Book Name:Gunaho ke Azabat Hissa 1

”کینہ“ کے مُتَعَلِّق مختلف اَحْکَام

( 1 ): مسلمان سے بِلاوَجہِ شَرْعِی کینہ وبُغْض رکھنا حرام ہے ۔( [1] ) ( 2 ): اگر کسی نے ظُلْم کیا اور اس وجہ سے دل میں اس کا کینہ ہے تو یہ حرام نہیں ۔( [2] )

آیتِ مُبَارَکہ

وَ نَزَعْنَا مَا فِیْ صُدُوْرِهِمْ مِّنْ غِلٍّ تَجْرِیْ مِنْ تَحْتِهِمُ الْاَنْهٰرُۚ-وَ قَالُوا الْحَمْدُ لِلّٰهِ الَّذِیْ هَدٰىنَا لِهٰذَا- وَ مَا كُنَّا لِنَهْتَدِیَ لَوْ لَاۤ اَنْ هَدٰىنَا اللّٰهُۚ- ( پ٨،الاعراف: ٤٣ )

 ترجمۂ کنز الایمان: اور ہم نے ان کے سِیْنوں میں سے کینے کھینچ لئے ان کے نیچے نہریں بَہیں گی اور کہیں گے سب خوبیاں اللہ کو جس نے ہمیں اس کی راہ دِکھائی اور ہم راہ نہ پاتے اگر اللہ نہ دِکھاتا ۔    

اس سے مَعْلُوم ہوا کہ پاکیزہ دِل ہونا جنتیوں کا وَصْف ہے اور اللہ پاک کے فَضْل سے اُمید ہے کہ جو یہاں اپنے دل کو بُغْض وکینہ اور حَسَد سے پاک رکھے گا اللہ پاک قیامت کے دن اسے پاکیزہ دِل والوں یعنی جنتیوں میں داخِل فرمائے گا ۔ جنّت میں جانے سے پہلے سب کے دِلوں کو کینہ سے پاک کر دیا جائے گا ۔( [3] )

فرمانِ مصطفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

بے شک چُغْل خوری اور کینہ پَرْوَرِی جہنّم میں ہیں، یہ دونوں کسی مسلمان کے دِل میں جمع نہیں ہو سکتے ۔( [4] )

کینہ کے گُنَاہ میں مبتلا ہونے کے بَعْض اسباب

( 1 ): غصّہ ( 2 ): بدگمانی ( 3 ): جُوا ( 4 ): نعمتوں کی کثرت ( 5 ): لڑائی جھگڑا ۔

کینہ سے بچنے کے لئے

٭ سلام ومُصَافَحہ میں پَہَل کرنے کی عادت اپنائیے ، اِنْ شَآءَ اللہ! دل سے بُغْض وکینہ کا خاتمہ ہو گا ۔ ٭ بے جا سوچنا چھوڑ دیجئے ۔ ٭ اللہ پاک کی رِضا کے لئے مسلمانوں سے مَحَبَّت رکھئے ۔ ٭ کینہ کے شَرْعِی اَحْکَام پیشِ نظر رکھئے اور جہنّم کے عذاب سے خود کو ڈرائیے ۔

مَدَنی مشورہ: بُغْض وکینہ کے تفصیلی اَحْکَام اور اس کی تباہ کاریوں کے بارے میں مَعْلُومات کے لئے دعوتِ اسلامی کے اِشَاعَتی ادارے مکتبۃ المدینہ کی مطبوعہ کتاب ”بُغْض وکینہ“  کا مُطَالعہ کیجئے ۔

حلقوں میں یاد کروایا جانے والا کَلِمہ شریف

دوسرا کلمہ

اَشْہَدُ اَنْ لَّاۤ  اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ وَحْدَہٗ لَا شَرِیْکَ لَہٗ وَاَشْہَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا عَبْدُہٗ وَرَسُوْلُہٗ

ترجمہ: میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ کے سِوا کوئی مَعْبُود نہیں، وہ اکیلا ہے اس کا کوئی  شریک نہیں اور میں گواہی دیتا ہوں کہ بے شک مُحَمَّد ( صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ) اللہ کے بندے اور رسول ہیں ۔( [5] )

٭ ٭ ٭ ٭ ٭ ٭

 



[1]    فتاویٰ رضویہ ،  ۶ / ۵۲۶.

[2]    الحديقة الندية ،  الخلق السادس عشر ،  المقالة الاولى     الخ ،  ٣ / ٨٦ ،  ملتقطًا.

[3]    صِرَاط الجنان ،  پ۸ ،  الاعراف ،  تحت الآیہ: ۴۳ ،  ۳ / ۳۱۹.

[4]    معجم اوسط ،  ٣ / ٣٠١ ،  حديث: ٤٦٥٣.

[5]    مدنی پنج سورہ ،  ص۱۳۶.



Total Pages: 42

Go To