Book Name:Jannati Zevar

چلا کہ بی بی آمنہ رملیہ رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہَاآئی ہوئی ہیں تو حضرت امام احمد رَحْمَۃُ اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِنے حضرت بشر حافی رَحْمَۃُ اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِسے کہا کہ ان بی بی صاحبہ سے ہمارے حق میں دعا کرایئے چنانچہ حضرت بی بی آمنہ رملیہ رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہَانے اس طرح دعا مانگی کہ یا اﷲ  عَزَّ وَجَلَّ ! بشرحافی اور احمد بن حنبل کو جہنم کے عذاب سے امان دے۔ حضرت امام احمد بن حنبل رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہُکا بیان ہے کہ اسی رات کو ایک پرچہ آسمان سے ہمارے آگے گرا جس میں بسم اﷲ  کے بعد یہ لکھا ہوا تھا کہ ہم نے بشر حافی اور احمد بن حنبل کو دوزخ کے عذاب سے امان دے دی اور ہمارے یہاں ان دونوں کے لئے اور بھی نعمتیں ہیں ۔

(۵۵)حضرت میمونہ سوداء رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا

        یہ پاک باطن عورت بھی اپنے زمانے کی ایک بہت ہی مشہور کرامت والی ولیہ ہیں ان کے زمانے کے ایک بہت بلند مرتبہ باکرامت ولی حضرت عبدالواحد بن زید  رَضِیَ اللہ  تَعَالٰی عَنْہُفرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ میں نے خدا سے یہ دعا مانگی کہ یااﷲ  عَزَّ وَجَلَّ ! جنت میں دنیا کی جو عورت میری بیوی بنے گی مجھے وہ عورت دنیا ہی میں ایک مرتبہ دکھا دے خدا نے میرے دل میں یہ بات ڈال دی کہ وہ عورت ’’میمونہ سودائ‘‘ ہے اور وہ کوفہ میں رہتی ہے چنانچہ میں کوفہ گیا اور جب لوگوں سے اس کا پتا ٹھکانا پوچھا تو معلوم ہوا کہ وہ ایک دیوانی عورت ہے جو جنگل میں بکریاں چراتی ہے میں اس کی تلاش میں جنگل کی طرف گیا تو یہ دیکھا کہ وہ کھڑی ہوئی نماز پڑھ رہی ہیں اور بھیڑیے اور بکریاں ایک ساتھ چل پھر رہے ہیں جب وہ نماز سے فارغ ہوئیں تو مجھ سے فرمایا کہ اے عبدالواحد! جاؤ ہماری تمہاری ملاقات بہشت میں ہوگی مجھے بے حد تعجب ہوا کہ ان بی بی صاحبہ کو میرا نام اور میرے آنے کا مقصد کیسے معلوم ہوگیا مجھے یہ خیال آیا ہی تھا کہ انہوں نے کہا کہ اے عبدالواحد! کیا تم کو معلوم نہیں کہ روز ازل میں جن جن روحوں کو ایک دوسرے کی پہچان ہوگئی ہے ان میں دنیا کے اندر الفت و محبت پیدا ہوجایا کرتی ہے پھر میں نے پوچھا کہ بھیڑیوں اور بکریوں کو میں ایک ساتھ چرتے ہوئے دیکھ رہا ہوں یہ کیا معاملہ ہے؟ یہ سن کرانہوں نے جواب دیا کہ جایئے اپنا کام کیجئے مجھے نماز پڑھنے دیجئے میں نے اپنا معاملہ اﷲ   تَعَالٰی سے درست کر لیا ہے اس لئے اﷲ   تَعَالٰی نے میری بکریوں کا معاملہ بھیڑیوں کے ساتھ درست کردیا ہے۔

تبصرہ : ۔ماں بہنو! یہ مختلف زمانوں کی پچپن باکمال عورتوں کا تذکرہ ہم نے لکھ دیا ہے تاکہ مسلمان عورتیں ان اﷲ  والیوں کے حالات و واقعات کو پڑھ کر عبرت اور سبق حاصل کریں اور اپنی اصلاح کر کے دونوں جہان کی صلاح و فلاح حاصل کرنے کا سامان کریں خداوند کریم اپنے حبیب علیہ الصلوۃ والتسلیم کے طفیل میں سب کو ہدایت دے اور سب کو صراط مستقیم پر چلا کر خاتمہ بالخیر نصیب فرمائے (آمین)

نیک بیبیوں کا انعام

محشر میں بخشی جائیں گی سب نیک بیبیاں 

                      جنت خدا سے پائیں گی سب نیک بیبیاں

حوران خلد آنکھیں بچھائیں گی راہ میں

جنت میں جب کہ جائیں گی سب نیک بیبیاں

ہر ہر قدم پر نعرہ تکبیر و مرحبا

اعزاز ایسا پائیں گی سب نیک بیبیاں

کوثر بھی سلسبیل بھی پیتی رہیں گی یہ

جنت کے میوے کھائیں گی سب نیک بیبیاں

دیدار حق  تَعَالٰی کا ہوگا انہیں نصیب

انوار میں نہائیں گی سب نیک بیبیاں

تاروں میں جیسے چاند کی ہوتی ہے روشنی

اس طرح جگمگائیں گی سب نیک بیبیاں

جنت کے زیورات بہشتی لباس میں

سج دھج کے مسکرائیں گی سب نیک بیبیاں

جنت کی نعمتوں میں مگن ہو کے وجد میں

نغمات شوق گائیں گی سب نیک بیبیاں

اے بیبیو! نماز پڑھو نیکیاں کرو

انعام خلد پائیں گی سب نیک بیبیاں

تم اعظمی کے پند و نصائح کو مان لو

جلوہ تمہیں دکھائیں گی سب نیک بیبیاں

 (۸)متفرق ہدایات

 



Total Pages: 188

Go To