Book Name:Naat Khwani K Mutaleq Suwal Jawab

تحدیثِ نعمت کے لیے عرض کیا ہے ۔  اللہ عَزَّوَجَلَّ  ہمیں پانچوں وقت کی نماز باجماعت مسجد کی  پہلی صف میں تکبیرِ اولیٰ کے ساتھ پڑھنے کی توفیق عطا فرمائے ۔ اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّم

میں پانچوں نمازیں پڑھوں باجماعت

ہو توفیق ایسی عطا یاالٰہی     ( وسائلِ بخشش )

رات تاخیر سے گھر پہنچنے میں والدین کی ناراضی

سُوال : مدرسۃُ المدینہ بالِغان میں پڑھنے یا پڑھانے کے سبب ہونے والی تاخیر سے والدین ناراض ہوتے ہوں  تو کیا مدرسہ چھوڑ دیا جائے؟

جواب : والدین کی ناراضی کا اَصل سبب  مدرسۃُ المدینہ بالِغان  میں پڑھنا یا پڑھانا نہیں بلکہ رات تاخیر سے گھر پہنچنا ہے لہٰذا مدرسۃُ المدینہ بالِغان چھوڑنے کے بجائے  رات تاخیر سے گھر جانے کی عادت کو ترک کیا جائے ۔ تاخیر سے گھر جانے پر والدین اور دِیگر گھر والوں کی نیند میں خَلل واقع ہوتا ہو گا بالخُصُوص والدصاحب نے صبح سویرے ڈیوٹی پر جانے کے سبب رات جلد سونا ہوتا ہے مگر آپ کی تاخیر کے سبب وہ جلد آرام نہیں کر  پاتے ہوں گے ۔  اِسی طرح  گھر میں کوئی مریض نیند کی گولیاں کھا کر سویا ہی ہو گا کہ  اچانک دروازے کی دَستک اس کی رات بھر کے لیے نیند اُچاٹ کر دیتی ہو گی اور کبھی والدین سونے کے بجائے اپنے لاڈلے کی خیریت کی تَشویش میں بے چینی سے اس کی راہ تکتے اور خیریت سے لوٹنے کی دُعائیں مانگتے ہوں گے ۔  

اگر واقعی بیٹے کے رات تاخیر سے پہنچنے کے سبب  والدین کو اَذیت ہوتی ہو تو اب اسے رات جلدی گھرپہنچنا لازِم  ہے کہ ایک مستحب عمل ( مدرسۃُ المدینہ  بالِغان وغیرہ ) کی خاطِر اَشد حرام فعل( یعنی والدین کی دِل آزاری ) کی اِجازت ہرگز نہیں دی جا سکتی ۔  ہر ایک کو چاہیے کہ اپنے  والدین کی دِل آزاری سے بچتے ہوئے رات جلد گھر پہنچنے کی کوشش کرے ۔  مدرسۃُ المدینہ بالِغان نمازِ عشا کے بعد ہی لگانا ضَروری نہیں بلکہ کسی اور نماز  کے وقت  اسلامی بھائی میسر آتے ہوں  تو اس وقت لگا لیا جائے ۔ اگر عشا  کے بعد ہی مدرسۃ المدینہ بالِغان لگانے میں زیادہ فَوائد ہیں تو اسلامی بھائی حتَّی الامکان عشا کی نماز اسی مسجد میں ادا کریں جہاں مدرسہ لگانا ہے اور عشا کی نماز کے فوراً بعد صرف  اکتالیس منٹ کا مدرسہ لگائیں پھر عشا کی جماعت سے دو گھنٹے کے اندر گھر پہنچنے والے مدنی اِنعام پر عمل کرتے ہوئے گھر پہنچ جائیں ۔  اس طرح اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ گھر والے بھی مطمئن رہیں گے اور نمازِ تہجد پانے ، صَدائے مدینہ لگانے اور فجر کی نماز باجماعت ادا کرنے میں بھی سہولت رہے گی ۔   

صَدائے مدینہ دوں روزانہ صَدقہ

ابوبکر و فاروق کا یاالٰہی      )وسائلِ بخشش(

مَدَنی مشورے کی وجہ سے تاخیرسے گھر پہنچنا

سُوال : رات کو مدنی مشورے  میں تاخیر کے سبب والدین  کا دِل دُکھتا ہو تو ایسی صورت میں کیا کرنا چاہیے ؟

جواب : والدین  کو راضی کرنے کی ہر ممکن کوشش کرنی  چاہیے کہ ان کی رضا میں اللہ عَزَّوَجَلَّ  کی رضا اور ان کی ناراضی میںاللہ عَزَّ  وَجَلَّ  کی ناراضی پوشیدہ ہے جیسا کہ رَحمتِ عالَم ، نُورِ مُجَسَّم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ مُعَظَّم ہے : والدین کی رضا میں اللہ عَزَّوَجَلَّ کی



Total Pages: 15

Go To