Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 02

جواب     بوقتِ وفات آپ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا کی عمر مبارک 84 برس تھی ، آپ کی نمازِ جنازہ حضرتِ سیّدنا ابوہریرہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُنے پڑھائی اور جَنَّتُ البقیع میں مَدْفُون ہوئیں ۔  (  [1])

سوال      ام المؤمنین حضرت سیدتنا زینب بنتِ جحش رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا کوحضور نبیِ کریم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے کس مبارک لقب سے نوازا؟

جواب     حضوررَحمتِ عالَم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے حضرت عمر بن خطاب رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ سے ارشاد فرمایا : زینب بنت جحش ”اَلْاَ وَّاہ“ہے ۔ ایک شخص نے عرض کی :  یَارَسُوْلَ اللہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ! ” اَلْاَ وَّاہ“سے کیا مراد ہے ؟ ارشاد فرمایا :  خشوع کرنے والی اور اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کے حضور گڑگڑانے والی ۔  (  [2])

سوال      ام المؤمنین حضرت سیّدتُنا اُمِّ حبیبہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا کا نام کیا ہے اور آپ کا امیرالمؤمنین عثمان غنی رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُسے کیا رشتہ ہے ؟

جواب     آپ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا کانام ’’رَملہ‘‘ ہے اور آپ امیرالمؤمنین حضرت سیّدنا عثمانِ غنی رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی پھوپھی زاد بہن ہیں ۔  (  [3])

اَہلِ بَیْتِ اَطْہَار

سوال      نجرانی عیسائیوں  کے ساتھ مُباہلہ  کے وقت حضورِ اکرم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے ساتھ کون کونسے افراد تھے ؟

جواب     اُس وقت حضور امام الانبیا صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم حضرت  سیّدناامام حسین کو گود میں اٹھائے ہوئے  تھے ، حضرت سیّدنا امام حسن کا ہاتھ پکڑا ہوا تھااور حضرت سیّدتُنا فاطمہ وحضرت سیّدنا  علیُّ المرتضی رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ پیچھے پیچھے چل رہے تھے ۔  (  [4])

سوال      بوقتِ مُباہلہ اہلِ بیت کو دیکھ کر عیسائیوں کے بڑے پادری نے کیا کہاتھا؟

جواب     حضورتاجدارِ نبوتصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّماور اہلِ بیت اَطہار کو دیکھ کربڑا پادری خوف سے کانپ اٹھا اور کہنے لگا  :  اے گروہ نصاریٰ !  میں ایسے چہرے دیکھ رہا ہوں کہ اگریہ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ سے سوال کریں کہ ”پہاڑ کو اپنی جگہ سے ہٹا دے ۔ “ تو وہ ضرور اُسے ہٹادے  گا ، لہٰذا تم اِن کے ساتھ ہرگز مباہلہ نہ کرو ورنہ ہلاک ہوجاؤ گے اور روئے زمین پر کہیں بھی کوئی عیسائی باقی نہ رہے گا ۔  (  [5])

سوال      اہلِ بیت اطہارکی سخاوت کا کوئی واقعہ بیان کیجئے ؟

جواب     ایک بار حضرت سیدنا علی المرتضی ، حضرت  سیّدتُنافاطمہ اورحضرت سیدتنافضَّہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ نے تین روزے رکھنے کی نَذر مانی ۔ حضرت سیدنا علی کَرَّمَ اللہُ تَعَالٰی وَجْہَہُ الْکَرِیْمتین صاع جَو لائے ، حضرت خاتونِ جنترَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا نے ایک ایک صاع تینوں دن پکایا لیکن جب اِفطار کا وقت آیا اور روٹیاں سامنے رکھیں تو ایک دن مسکین ، دوسرے دن یتیم اور تیسرے دن قیدی دروازے پر آگئے  توتینوں دن سب روٹیاں سائلوں کو دے دی گئیں اوران نُفُوْسِ قُدْسِیَّہ نے  پانی سے افطار کرکے اگلے دن کاروزہ رکھ لیا  ۔ اس پرپارہ 29 سورۂ دَہْرکی آیت نمبر8نازل ہوئی ۔  (  [6])

سوال      اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کی بارگاہ سے اُمُّ المومنین حضرت سیّدتُنا خَدِیجۃُ الکبریٰ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا کو کس انداز میں سلام آیا؟

جواب     حضرت سیدنا جبریل عَلَیْہِ السَّلَامنے بارگاہِ رسالت میں حاضر ہوکرعرض کی :  یارسولَ اللہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ! حضرت خدیجۃ الکبری رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَاآپ کے پاس  ایک برتن  میں کھانا پانی لا رہی ہیں پس جب وہ آپ کے پاس آئیں تواُنہیں ان کے رب عَزَّ  وَجَلَّ کی طرف سے اور میری جانب سے سلام کہئے اور انہیں جنت میں ایک یاقوتی  گھر کی خوشخبری دیجئے ۔  (  [7])

سوال      اُمُّ المؤمنین حضرت سیدتنا عائِشہ صدیقہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَاکے صدقہ کرنے کے بارے میں کوئی روایت سنائیے ؟

جواب     حضرت سیدناعُروہ بن زُبیر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ فرماتے ہیں : میں نے حضرت سیدتنا عائشہ صدّیقہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَاکو 70ہزار درہم راہِ خدا میں صدقہ کرتے دیکھا حالانکہ ان کی قمیص کے مُبارک دامَن میں پَیوَنْد لگا ہوا تھا ۔  (  [8])

سوال      حدیثِ مبارکہ میں کن چھ لوگوں پر لعنت آئی ہے ؟

جواب   رسولِ پاک صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ عبرت نشان ہے : میں  چھ لوگوں پر لعنت کرتاہوں اوراللہ عَزَّ  وَجَلَّ بھی اُن پر لعنت فرماتا ہے اور ہر نبی کی دعا قبول ہوتی ہے ۔  وہ چھ لوگ یہ ہیں :  (  1) کِتابُ اللہ میں اضافہ کرنے والا  (  2) تقدیر کو جُھٹلانے والا  (  3) میری امت پر ظلم کے ساتھ تَسَلُّط کرنے والاکہ ایسے کو عزت دے جس کو اللہ عَزَّ  وَجَلَّ نے ذلیل کیا اور ایسے  کو ذلیل کرے جس کو اللہ عَزَّ  وَجَلَّنے عزت عطا فرمائی (  4) اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کے حرم (  حرمِ مکہ) کو حلال ٹھہرانے والا  (  5) میرے اہْلِ بیت کی حُرمَت جس



[1]     سیرة حلبیة ، باب ذکر ازواجہ     الخ ، ۳ /  ۴۴۸ ۔

[2]     اسد الغابة ، رقم۶۹۴۸ ، زینب بنت جحش ، ۷ /  ۱۴۰ ۔

[3]     سیرة حلبیة ، باب ذکر ازواجہ     الخ ، ۳ /  ۴۵۰ ۔

[4]     تفسیر خازن ، پ۳ ، اٰل عمران ، تحت الآیة : ۶۱ ، ۱ /  ۲۵۸ ۔

[5]     تفسیر خازن ، پ۳ ، اٰل عمران ، تحت الآیة : ۶۱ ، ۱ /  ۲۵۸ ۔

[6]     تفسیر مدارک ، پ۲۹ ، الدھر