Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 02

واجِب تھی اور ابھی  (  قربانی ) کی نہیں اور آخِر وَقْت میں شرائط جاتے رہے تو (  قربانی ) واجِب نہ رہی ۔  (  [1])

سوال      کیا پورے گھر کی طرف سے ایک بکرے کی قربانی کفایت کرسکتی ہے ؟

جواب     نہیں کرسکتی  ۔ بعض لوگ پورے گھر کی طرف سے صِرْف ایک بکرا قُربان کرتے ہیں حالانکہ بعض اَوقات گھر کے کئی اَفراد صاحِبِ نصاب ہوتے ہیں اور اِس بِنا پر ان ساروں پر قربانی واجِب ہوتی ہے ان سب کی طرف سے الگ الگ قربانی کی جائے ۔ ایک بکرا جو سب کی طرف سے کیا گیا کسی کا بھی واجِب ادا نہ ہوا کہ بکرے میں ایک سے زیادہ حصّے نہیں ہوسکتے کسی ایک طے شدہ فردہی کی طرف سے بکرا قربان ہوسکتا ہے ۔  (  [2])

سوال      کس صورت میں عیب دار جانور کی قربانی جائز ہے ؟

جواب     قربانی کرتے وَقْت جانور اُچھلا کودا جس کی وجہ سے عیب پیدا ہوگیا یہ عیب مُضِر نہیں یعنی قربانی ہو جائے گی اور اگر اُچھلنے کودنے سے عیب پیدا ہوگیا اور وہ چھوٹ کر بھاگ گیا اور فورا ًپکڑکر لایا گیا اور ذَبْح کر دیا گیا جب بھی قربانی ہو جائے گی ۔  (  [3])

سوال      کس صورت میں قربانی کرنے والا قربانی کا گوشت نہیں کھاسکتا؟

جواب     قربانی اگر مَنَّت کی ہے تو اُس کا گوشت نہ خود کھاسکتا ہے نہ اَغنیا کو کھلا سکتا ہے بلکہ اس کو صدقہ کر دینا واجب ہے ، وہ منت ماننے والا فقیر ہو یا غنی دونوں کا ایک ہی حکم ہے ۔  (  [4])  یونہی اگر میّت نے قربانی کی وصیّت کی تھی تو اَب بھی اس میں سے نہ کھائے بلکہ سارا گوشت صدقہ کردے ۔  (  [5])

سوال      اپنی قربانی کی کھال بیچنا کیسا ہے ؟

جواب     یہاں نیّت کا اعتِبار ہے ۔  اگر اپنی قربانی کی کھال اپنی ذات کے لیے رقم کے عِوَض بیچی تو یوں بیچنا بھی ناجائز ہے اور یہ رقم اِس شخص کے حق میں مالِ خَبیث ہے اوراِس کا صَدَقہ کرنا واجِب ہے لہٰذا کسی شَرعی فقیر کو دیدے اور توبہ بھی کرے اور اگر کسی کارِ خیر کے لیے مَثَلاً مسجِد میں دینے ہی کی نیّت سے بیچی تو بیچنا بھی جائز ہے اوراب مسجِد میں دینے میں کوئی حَرَج (  بھی) نہیں ۔  (  [6])

کھانا

سوال      ’’فیضانِ سنّت ‘‘میں دی گئی کھانے کی43نیتوں میں سے کوئی6بیان کیجئے ؟

جواب     (  1 ، 2) کھانے سے قبل اور بعد کا وُضو کروں گا (  یعنی ہاتھ ، مُنہ کا اگلا حصّہ دھوؤں گا اور کُلِّیاں کروں گا)  (  3) عبادت پرقوت حاصل کروں گا (  4) اِتباعِ سنّت میں دستر خوان پر کھاؤں گا (  5) کھانے سے پہلے بِسْمِ اللہ پڑھوں گا (  6) سنت کے مطابق بیٹھ کرکھاؤں  گا  (  7) تین انگلیوں سے کھاؤں گا (  8) جو دانہ وغیرہ گرگیا اٹھا کر کھا لوں گا (  9) کھانے کے بعد بمع اول وآخردُرود شریف مسنون دعائیں پڑھوں گا  (  10) خلال کروں گا ۔  (  [7])

سوال      وہ کونسے بزرگ ہیں جو بھوکا رہنے پر بہت زور دیا کرتے اور اس کی کیا وجہ بیان فرماتے تھے ؟

جواب     حضرت سیدنا بایزید بسطامی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْوَ الِیسے بھوکا رہنے پر بہت زیادہ زور دینے کی وجہ پوچھی گئی توآپ نے فرمایا : اگر فرعون بھوکا ہوتا تو کبھی خُدائی کا دعویٰ نہ کرتا اور اگر قارون بھوکا ہوتا تو کبھی بَغاوت نہ کرتا ۔  (  مطلب یہ کہ ان لوگوں پر مال کی فراوانی ہوئی تو سرکش ہوگئے )  (  [8])

سوال      کھانے سے پہلے کی دعا اور اس کی برکت بیان کیجئے ؟

جواب     بِسْمِ اللہِ الَّذِیْ لَایَضُرُّ مَعَ اسْمِہٖ شَیْئٌ فِی الْاَرْضِ وَلَا فِی السَّمَاءِ وَہُوَ السَّمِیْعُ الْعَلِیْمُ“اس کی برکت یہ ہے کہ اگر کھانے میں زہر بھی ہوگا تو اِنْ شَآءَاللهُ عَزَّوَجَلَّ اثر نہیں کرے گا ۔  (  [9])

سوال  حدیثِ مبارکہ کی روشنی میں کھانے سے پہلے اور بعد میں ہاتھ منہ دھونے کا فائدہ بتائیے ؟

جواب  سرکارِ نامدار ، مدینے کے تاجدار صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ بَرکَت نشان ہے ، کھانے سے پہلے اور بعد وُضُو  (  یعنی ہاتھ منہ دھونا ) رزق میں کُشادگی کرتا اور شیطان کو دُور کرتا ہے ۔  (  [10])

سوال      پیٹ بھرکر کھانے سے متعلق امام شافعی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْکَافِینے کیا فرمایا؟

 



[1]     فتاوی ھندیة ، کتاب الاضحیة ، الباب الاول فی تفسیرھا ۔ ۔ ۔ الخ ، ۵ /  ۲۹۳ ۔

[2]     ابلق گھوڑے سوار ، ص۸ ۔

[3]     درمختار مع ردالمحتار ، کتاب الاضحیة ، ۹ /  ۵۳۹ ، بہار شریعت ، حصہ۱۵ ، ۳ /  ۳۴۲ ۔

[4]     تبیین الحقائق ، کتاب الاضحیة ، ۶ /  ۴۸۶ ۔

[5]     ردالمحتار ، کتاب الاضحیة ، ۹ /  ۵۴۲ ۔

[6]     فتاوی ھندیة ، کتاب الاضحیة ، الباب السادس فی بیان مایستحب ۔ ۔  ۔ الخ ، ۵ /  ۳۰۱ ، ابلق گھوڑے سوار ، ص۲۸ ۔

[7]     فیضانِ سنّت ، ص۱۸۲ ، ماخوذاً ۔

[8]     کشف المحجوب ، باب آدابھم فی الاکل ، ص۳۹۰ ۔

[9]     مسندالفردوس ، ۱ /  ۱۶۸ ، حدیث : ۱۱۱۳ ۔

[10]     کنز العمال ، ۸ / ۱۰۶ ، حدیث :  ۴۰۷۵۵ ۔



Total Pages: 122

Go To