Book Name:Zoq-e-Naat

ہم سیہ ناموں کو اے تحریر دست

تو ہو دستاویز غفراں اَلْغِیَاث

 

پھر بہائیں اُنگلیاں اَنہارِ فیض

پیاس سے ہونٹوں پہ ہے جاں اَلْغِیَاث

 

بہرِ حق اے ناخن اے عقدہ ُکشا

مشکلیں ہو جائیں آساں اَلْغِیَاث

 

سینۂ پُرنور صدقہ نور کا

بے ضیا سینہ ہے وِیراں اَلْغِیَاث

 

قلبِ اَنور تجھ کو سب کی فکر ہے

کر دے بے فکری کے ساماں اَلْغِیَاث

 

اے جگر تجھ کو غلاموں کا ہے دَرد

میرے دُکھ کا بھی ہو دَرماں اَلْغِیَاث

 

اے شکم بھر پیٹ صدقہ نور کا

پیٹ بھر اے کانِ اِحساں اَلْغِیَاث

 

پشتِ والا میری پُشتی پر ہو تو

رُوبرو ہیں غم کے ساماں اَلْغِیَاث

 

مہرِ پشتِ پاک میں تجھ پر فدا

دیدے آزادی کا فرماں اَلْغِیَاث

 

تیرے صدقے اے کمر بستہ کمر

ٹوٹی کمروں کا ہو دَرماں اَلْغِیَاث

 

پائے اَنور اے سر اَفرازی کی جاں

میں شکستہ پا ہوں جاناں اَلْغِیَاث

 

نقش پا اے نو گلِ گلزار خلد

ہو یہ اُجڑا بن گلستاں اَلْغِیَاث

 

اے سراپا اے سراپا لطف حق

ہوں سراپا جرم و عصیاں اَلْغِیَاث

 

 

 



Total Pages: 158

Go To