Book Name:Gunaho ke Azabat Hissa 1

گمراہیت کی چند مِثَالَیں

٭ عذابِ قَبْر کا اِنکار کرنا( [1] )٭ تقدیر کا اِنکار کرنا( [2] ) ٭ کَرَاماتِ اَوْلِیَاء کا اِنکار کرنا( [3] )٭ حضرت سیِّدنا عَلِیُّ الْمُرْتَضَی کرَّمَ اللہُ تَعَالٰی وَجْہَہُ الْکَرِیْم کو شَیْخَیْنِ کَرِیْمَیْن ( یعنی حضرت سیِّدنا ابوبَکْر صِدِّیْق اور حضرت سیِّدنا عُمَر فاروق رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا ) سے اَفْضَل کہنا ۔( [4] )٭ یزید کے فاسِق وفاجِر ہونے سے اِنکار کرنا( [5] ) وغیرہ

” گمراہی وبَدْمَذہَبی“ کے مُتَعَلِّق  مختلف اَحْکَام

( 1 ): عقیدے کی خرابی عمل کی خرابی سے کہیں زِیادہ بُری ہے ۔( [6] ) ( 2 ): اس لئے بَدْمَذْہَب اگرچہ کیسا ہی نمازی ہو، اللہ پاک کے نزدیک سُنّی بے نمازی سے کئی درجے زیادہ بُرا ہے ۔( [7] ) ( 3 ): بَدْمَذْہَب و گُمْراہ سے قرآن و حدیث کا عِلْم حاصِل کرنا بھی جائز نہیں ۔( [8] ) مُسْلِم شریف کی رِوَایت ہے : ”اِنَّ هٰذَا الْعِلْمَ دِينٌ فَانْـظُرُوْا عَمَّنْ تَأْخُذُوْنَ دِينَكُمْ بے شک یہ عِلْم تمہارا دین ہے تو تم غور کر لو کہ اپنا دین کس سے حاصِل کر رہے ہو ۔( [9] ) ( 4 ): بَدْمَذْہَب کی تَعْظِیم حرام ہے ( [10] ) اور شرعاً ( اس کی ) تَوْہین واجِب ( ہے ) ۔ ( [11] ) ( 5 ): ( بَدْمَذْہَب کی غیبت شرعاً غیبت نہیں بلکہ ) بَدْمَذْہَب کی بُرائیاں بَیَان کرنے کا خود شرعاً حکم ہے ۔( [12] )

آیتِ مُبَارَکہ

وَ اِمَّا یُنْسِیَنَّكَ الشَّیْطٰنُ فَلَا تَقْعُدْ بَعْدَ الذِّكْرٰى مَعَ الْقَوْمِ الظّٰلِمِیْنَ( ۶۸ ) ( پ٧، الانعام: ٦٨ )

                                                ترجمۂ کنزالایمان: اور جو کہیں تجھے شیطان بُھلاوے تو یاد آئے پر ظالموں کے پاس نہ بیٹھ ۔

اس آیت میں ”ظالِموں“ سے مُراد گمراہ و بَدْمَذْہَب، فاسِق اور کافِر لوگ ہیں ۔ ان سب کے ساتھ بیٹھنا مَمْنُوْع ہے ۔( [13] )

فرمانِ مصطفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

مَنْ وَقَّرَ صَاحِبَ بِدْعَةٍ فَقَدْ اَعَانَ عَلَى هَدْمِ الْاِسْلَامِ جس نے کسی بَدْمَذْہَب کی تعظیم وتَوْقِیر ( Respect )کی اُس نے اِسْلَام کے ڈھانے میں مدد کی ۔( [14] )

گمراہی میں پڑنے کے بَعْض اَسْبَاب

( 1 ): گمراہ اور بَدْمَذْہَبوں کے ساتھ دوستی اور میل جول رکھنا ۔ ( 2 ): خاص طور پر ان کی مذہبی تقریبات میں شرکت کرنا یا T.V اور Internet یا Social me٭ کے ذریعے ان کی گفتگو وتقریر ( Speech ) سننا کہ گمراہ شَخْص اپنی تقریر میں قرآن وحدیث کی وضاحت کرنے کی آڑ میں ضرور کچھ باتیں اپنی بَدمذہبی کی بھی مِلا دیا کرتے ہیں اور دیکھا گیا ہے کہ وہ باتیں تقریر سننے والے کے ذِہْن میں بیٹھ جاتی ہیں اور وہ خود بھی گمراہ ہو جاتا ہے ۔ ( 3 ): اسی

 



[1]     المرجع السابق.                             

[2]     فتاویٰ رضویہ ،  ۱۶ / ۵۸۵

[3]     فتاویٰ رضویہ ،  ۱۴ / ۶۸۳.

[4]     بہارِ شریعت ،  حصہ اوَّل ،  امامت کا بیان ،  ۱ / ۲۴۶.

[5]     فتاویٰ رضویہ ،  ۱۴ / ۵۹۲ ،  بتغیر قلیل.                       

[6]     فتاویٰ رضویہ ،  ۱۹ / ۳۹۶ ،  ملخصاً.                                                                                       

[7]     فتاویٰ رضویہ ،  ۵ / ۱۰۹ ،  بتغیر قلیل.

[8]     فتاویٰ فیض رسول ،  ۱ / ۴۴.                                         

[9]     مسلم ،  مقدمه ،  باب بيان ان الاسناد من الدين    الخ