Book Name:Zoq-e-Naat

واہ کیا مرتبہ ہوا تیرا

واہ کیا مرتبہ ہوا تیرا

تو خدا کا خدا ہوا تیرا

 

تاج والے ہوں اس میں یا محتاج

سب نے پایا دِیا ہوا تیرا

 

ہاتھ خالی کوئی پھرا نہ پھرے

ہے خزانہ بھرا ہوا تیرا

 

آج سنتے ہیں سننے والے کل

دیکھ لیں گے کہا ہوا تیرا

 

اسے تو جانے یا خدا جانے

پیش حق رُتبہ کیا ہوا تیرا

 

گھر ہیں سب بند دَر ہیں سب تیغے

ایک دَر ہے کھلا ہوا تیرا

 

کام توہین سے ہے نجدی کو

تو ہوا یا خدا ہوا تیرا

 

تاجداروں کا تاجدار بنا

بن گیا جو گدا ہوا تیرا

 

اَور میں کیا لکھوں خدا کی حمد

حمد اُسے وہ خدا ہوا تیرا

 

جو ترا ہو گیا خدا کا ہوا

جو خدا کا ہوا ہوا تیرا

 

حوصلے کیوں گھٹیں غریبوں کے

ہے اِرادہ بڑھا ہوا تیرا

 

ذات بھی تیری اِنتخاب ہوئی

نام بھی مصطفیٰ ہوا تیرا

 

جسے تو نے دیا خدا نے دیا

دَین رب کی دِیا ہوا تیرا

 

 



Total Pages: 158

Go To