Book Name:Gunaho ke Azabat Hissa 1

آیتِ مُبَارَکہ

یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا كُتِبَ عَلَیْكُمُ الصِّیَامُ كَمَا كُتِبَ عَلَى الَّذِیْنَ مِنْ قَبْلِكُمْ لَعَلَّكُمْ تَتَّقُوْنَۙ( ۱۸۳ )( پ٢، البقرة: ١٨٣ )

 ترجمۂ کنزالایمان: اے ایمان والو تم پر روزے فرض کیے گئے جیسے اگلوں پر فرض ہوئے تھے کہ کہیں تمہیں پرہیزگاری ملے ۔

فرمانِ مصطفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

جس نے کسی رُخصت اور مرض کے بغير رَمَضَانُ الْمُبَارَک کا ايک روزہ چھوڑا وہ ساری زندگی کے روزے رکھے تب بھی اس کی کمی پوری نہیں کر سکتا ۔( [1] )

روزہ قضا ہونے کے بَعْض اَسْبَاب

( 1 ): ہر وَقْت کھاتے رہنے کی عادت: ایسے شَخْص کو نفس وشیطان بھوک سے ڈراتے ہیں اور اس کے لئے روزہ رکھنا دُشْوار ہو جاتا ہے ۔ ( 2 ): پان گٹکا، سگریٹ نوشی وغَیرہ کی عادت: یہ لوگ بھی ان چیزوں سے صَبْر نہ کر پانے کی بِنا پر روزہ چھوڑ دیتے ہیں ۔  ( 3 ): مالِ دنیا کمانے کی حِرْص کہ ایسے لوگ کام کرنے میں دُشْواری آنے کے اندیشے سے روزہ چھوڑ دیتے ہیں ۔ ( 4 ): بُری صُحْبَت جس کی وجہ سے آدمی غَفْلَت میں پڑا رہتا ہے اور فَرَائض و واجِبَات ادا کرنے کی اسے کچھ فِکْر نہیں ہوتی ۔ ( 5 ): بیماری کا بہانہکہ بعض نادان شَرْعِی مسئلے کا لحاظ کئے بغیر کسی ہلکے سے مرض کا بہانہ بنا کر روزہ چھوڑ دیتے ہیں ( نوٹ: مرض میں روزہ چھوڑنے کی رخصت کب ہوگی اس کے لئے فیضانِ رَمَضان، صفحہ 146 کا مطالعہ کیجئے ) ۔

پابندِ روزہ بننے کے لئے

٭ پیٹ کا قفلِ مدینہ لگائیے ۔ ٭ پان گٹکا، سگریٹ نوشی اور ہر قِسْم کی مُضِرِّ صِحَّت ( Harmful to health ) چیز اِسْتِعْمَال کرنے کی عادت سے پیچھا چھڑائیے ۔ ٭ نیک پرہیزگار، روزہ دار لوگوں کی صُحْبَت اِخْتِیار کیجئے ، اِنْ شَآءَ اللہ! خود بھی روزہ دار بننے کا ذِہْن بنے گا ۔ ٭ دل سے مال جَمْع کرنے کی حِرْص کا خاتِمہ کیجئے ۔ ٭ روزہ رکھنے کے فَضَائِل وبَرَکات اور فرض روزہ نہ رکھنے کے عذابات کا مُطَالَعہ کیجئے ، اِنْ شَآءَ اللہ! روزوں کی پابندی کا ذِہْن بنے گا ۔

مَدَنی مشورہ: روزے کے فَضَائِل ومَسَائِل کے مُتَعَلِّق تفصیلی مَعْلُومات جاننے کے لئے شَیْخِ طَریْقَت ، اَمِیْرِ اہلسنت حضرت علَّامہ مولانا ابو بِلال محمد الیاس عطَّار قادِری دَامَتْ بَـرَکَاتُہُمُ الْعَالِـیَہ کی کِتاب فیضانِ رَمَضان( تَخْرِیج شُدہ ) کا مُطَالَعہ کیجئے ۔

حلقوں میں یاد کروائی جانے والی دُعا

کھانا کھانے سے پہلے کی دُعا

بِسْمِ اللّٰہِ وَبِاللّٰہِ الَّذِیْ لَا یَضُرُّ مَعَ اسْمِہٖ

شَیْءٌ فِی الْاَرْضِ وَلَا فِی السَّمَآءِ یَا حَیُّ یَا قَیُّوْمُ

ترجمہ: اللہ پاک کے نام سے شروع کرتا ہوں جس کے نام کی برکت سے زمین وآسمان کی کوئی چیز نُقْصان نہیں پہنچا سکتی، اے ہمیشہ زندہ وقائم رہنے والے ۔( [2] )

شروع کرنے سے قَبْل یہ دُعا پڑھ لی جائے ، اگر کھانے پینے میں زَہْر بھی ہو گا تو اِنْ شَآءَ اللہ! اثر نہیں کرے گا ۔( [3] )

٭ ٭ ٭ ٭ ٭ ٭

 



[1]    ترمذی ،  کتاب الصوم ،  باب ماجاء فی الافطار متعمدًا ،  ص٢٠٣ ،  حدیث: ٧٢٣.

[2]    كنز العمال ،  كتاب المعيشة والعادات ،  ١٥ / ١٠٩ ،  حديث: ٤٠٧٩٢ ومدنی پنج سورہ ،  ص۲۰۵.

[3]    كنز العمال ،  كتاب المعيشة والعادات ،  قسم الاقوال ،  ١٥ / ١٠٩ ،  حديث: ٤٠٧٩٢.



Total Pages: 42

Go To