Book Name:Zoq-e-Naat

شانۂ شہ دل ہے غم سے چاک چاک

اے اَنیسِ سینہ چاکاں اَلْغِیَاث

 

سرمہ اے چشم و چراغِ کوہِ طور

ہے سیہ شامِ غریباں اَلْغِیَاث

 

ٹوٹتا ہے دَم میں ڈَورا سانس کا

ریشۂ مسواکِ جاناں اَلْغِیَاث

 

آئینہ اے منزلِ اَنوارِ قدس

تیرہ بختی سے ہوں حیراں اَلْغِیَاث

 

سخت دشمن ہے حسنؔ کی تاک میں

المدد محبوبِ یزداں اَلْغِیَاث

پڑے مجھ پر نہ کچھ افتاد یاغوث

پڑے مجھ پر نہ کچھ اُفتاد یاغوث

مدد پر ہو تیری اِمداد یاغوث

 

اُڑے تیری طرف بعد فنا خاک

نہ ہو مٹی مری برباد یاغوث

 

مِرے دل میں بسیں جلوے تمہارے

یہ وِیرانہ بنے بغداد یاغوث

 

نہ بھولوں بھول کر بھی یاد تیری

نہ یاد آئے کسی کی یاد یاغوث

 

مُرِیْدِیْ    لَا تَخَف   فرماتے   آؤ

بلاؤں میں ہے یہ ناشاد یاغوث

 

گلے تک آ گیا سیلاب غم کا

چلا میں آئیے فریاد یاغوث

 

نشیمن سے اُڑا کر بھی نہ چھوڑا

ابھی ہے گھات میں صیاد یاغوث

 

خمیدہ سر گرفتارِ قضا ہے

کشیدہ خنجر جلاد یاغوث

 

 

 



Total Pages: 158

Go To