Book Name:Bad Fajar Madani Halqa

جَنَّتُ الْفِرْدَوس میں مَدَنی حبیب صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَکا پڑوس ملنے کی دُعا ہے۔٭فیضانِ سُنّت جِلْد اَوّل اور جِلْد دُوَم کے دونوں اَبواب الگ الگ مَکْتَبَةُ الْـمَدِیْنَه سے ہدیۃً حاصِل کئے جا سکتےہیں۔٭فیضانِ سُنّت جِلْد اَوّل مُکَمَّل اور جِلْد دُوَم کے دونوں اَبواب بلکہ ، ہر باب علیٰحدہ علیٰحدہ دَعْوَتِ اِسْلَامی کی ویب سائٹ www.dawateislami.net سے مفت پڑھا جاسکتا ہے ، نیز ڈاؤن لوڈ اور پرنٹ آؤٹ بھی کیا جا سکتا ہے۔٭فیضانِ سُنّت جِلْد اَوّل مُکَمَّل یا اس کے مُـخْتَلِف اَبواب اگر مُخَیَّر اِسْلَامی بھائی اپنے مرحومین کے اِیصالِ ثواب کے لئے خرید کر مَسَاجِد و مَدَارِس ، دفاتر و کارخانے ، اسکول و کالج کے لئے وَقْف کریں یا دَرْس دینے والوں کو تحفۃً دے دیں تو اِنْ شَآءَاللہعَزَّ وَجَلَّ ثواب کا انبار لگ جائے گا۔

مجھے درسِ فیضانِ سُنّت کی توفیق                    ملے دن میں دو مرتبہ یا اِلٰہی[1]

اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْنصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبیب!      صَلَّی اللّٰہُتَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

3- شجرہ شریف

صُوفیائے کِرام اور مَشائخ عُظَّام رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہِم  کا ہمیشہ سے یہ مَعْمُول رہا ہے کہ وہ مَخْصُوص وَقْت میں حلقے بنا کر ذِکْر اَذکار اور شجرۂ مُبارکہ وغیرہ پڑھتے ہیں اور اِخْتِتام پر اپنے اَسلاف (یعنی بزرگوں)کو ایصالِ ثواب کرتے ہیں۔[2]اس پر ہمیشہ خود عَمَل پیرا ہوتے ہیں اور مُریدین و خلفا کو بھی اس پر عَمَل کرنے کی تَلْقِین کرتے ہیں۔ چُنَانْچِہ حضرت مِرزا مظہر جانِ جاناں رَحْمَۃُ اللّٰہ ِ تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں : خَتْمِ خواجگان و خَتْمِ حضرت مُجَدّد (یعنی حضرت سَیِّدُنا مُجَدَّدِ الف ثانی)صاحِب رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہِم صُبْح کے حلقۂ ذِکْر کے بعد پابندی سے کریں کیونکہ یہ مشائخ کے معمولات میں سے ہے ، بَہُت مُفِید اور بابَرَکَت ہے۔[3]

شجرہ کے  چار۴ حُروف کی نسبت سے” شجرہ عالیہ“ پڑھنے کے 4فوائد

اعلیٰ حضرت ، امامِ اَھْلِسُنّت ، مُجَدّدِ دىن و ملّت مولانا شاہ امام احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحمَۃُ الرَّحْمٰن فتاویٰ رضویہ جلد26 صفحہ 590 پر لکھتے ہیں : شجرہ حُضُورسَیّدِعالَم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَسَلَّم تک بندے کےاِتِّصال(یعنی سلسلہ کے ملنے)کی سندہے جس طرح حدیث کی اَسنادیں۔ مزید لکھتے ہیں : شجرہ خوانی سے (یعنی شجرہ پڑھنے کے) مُتَعَدِّد فوائد ہیں :

 (قوسین( ) میں دیئے گئے اَلْفَاظ اِدارے کی طرف سے تسہیل و وَضَاحَت کی کوشش ہے۔) اوّل : رسولُ  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَسَلَّم تک اپنے اِتِّصال(یعنی سلسلہ کے ملنے) کی سند کا حِفْظ۔ (یعنی شجرہ عالیہ بار بار پڑھنے سے نبی مکرّم ، نُورِ مُجَسَّم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم تک اپنے (سلسلۂ طَرِیْقَت کے)اِتّصال(یعنی ملنے) کی سَنَد یاد ہوجاتی ہے ، جو یقیناً سَعَادَت ہے۔کیونکہ جب مُرید کو یہ یاد رہے گا کہ میں نے جس مرشِد کامِل کے ہاتھ میں ہاتھ دیا ہے ، اُن کا سلسلہ اِن مشائخِ عُظَّام سے ہوتا ہوا نبیِ کریم رؤف رحیم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم تک پہنچتا ہے ، تو اس کے دل میں اپنے مَشائخ کی مَحبَّت مَزید بڑھے گی اور صالحین(نیکوں) سے مَحبَّت اُخْرَوِی نعمتوں کے حُصول کا ذریعہ ہے۔حدیثِ پاک میں ہے :  الْمَرْءُ مَعَ مَنْ اَحَبَّ یعنی آدمی اُسی کے ساتھ ہوگا جس سے وہ مَحبَّت کرتا ہے۔)[4]

دُوَم : صالحین(یعنی نیک بندوں) کا ذِکْر کہ مُوجِب نُزولِ رَحْمَت (یعنی رَحْمَت کے نازِل ہونے کا سَبَب)ہے۔(یعنی شجرہ شریف پڑھنے سے صالحین کا ذِکْر نصیب ہوتا ہے اور ذِکْرِ صالحین رَحْمَت کے نازِل ہونے کا سَبَب ہے۔حدیث شریف میں ہے کہ نیک لوگوں کا ذِکْر گناہوں کیلئے کفّارہ ہے۔[5]ایک اور رِوایَت میں ہے کہ نیک لوگوں کے تذکرے کے وَقْت (اللہ تعالیٰ کی)رَحْمَت نازِل ہوتی ہے۔[6]عارِف بِاللّٰہ سَیِّد مِير عبدُ الْوَاحِد بِلگرامی رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ سَبْعِ سَنَابِل میں فرماتے ہیں :  مشائخِ کِرام رَحمِہُمُ اللّٰہ کا ذِکْر سچے مریدوں کے اِیمان کو تازہ کرتا ہے اور ان کے واقعات ، مریدین کے اِیمان پر تجلیاں ڈالتے ہیں۔[7]شَیخ عبد الحق مُحَدِّث دِہْلَوِی رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ  اَخْبَارُ



[1]     وسائِلِ بخشش(مرمّم) ، ص ۱۳۰

[2]     جنتی زیور ، ص ۴۷۰ بتصرف

[3]     فتاویٰ رضویہ ، ۷ / ۶۲۴

[4]     بخاری ، کتاب الادب ، باب علامة حب الله عزوجل الخ ، ص۱۵۲۹ ، حدیث : ۶۱۶۸

[5]     جامع صغیر ، حرف الذال ، ص۲۶۴ ، حدیث : ۴۳۳۱

[6]     المعجم لابن المقری ، الجزء الثانی ، ص۷۵ ، الرقم : ۱۵۳

[7]    سبع سنابل ، سنبلہ دوم در بیان پیری و مریدی و حقیقت وماہیت آن ، ص۵۷



Total Pages: 15

Go To