Book Name:Bad Fajar Madani Halqa

والے نے زیادہ اَجَر پایا۔[1] اللہ پاک کے ذِکْر سے دِلوں کو اطمینان کی دولت نصیب ہوتی ہے۔ مگر اَفْسَوس!آج ساری دنیا میں ایک عالمگیر بے چینی پائی جارہی ہے کوئی ملک ، شہر اور گاؤں بلکہ کوئی گھر ایسا نہیں جہاں بدامنی اور بے چینی نہ ہو ، آج ہرشخص بے چینی کا شِکار نَظَر آتا ہے ، نادان انسان شراب ورُباب کی مَحفلوں ، سینما گھروں کی گیلریوں ، ڈرامہ گاہوں اور فَحاشی وعُریانی سے مُرَصَّع نائٹ کلبوں اور جِنسی ورُومانی ناولوں کے مُطالَعہ میں سُکون کی تلاش میں سرگرداں ہے ، حالانکہ قرآنِ پاک نے اس بارے میں ہماری رَاہ نُمائی کچھ یوں فرمائی ہے :  

اَلَّذِیْنَ اٰمَنُوْا وَ تَطْمَىٕنُّ قُلُوْبُهُمْ بِذِكْرِ اللّٰهِؕ-اَلَا بِذِكْرِ اللّٰهِ تَطْمَىٕنُّ الْقُلُوْبُؕ(۲۸) (پ۱۳ ، الرعد : ۲۸)

ترجمۂ کنز الایمان :  وہ جو ایمان لائے اور ان کے دل اللّٰہ کی یاد سے چین پاتے ہیں سُن لو اللّٰہ کی یاد ہی میں دِلوں کا چَین ہے۔

صَدْرُ الافاضِل حضرتِ علامہ مولانا سید محمد نعیمُ الدّین مُراد آبادی رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں : اس کے رَحْمَت و فَضْل اور اس کے اِحْسَان و کَرَم کو یاد کرکے بے قرار دِلوں کو قرار و اطمینان حاصِل ہوتا ہے اگرچہ اس کے عَدْل و عِتاب (غَضَب) کی یاد دِلوں کو خائف کر دیتی ہے۔ جیسا کہ دوسری آیت میں فرمایا : اِنَّمَا الْمُؤْمِنُوْنَ الَّذِیْنَ اِذَا ذُكِرَ اللّٰهُ وَ جِلَتْ قُلُوْبُهُمْ[2] (پ۹ ، الانفال : ۲) حضرت اِبْنِ عبّاس رَضِیَاللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُما نے اس آیَت کی تفسیر میں فرمایا کہ مسلمان جب اللہ کا نام لے کر قسم کھاتا ہے دوسرے مسلمان اس کا اِعْتِبَار کر لیتے ہیں اور ان کے دِلوں کو اطمینان ہو جاتا ہے۔[3]

صَلُّوا عَلَی الْحَبیب!      صَلَّی اللّٰہُتَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

بعدِ فجرمدنی حلقے کے فوائد

میٹھے میٹھے اِسْلَامی بھائیو!بعدِ فجر مَدَنی حلقے میں شِرْکَت کے چند فوائد یہ ہیں :

1- رِضَائے اِلٰہی ومَحْبُوبِ الٰہی کا حُصُول

مَدَنی حلقے کاسب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ اس میں شریک ہونے والے عاشقانِ رسول کو اللہ کریم اور اس کے پیارے رسول صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی رِضا اور خوشنودی حاصِل ہونے کی قَوِی اُمید ہے کہ یہ اللہ پاک کی دی ہوئی توفیق ہی ہے کہ اس نے انہیں اس وَقْت اپنے گھر میں بیٹھ کر اپنی پاک کتاب سے کچھ سیکھنے کا مَوْقَع عَطا فرمایا ہے ، اس کے مَـحْبُوب ، دانائے غُیوب صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ عالیشان ہے :  جو شخص صُبْح کے وَقْت مَسْجِد میں نیکی سیکھنے یا سکھانے کیلئے جائے تو اُسے پورے عمرے کا ثواب ملے گا۔[4]

2- ذاکرین میں شُمار

بعدِ فجرمَدَنی حلقے کے ذریعے شرکا ان فضائل کے حق دار بن جاتے ہیں جو بعدِ فَجْر تا اِشْرَاق و چاشت ذِکْر میں مَصْرُوف رہنے والوں کے مُتَعَلِّق مَرْوِی ہیں اور یوں اس خاص وَقْت میں اوراد و وظائف کرنے سے ان کا نام ذاکِرین(یعنی ذِکر کرنے والوں)میں لکھا جاتا ہے۔

3- اَسلاف سے مَحبَّت

شجرہ شریف میں مَذْکُور بزرگانِ دِین کو یاد کرنے سے ان کی مَحبَّت دل میں پیدا ہوتی ہے اور یوں شجرہ شریف کی بَرَکَت سے اَسلاف کی تَوَجُّہ حاصِل ہونے کی بھی اُمِّید ہے۔

4- اسلامی تعلیمات کا عام ہونا

بعدِ فجرمَدَنی حلقے کے ذریعے شرکا اور اَہْلِ محلہ میں اِسْلَامی تعلیمات عام ہوتی ہیں اور نَمازیوں کی تعداد میں بھی اِضافہ ہوتا ہے۔اِیمان کی حِفَاظَت اور شَریعَت پر عَمَل کرنے کا ذِہْن ملتا ہے اور انہیں سُنّتوں کا عامِل بنانے کے لئے اِجتماعی و اِنفرادی کوشش کا مَوْقَع بھی ملتاہے۔

5- مدنی کاموں کی ترقی

بعدِ فجرمَدَنی حلقے کے شرکا میں سے بعض اِسْلَامی بھائیوں کو12 مدنی کاموں میں سے ہر ہر مَدَنی کام کے لئے الگ الگ ذِمَّہ دار بنایا جا سکتا ہے ، بلکہ یوں مزید مُبَلِّغ و



[1]     حلية الاولیاء ، ذکر طبقة من تابعی اهل الشام ، ۳۲۵ - کعب الاحبار ، ۵ /  ۴۲۰ ، الرقم :  ۷۵۹۲

[2]     ترجمۂ کنز الایمان : ایمان والے وہی ہیں جب اللہ (کو)یاد کیا جائےان کے دل ڈر جائیں۔

[3]     خزائن العرفان ، پ۱۳ ، الرعد ، تحت الآیۃ : ۲۸ ، ص۴۷۴

[4]     مستدرك ، کتاب العلم ، من جاء المسجد لتعلم الخیر ، ۱ / ۲۸۱ ، حدیث : ۳۱۷



Total Pages: 15

Go To