Book Name:Jannati Zevar

اور کوئی سورۃ پڑھے اورپہلے کی طرح رکوع اور سجدہ کرے۔ پھر جب سجدہ سے سر اٹھائے تو داہنا قدم کھڑا کر کے بایاں قدم بچھا کر بیٹھ جائے اور یہ پڑھے۔ اَلتَّحِیَّاتُ لِلّٰہِ وَالصَّلَوَاتُ وَالطَّیِّبَاتُ اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ اَیُّھَا النَّبِیُّ وَ رَحْمَۃُ اﷲ  وَ بَرَکَاتُہٗ ط اَلسَّلَامُ عَلَیْنَا وَعَلیٰ عِبَادِ اﷲ  الصَّالِحِیْنَ ط اَشْھَدُ اَنْ لاَّ اِلٰہَ اِلَّا اﷲ  وَاَشْھَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا عَبْدُہُ وَرَسُوْلُہٗ ط اس کو تشہد کہتے ہیں جب اَشْہَدُ اَنْ لَّاکے قریب پہنچے تو داہنے ہاتھ کی بیچ کی انگلی کو ہتھیلی سے ملا دے۔ اور لفظ لا پر کلمہ کی انگلی اٹھائے مگر ادھر ادھر نہ ہلائے۔ اور اِلَّا پرگرا دے اسی طرح سب انگلیاں فوراً سیدھی کرے۔ اب اگر دو سے زیادہ رکعتیں پڑھنی ہیں تو اٹھ کھڑا ہو  اور اسی طرح پڑھے مگر فرض کی ان رکعتوں میں الحمد کے ساتھ سورت ملانا ضروری نہیں اب پچھلا قعدہ جس کے بعد نماز ختم کرے گا اس میں تشہد کے بعد درود شریف اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلٰی سَیِّدِنَا مُحَمَّدٍ وَّ عَلٰی اٰلِ سَیّدِنَا مُحَمَّدٍ کَمَا صَلَّیْتَ عَلٰی سَیِّدِنَا اِبْرَاھِیْمَ وَ عَلٰی اٰلِ سَیِّدِنَا اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدُٗ مَّجِیْدُٗط اَللّٰھُمَّ بَارِکْ عَلٰی سَیِّدِنَا مُحَمَّدٍ وَّ عَلٰی اٰلِ سَیِّدِنَا مُحَمَّدٍ کَمَا بَارَکْتَ عَلٰی سَیِّدِنَا اِبْرَاھِیْمَ وَ عَلٰی اٰلِ سَیِّدِنَا اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدُٗ مَّجِیْدُٗ ط پڑھے پھر اَللّٰھُمَّ اغْفِرْلِیْ وَلِوَالِدَیَّ وَلِمَنْ تَوَالَدَ وَلِجَمِیْعِ الْمُؤْ مِنِیْنَ وَالْمُؤْمِنَاتِ وَالْمُسْلِمِیْنَ وَالْمُسْلِمَاتِ الْاَحْیَآئِ مِنْھُمْ وَالْاَمْوَاتِ اِنَّکَ حَمِیْدُٗ مُّجِیْبُ الدَّعْوَاتِ بِرَحْمَتِکَ یَآ اَرْحَمَ الرَّاحِمِیْنَ ط یا اور کوئی دعائے ماثورہ پڑھے مثلاً یہ دعا پڑھے اَللّٰھُمَّ اِنِّیْ ظَلَمْتُ نَفسِیْ ظُلْمًا کَثِیْرًا وَّاِنَّہٗ لَا یَغْفِرُ الذُّنُوْبَ اِلَّا اَنْتَ فَاغْفِرْلِیْ مَغْفِرَۃً مِّنْ عِنْدِکَ وَ ارْحَمْنِیْ اِنَّکَ اَنْتَ الْغَفُوْرُ الرَّحِیْمُ ط پھر داہنے شانے کی طرف منہ کر کے اَلسَّلَامُ عَلَیْکُمْ وَ رَحْمَۃُ اﷲ  کہے پھر بائیں شانے کی طرف اسی طرح اب نماز ختم ہوگئی اس کے بعد دونوں ہاتھ اٹھا کر کوئی دعا مثلاً اَللّٰھُمَّ اَنْتَ السَّلَامُ وَمِنْکَ السَّلَامُ وَاِلَیْکَ یَرْجِعُ السَّلَامُ فَحَیِّنَا رَبَّنَا  بِا لسَّلَامِ وَاَدْخِلْنَا دَارَالسَّلَامِ تَبَارَکْتَ رَبَّنَا وَ تَعَالَیْتَ یَا ذَاالْجَلَالِ وَالْاِکْرَامِ ہ رَبَّنَا اٰتِنَا فِی الدُّنْیَا حَسَنَۃً وَّ فِی الْاٰخِرَۃِ حَسَنَۃً وَّ قِنَا عَذَابَ النَّار ہ وَصلّٰی اﷲ  ُ تَعَالٰی  عَلٰی خَیْرِ خَلْقِہٖ مُحَمَّدٍ وَّ اٰلِہٖ وَ اَصْحَابِہٖ اَجْمَعِیْنَ بِرَحْمَتِکَ یَآ اَرْحَمَ الرَّاحِمِیْنَ ط آمِیْن یَا رَبَّ الْعَالَمِیْنَ پڑھے اور منہ پر ہاتھ پھیر لے۔

     نماز کا یہ طریقہ جو لکھا گیا امام یا تنہا مرد کے پڑھنے کا ہے۔ لیکن اگر نمازی مقتدی ہو یعنی جماعت کے ساتھ امام کے پیچھے نماز پڑھتا ہو تو الحمد اور سورہ نہ پڑھے چاہے امام زور سے قراء ت کرتا ہو یا آہستہ۔ امام کے پیچھے کسی نماز میں قراء ت جائز نہیں ۔

نماز میں عورتوں کے چند خاص مسائل

        عورتوں کو چاہئے کہ تکبیر تحریمہ کے وقت مردوں کی طرح کانوں تک ہاتھ نہ اٹھائیں بلکہ کندھوں تک ہی ہاتھ اٹھا کر بائیں ہتھیلی سینہ پر رکھ کر اس کی پیٹھ پر داہنی ہتھیلی رکھیں ۔ رکوع میں زیادہ نہ جھکیں بلکہ تھوڑا جھکیں یعنی صرف اس قدر کہ ہاتھ گھٹنوں تک پہنچ جائے اسی طرح عورتیں رکوع میں پیٹھ سیدھی نہ کریں اور گھٹنوں پر زور نہ دیں بلکہ محض گھٹنوں پر ہاتھ رکھ دیں اور ہاتھ کی انگلیاں لیٹی ہوئی رکھیں اور پاؤں کچھ جھکا ہوا رکھیں ۔ مردوں کی طرح خوب سیدھا نہ کردیں ۔ عورتوں کو بالکل سمٹ کر سجدہ کرنا چاہئے یعنی بازوؤں کو کروٹوں سے ملادیں اورپیٹ کو ران سے اور ران کو پنڈلیوں سے اور پنڈلیوں کو زمین سے ملادیں اور قعدہ میں التحیات پڑھتے وقت عورتیں بائیں قدم پر نہ بیٹھیں دونوں پاؤں داہنی جانب سے نکال دیں اور بائیں سرین پر بیٹھیں مردوں کی طرح نہ بیٹھیں ۔

        عورتیں بھی کھڑی ہو کر نماز پڑھیں بہت سی جاہل عورتیں فرض اور واجب اور سنت و نفل ساری نمازیں بیٹھ کر پڑھتی ہیں یہ بالکل غلط طریقہ ہے۔ نفل کے سوا کوئی نماز بھی بلا عذر بیٹھ کر پڑھنی جائز نہیں ۔ یہ جاہل عورتیں فرض و واجب جتنی نمازیں بغیر عذر بیٹھ کر پڑھ چکی ہوں ان سب کی قضا کریں اور توبہ کریں ۔

مسئلہ : ۔عورت مردوں کی امامت کرے یہ ناجائز ہے۔              (الفتاوی القاضی خان، کتاب الصلوۃ، فصل فیمن یصح الاقتداء، ج۱، ص۴۳)

 ہرگز عورتیں مردوں کی امام نہیں بن سکتیں ۔ اور صرف عورتوں کی جماعت کہ عورت ہی امام ہو اور عورتیں ہی مقتدی ہوں ۔ یہ مکروہ تحریمی اور ناجائز ہے۔  (بہارشریعت، ج۳، ص۱۱۱)

مسئلہ : ۔عورتوں پر جمعہ اور عیدین کی نماز واجب نہیں ۔(بہارشریعت، ج۱، ص۱۳۱)

پنج وقتہ نمازوں کے لئے عورتوں کا مسجد میں جانا منع ہے۔ (البحرالرائق، کتاب الصلوۃ، باب الامامۃ، ج۱، ص۶۲۷)

افعال نماز کی قسمیں

        نماز پڑھنے کا جو طریقہ بیان کیا گیا ہے اس میں جن جن کاموں کا ذکر کیا گیا ہے ان میں سے بعض چیزیں فرض ہیں کہ ان کے بغیر نماز ہوگی ہی نہیں ۔ بعض واجب ہیں کہ اگر قصداً ان کو چھوڑ دیا جائے تو گناہ بھی ہوگا اور نماز کو بھی دہرانا پڑے گا۔ اور اگر بھول کر ان کو چھوڑا تو سجدہ سہو کرنا واجب ہو گا اور بعض باتیں سنت مؤکدہ ہیں کہ ان کو چھوڑنے کی عادت گناہ ہے اور بعض مستحب ہیں کہ ان کو کریں تو ثواب اور اگر نہ کریں تو کوئی گناہ نہیں ۔ اب ہم ان باتوں کی کچھ وضاحت کرتے ہیں ۔ ان کو غور سے پڑھ کر اچھی طرح یاد کرلو۔

فرائض نماز : ۔سات چیزیں نماز میں فرض ہیں کہ اگر ان میں سے کسی ایک کو بھی چھوڑ دیا تو نماز ہو گی ہی نہیں (۱)تکبیر تحریمہ(۲)قیام(۳)قراء ت(۴)رکوع (۵)سجدہ (۶)قعدہ اخیرہ(۷) کوئی کام کرکے مثلاً سلام یا کلام کرکے نماز سے نکلنا۔ (الفتاوی الھندیۃ، کتاب الصلاۃ ، الباب الرابع، الفصل الاول، ج۱، ص۶۸۔۷۰)

تکبیر تحریمہ کا یہ مطلب ہے کہ اﷲ اکبر کہہ کر نماز کو شروع کرنا۔      (الفتاوی الھندیۃ، کتاب الصلوۃ، الباب الرابع، الفصل الاول، ج۱، ص۶۸)

 نماز میں بہت مرتبہ اﷲ اکبر کہا جاتا ہے۔ مگر شروع نماز میں پہلی مرتبہ جو اﷲ اکبرکہتے ہیں اس کا نام تکبیر تحریمہ ہے یہ فرض ہے۔اس کو اگر چھوڑ دیا تو نماز ہوگی ہی نہیں ۔

(الفتاوی القاضی خان، کتاب الصلوۃ، باب افتتاح الصلوۃ، ج۱، ص۳۸۔ردالمحتار، کتاب الصلوۃ، مطلب قد یطلق الفرض علی ما یقابل...إلخ، ج۲، ص۱۵۸)

مسئلہ : ۔قیام فرض ہونے کا مطلب یہ ہے کہ کھڑے ہو کر نماز پڑھنا ضروری ہے۔ تو اگر کسی مرد یا عورت نے بغیر عذر کے بیٹھ کر نماز پڑھی تو اس کی نماز ادا نہیں ہوئی۔

          (الفتاوی الھندیۃ، کتاب الصلوۃ، الباب الرابع، الفصل الاول، ج۱، ص۶۸)

 ہاں نفل نماز کو بلا عذر کے بھی بیٹھ کر پڑھے تو یہ جائز ہے۔مسئلہ : ۔قرأت فرض ہونے کا یہ مطلب ہے کہ فرض کی دو رکعتوں میں اور وتر و نوافل اور سنتوں کی ہر ہر رکعت میں قرآن شریف پڑھنا ضروری ہے۔ (مراقی الفلاح مع حاشیۃ الطحطاوی ، ص۲۲۶)

 تو اگر کسی نے ان رکعتوں میں قرآن نہیں پڑھا تو اس کی نماز نہ ہوگی۔   (الفتاوی الھندیۃ، کتاب الصلوۃ، الباب الرابع، الفصل الاول، ج۱، ص۶۹)

 



Total Pages: 188

Go To