو منگتا کو ندا کرنا

دن رات ہے طیبہ میں دولت کا لٹا کرنا

منگتا کی دَوا کرنا منگتا کا بھلا کرنا

ہم عین جفا ہی ہیں ہم کو تو جفا کرنا

اور تم تو کرم ہم پر اے جانِ وَفا کرنا

 

 

دن رات خطاؤں پر ہم کو ہے خطا کرنا

اور تم کو عطاؤں پر ہر دم ہے عطا کرنا

ہم اپنی خطاؤں پر نادِم بھی نہیں ہوتے

اور ان کو عطاؤں پر ہر بار عطا کرنا

ہم آپ ہی اپنے پَر کرتے ہیں سِتَم حد بھر

اور ان کو کرم ہم پر ہے حد سے سوا کرنا

ہے آٹھ پہر جاری لنگر مرے داتا کا

ہر آن ہے سرکاری باڑے کا لٹا کرنا

محروم نہیں جس سے مخلوق میں کوئی بھی

وہ فیض انہیں دینا وہ جود و سخا کرنا

ہے عام کرم ان کا اپنے ہوں کہ ہوں اَعدا

آتا ہی نہیں گویا سرکار کو ’’لَا ‘‘ کرنا

محروم گیا کوئی مایوس پھرا کوئی

دیکھا    نہ   سنا    اُن   کا    اِنکار   و   اَبٰی  کرنا

مایوس گیا کوئی محروم پھرا کوئی

دُنیا کے سلاطیں کو کب آیا عطا کرنا

 

دُکھ دَرد کہیں کس سے یہ کام تو ہیں اُن کے

فریاد سنا کرنا اور داد دِیا کرنا

 



Total Pages: 123

Go To