Book Name:Mufti e Dawateislami

مفتیِٔ دعوتِ اسلامی کی جب قبر کُھلی

شیخِ طریقت امیرِ اہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ اپنی کتاب’’غیبت کی تباہ کاریاں ‘‘ صفحہ466پر لکھتے ہیں : تبلیغِ قرآن وسنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک ،دعوتِ اسلامی کی’’ مرکزی مجلسِ شوریٰ ‘‘کے رُکن مُفْتِی ٔ دعوتِ اِسلامی الحاج اَلحافِظ اَلقاری حضرتِ علّامہ مولانا مفتی محمد فاروق العطاری المدنی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِالْغَنِی کے بارے میں میراحُسنِ ظن ہے کہ وہ دعوتِ اسلامی کے مخلِص مبلِّغ اور اللہعَزَّوَجَلَّ سے ڈرنے والے بزرگ تھے اورگویا اس حدیث ِ پاک کے مصداق تھے :’’ کُنْ فِی الدُّنْیَا کَاَنَّکَ غَرِیْبٌ یعنی دنیا میں اس طرح رہو کہ گویا تم مسافر ہو ۔‘‘(صحیح البخاری ج۴ ص۲۲۳ حدیث۶۴۱۶) ۱۸محرم الحرام۱۴۲۷ھ بمطابق 17-2-2006 بروز جُمُعَہ نَمازِ جمعہ کی ادائیگی کے بعداپنی قِیام گاہ (واقِع گلشنِ اقبال، بابُ المدینہ کراچی )میں اچانک حَرَکتِ قلب بند ہونے کے سبب بَعُمر تقریباً 30 برس جوانی کے عالم میں انتقال فرماگئے تھے ۔آپ رحمۃ اللہ تعالٰی علیہ کو صحرائے مدینہ ،باب المدینہ کراچی میں دفن کیا گیا ۔ وِصال شریف کے تقریباً3سال 7مہینے 10دن بعدیعنی 25رجب المرجَّب ۱۴۳۰؁ھ بمطابق 18-7-2009 ہفتہ اور اتوار کی درمیانی رات باب المدینہ کراچی میں کئی گھنٹے تک موسلادھار برسات ہوئی جس کی وجہ سے مفتیِٔ دعوتِ اسلامی حافظ محمد فاروق عطاری عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِالْباریکی قبر درمیان سے کُھل گئی ۔ جو اسلامی بھائی صحرائے مدینہ میں


 

 



Total Pages: 89

Go To