Book Name:Gunaho ke Azabat Hissa 1

فرمانِ مصطفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

جو کسی مسلمان کی بُرائی بیان کرے جو اس میں نہیں پائی جاتی تو اس کو اللہ پاک اس وَقْت تک رَدْغَۃُ الْخَبَال میں رکھے گا جب تک کہ وہ اپنی کہی ہوئی بات سے نہ نکل آئے ۔( [1] ) رَدْغَۃُ الْخَبَال جہنّم میں ایک جگہ ہے جہاں جہنمیوں کا خون اور پِیپ جمع ہو گا ۔( [2] )

بُہتان تراشی کے گُنَاہ میں مبتلا ہونے کے بَعْض اَسْبَاب

( 1 ): لڑائی جھگڑا ( 2 ): غصّہ ( 3 ): بُغْض وکینہ ( 4 ): حَسَد ( 5 ): زِیادہ بولنے کی عادت ( 6 ): بدگمانی ۔

بُہتان تراشی سے بچنے کے لئے

٭ زبان کا قُفْلِ مَدِیْنہ لگائیے کہ بُہتان اور اس کے عِلاوہ بہت سارے گُنَاہ زِیادہ تر زبان سے ہی ہوتے ہیں لہٰذا اسے قابو میں رکھنا بہت ضروری ہے ۔ ٭ قرآن وحَدِیث میں ذِکْر کئے گئے بُہتان کے ہولناک عَذَابات کا مُطَالَعَہ کیجئے اور اپنے نازُک بدن پر غور کیجئے کہ بُہتان کے سبب اگر ان میں سے کوئی عَذَاب ہم پر مُسَلَّط کر دیا گیا تو ہمارا کیا بنے گا ۔ ٭ سلام اور مُصَافَحہ کرنے کی عادت اپنائیے ، اِنْ شَآءَ اللہ! اس کی برکت سے دل سے بُغْض وکینہ دُور ہو گا اور مَحَبَّت بڑھے گی اور ایک دوسرے پر اِلْزَام تراشی کا مرض بھی خَتْم ہو گا ۔ ٭ کسی کے خِلَاف دل میں غصّہ ہو اور اُس پر بُہتان باندھنے کو دل چاہے تو فوراً اپنے آپ کو یوں ڈرائیے کہ اگر میں غصّے میں آ کر بُہتان باندھوں گا تو گنہگار اور جہنّم کا حق دار قرار پاؤں گا کہ یہ گُنَاہ کے ذریعے غصّہ ٹھنڈا کرنا ہوا اَور فرمانِ مصطفے ٰ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ہے : جہنّم میں ایک دروازہ ہے اس سے وُہی داخِل ہوں گے جن کا غصّہ کسی گُنَاہ کے بعد ہی ٹھنڈا ہوتا ہے ۔( [3] ) ٭ مسلمانوں کے بارے میں حُسنِ ظَن رکھئے ، بدگمانی اور شک کرنے سے پرہیز کیجئے ۔

حلقوں میں یاد کروائی جانے والی دُعا

بازار میں داخِل ہوتے وَقْت کی دُعا

لَاۤ اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ وَحْدَہٗ لَا شَرِیْکَ لَہٗ لَہُ الْمُلْـکُ وَلَہُ الْحَمْدُ یُحْیِیْ وَیُمِیْتُ وَھُوَ حَیٌّ لَّا یَمُوْتُ بِیَدِہِ الْخَیْرُ وَھُوَ عَلٰی کُلِّ شَیْءٍ قَدِیْرٌ

ترجمہ: اللہ کے سِوا کوئی معبود نہیں، وہ اکیلا ہے ، اس کا کوئی شریک نہیں، اسی کے لئے ہے بادشاہی اور اسی کے لئے حمد ہے ، وہی زندہ کرتا اور مارتا ہے ، وہ زندہ ہے اس کو ہرگز موت نہیں آئے گی، تمام بھلائیاں اسی کے دستِ قدرت میں ہیں اور وہ ہر چیز پر قادِر ہے ۔

اللہ پاک اس ( دُعا کے پڑھنے والے ) کے لئے دس لاکھ نیکیاں لکھتا ہے اور اس کے دس لاکھ گُنَاہ مِٹاتا ہے اور اس کے دس لاکھ درجے بلند کرتا ہے اور اس کے لئے جنَّت میں گھر بناتا ہے ۔( [4] )

٭ ٭ ٭ ٭ ٭ ٭

دُرُود شریف کی فضیلت

فرمانِ مصطفے ٰ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم: جس نے یہ کہا : ”جَزَ ی اللّٰہُ عَنَّا مُحَمَّدًا مَّاھُوَ اَھْلُہٗ ( [5] ) 70 فِرِشتے ایک ہزار دن تک اس کے لئے نیکیاں لکھتے رہیں گے ۔( [6] )

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                       صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 



[1]    ابوداود ، کتاب ا لاقضیة ، باب فیمن یعين علی    الخ ، ص٥٧١ ، حدیث: ٣٥٩٧.

[2]    بہارِ شریعت ،  حصہ۹ ،  حدود کا بیان ،  ۲ / ۳۶۴ .

[3]    مسند الفردوس ، ١ / ٢٠٥ ،  حديث: ٧٨٤.

[4]    مشكوة ،  كتاب الدعوات ،  باب الدعوات فى الاوقات ،  ١ / ٤٥٤ ،  حديث: ٢٤٣١ ومدنی پنج سورہ ،  ص۲۱۲.

[5]    اللہ پاک ہماری طرف سے حضرت مُحَمَّد صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کو ایسی جزا عطا فرمائے جس کے وہ اہل ہیں ۔

[6]    معجم اوسط ،  ١ / ٨٢ ،  حديث: ٢٣٥.



Total Pages: 42

Go To