Book Name:Jannati Zevar

نسیم اور ان کی محبت کی منزل

زہے عاشق تیز گام  اللہ  اللہ

دیگر

یہ کیسا مبارک مقام آرہا ہے       لبوں پر درود و سلام آرہاہے

ادب سے چلو اور سروں کو جھکالو   محمد کا دارالسلام آرہاہے

بسائی گئی راہ میں نکہت گل      رسول خدا کا غلام آرہاہے

قدم چومنے آرہے ہیں فرشتے        زمیں پر وہ ماہ تمام آرہاہے   

مدینے کے آقا کا ہر ہر سوالی    تبسم بہ لب شاد کام آرہاہے

وہ دیکھو اٹھیں رحمتوں کی گھٹائیں   زبان پر محمد کا نام آرہاہے

غریبوں کا مونس یتیموں کا ہمدم    لیے زندگی کا پیام آرہاہے

رسول گرامی کے روضہ کی جانب   زمانہ بصد احترام آرہاہے

نسیم ثنا خوانِ سرور، مبارک !

خدا کی طرف سے سلام آرہاہے

دیگر

طیبہ کے مسافرسے

سلطان دو جہاں سے میرا سلام کہنا

محبوب دو جہاں سے میرا سلام کہنا

 امت کے پاسباں سے میرا سلام کہنا

وحدت کے راز داں سے میرا سلام کہنا

عظمت کے حکمراں سے میرا سلام کہنا

رفعت کے آسماں سے میرا سلام کہنا

روضے کے نوری جلوے آنکھوں میں رکھ کے لانا

پر نور آستاں سے میرا سلام کہنا

عرش علا کی شوکت خلد جناں کی زینت

پیغمبر اماں سے میرا سلام کہنا   

ارض و سما کے سرور صدرشک ماہ اختر

تنویر کہکشاں سے میرا سلام کہنا

تجھ پر نثار جاؤں باد صبا خدارا

تسکین قلب وجاں سے میرا سلام کہنا

روضے کی جالیوں سے بھی ہم کنار ہوکر

خلد نظر سماں سے میرا سلام کہنا

شاہ وگدا کے خالی دامن کو بھرنے والے

عالم کے حکمراں سے میرا سلام کہنا

اے عازم مدینہ عرض نسیم لے جا

غم خوار بیکساں سے میرا سلام کہنا

دیگر

زمیں پر مالک خلد بریں تشریف لاتے ہیں

جہاں میں رحمۃ للعالمیں تشریف لاتے ہیں

 



Total Pages: 188

Go To