Book Name:Mufti e Dawateislami

یعنی یاد رکھ! جب دنیا میں آیا تھا تو تُو رو رہا تھا اور لوگ مسکرا رہے تھے ، اس طرح کی زندگی بسر کر کہ تیری موت کے وقت لوگ رو رہے ہوں اور تُو مسکرا رہا ہو۔(شجرۂ عطاریہ، ص۳۰مکتبۃ المدینہ)

{اللہ ل کی اِن پر رحمت ہو۔۔ا ور۔۔ اِن کے صدقے ہماری مغفرت ہو۔اٰمین بجاہ النبی الامین ا}

نعت خوانی کے دوران ہونٹوں کی جُنبِش

غسل دئیے جانے کے بعد اسلامی بھائیوں نے مفتی ٔ دعوتِ اسلامی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے گرد جمع ہو کر نعت خوانی شروع کردی۔ َتخَصُّصْ فِی الْفِقْہ (مفتی کورس )کے سالِ دُوُم کے ایک طالبُ العِلْم کا بیان ہے کہ میں نے دیکھا کہ نعت خوانی کے دوران استاذِ محترم مفتی ٔ دعوتِ اسلامی الحاج مولانا محمد فاروق العطاری المدنی علیہ رحمۃ اللہ الغنی کے لب ہائے مبارَکہ بھی جُنبِش کررہے تھے ۔

رات تقریباً 1:00بجے آپ کے جَسَدِ مبارک کو دعوتِ اسلامی کے عالمی مدنی مرکز فیضان ِمدینہ بابُ المدینہ کراچی لایا گیا۔ جہاں اسلامی بھائیوں نے آپ کے اردگرد جمع ہوکر نعت خوانی کی ، تلاوتِ قرآن اور ذکرودُرود کا بھی سِلْسِلَہ رہا ۔

ہونٹ ہلنے لگے

جَامِعَۃُ المدینہ فیضان مدینہ بابُ المدینہ کے ایک طالب علم کا بیان ہے کہ

’’اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ عَزَّوَجَلََّّّ! جب رات کے وقت مفتی ٔ دعوتِ اسلامی حاجی محمد فاروق العطاری المدنی علیہ رحمۃ اللہ الغنیکا جسدِمبارک اسلامی بھائیوں کو زِیارت کروانے


 

 



Total Pages: 89

Go To