Book Name:Zoq-e-Naat

بچا لے غلاموں کو مجبوریوں سے

کہ تو عبدِ قادِر ہے یاغوثِ اعظم

 

دکھا دے ذرا مہر رُخ کی تجلی

کہ چھائی ہے غم کی گھٹا غوثِ اعظم

 

گرانے لگی ہے مجھے لغزشِ پا

سنبھالو ضعیفوں کو یاغوثِ اعظم

 

لپٹ جائیں دامن سے اُس کے ہزاروں

پکڑ لے جو دامن ترا غوثِ اعظم

 

سروں پر جسے لیتے ہیں تاج والے

تمہارا قدم ہے وہ یاغوثِ اعظم

 

دوائے نگاہے عطائے سخائے

کہ ُشد دردِ مَا لادوا غوثِ اعظم

 

ز ہر رُو ہر راہ رَوِیم بگرداں

سوئے خویش راہم نما غوثِ اعظم

 

اسیرِ کمندِ ہوایم کریما

بہ بخشائے بر حالِ ما غوثِ اعظم

 

فقیر تو چشم کرم از تو دارد

نگاہے بحالِ گدا غوثِ اعظم

 

گدایم مگر اَز گدایانِ شاہے

کہ گویندش اَہلِ صفا غوثِ اعظم

 

کمر بست بَر خونِ َمن نفسِ قاتل

اَغِثْنِیْ     برائے      خدا      غوثِ      اعظم

 

اَدھر میں پیا موری ڈولت ہے نیّا

کہوں کا سے اپنی بتھا غوثِ اعظم

 

بپت میں کٹی موری سگری عمریا

کرو مو پہ اپنی دَیا غوثِ اعظم

 

 

 



Total Pages: 158

Go To