Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 02

جواب     بہارشریعت ، جلد۱ ، صفحہ۷۰۰پرمذکورحکم کا خلاصہ ہے : توبہ اسی وقت صحیح ہے جب قضا بھی پڑھ لے ۔  قضا نمازوں کو  تو ادا نہ کرے فقط توبہ کئے جائے تو یہ توبہ نہیں ہے کیونکہ وہ نماز جو اس کے ذمہ تھی اس کا نہ پڑھنا تو اب بھی باقی ہے ۔ جب گناہ سے ہی باز نہ آیاتو پھر توبہ کہاں ہوئی ۔  (  [1])

سوال     کون سی نمازوں میں وقت کے اندر اندر سلام پھرلینا ضروری ہے ؟

جواب     فجر ، جمعہ اورعید ین کی نمازوں میں سلام سے پہلے اگر وقت نکل گیا تو نماز نہ ہوگی ان کے علاوہ نمازوں میں اگر وقت میں تحریمہ باندھ لیا تو نماز قضا نہ ہوئی بلکہ ادا ہے ۔  (  [2])

سوال      کس صورت میں سوئے ہوئے شخص کو جگا دینا واجب ہے  ؟

جواب     کوئی سو رہا ہے یا نماز پڑھنا بھول گیا ہے تو جسے معلوم ہے اس پر واجب ہے کہ سو تے کو جگا دے اور بھولے ہوئے کو یاد دلا دے ۔  (  [3])   (  ورنہ گنہگار ہوگا) یاد رہے !  جگانا یا یاد دلانا اُس وقت واجب ہوگا جبکہ ظنِّ غالب ہو کہ یہ نماز پڑھے گا ورنہ واجب نہیں  ۔  (  [4])

سوال      جس شخص کے ذمے بہت زیادہ نمازیں ہوں شریعت مطہرہ میں اس کیلئے کوئی آسانی کی صورت ہو تو بتائیے ؟

جواب     جس پر بکثرت قضا نمازیں ہوں وہ آسانی کے لیے ہررکوع اور سجدہ میں ’’سُبْحٰنَ رَبِّیَ الْعَظِیْم‘‘اور’’سُبْحٰنَ رَبِّیَ الْاَعْلٰی‘‘صرف ایک بار کہے اور فرضوں کی تیسری اور چوتھی رکعت میں اَلْحَمْدُ شریف کی جگہ فقط ”سُبْحٰنَ اللہ“تین بار کہہ کر رکوع کرلے ، تیسری تخفیف یہ کہ قعدۂ اخیرہ میں اَلتَّحِیَّات کے بعد دونوں درودوں اور دعا کی جگہ صرف ’’اَللّٰہُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّاٰلِہٖ‘‘ کہہ کر سلام پھیر دے چوتھی تخفیف یہ کہ وتر کی تیسری رکعت میں دعائے قنوت کی جگہ فقط ایک یا تین بار ’’رَبِّ اغْفِرْ لِیْ‘‘ کہے ۔  (  [5])

سوال      اگر فجر کی سنتیں قضا ہوجائیں تو ان کو کب  پڑھا جائے ؟

جواب     فجر کی سنت قضا ہوگئی اور فرض پڑھ ليے تو اب سنتوں کی قضا نہیں البتہ امام محمد رَحِمَہُ اللہُ تَعَالٰی فرماتے ہیں کہ طلوعِ آفتاب کے بعد پڑھ لے تو بہتر ہے ۔  (  [6]) اور طلوع سے پیشتر (  یعنی سورج نکلنے سے پہلے ) بالاتفاق ممنوع ہے ۔  (  [7]) آج کل اکثر عوام فرض کے بعد  فوراً پڑھ لیا کرتے ہیں یہ ناجائز ہے ، پڑھنا ہو تو آفتاب بلند ہونے کے بعدزوال سے پہلے پڑھیں ۔  (  [8])

سوال      سفر میں چار رکعت والی نماز قضا ہوئی تو اقامت میں کتنی رکعت ادا کرے ؟

جواب     جو نماز جیسی فوت ہوئی اس کی قضا ویسی ہی پڑھی جائے گی ، مثلاً سفر میں نماز قضا ہوئی تو چار رکعت والی دو ہی پڑھی جائے گی اگرچہ اقامت کی حالت میں پڑھے اور حالتِ اقامت میں فوت ہوئی تو چار رکعت والی کی قضا چار رکعت ہے اگرچہ سفر میں پڑھے ۔  (  [9])

سوال      کیا قضا نماز باجماعت پڑھی جاسکتی ہے ؟

جواب     اگر کسی امرِ عام کی وجہ سے جماعت بھر کی نماز  قضا ہوگئی تو جماعت  سے پڑھیں ، یہی افضل ومسنون ہے اور مسجد میں بھی پڑھ سکتے ہیں ، اور جہری نمازوں میں امام  پر جہر  واجب  ہے اگرچہ قضا ہواوراگر کسی خاص وجہ سے بعض افراد کی نماز جاتی رہی تو گھر میں تنہا پڑھیں کہ معصیت کا اظہاربھی معصیت ہے ۔  (  [10])

سوال      کیا جمعۃ الوداع میں باجماعت قضائے عمری پڑھنے سے عمر بھر کی قضا ادا ہوجاتی ہے ؟

جواب     نہیں ، رمضان المبارک کے آخری جمعہ میں بعض لوگ باجماعت قضائے عمری پڑھتے ہیں اور یہ سمجھتے ہیں کہ عمر بھر کی قضائیں اسی ایک نماز سے ادا ہو گئیں یہ باطل محض ہے  ۔  (  [11])

سوال      پاگل پن یا بیہوشی کی حالت میں رہ جانے والی نمازوں کا کیا حکم ہے ؟

جواب     جنون یابے ہوشی اگر پورے چھ وقت کو گھیرلے تو ان نمازوں کی قضابھی نہیں ، اگرچہ بے ہوشی آدمی یا درندے کے خوف سے ہو اور اس سے کم ہو تو قضا واجب ہے ۔  (  [12])

سوال      نمازوں میں ترتیب سے کیا مراد ہے اور ترتیب کس پر فرض ہے کس پر نہیں؟

جواب   پانچوں فرضوں میں باہم اور فرض و وتر میں ترتیب ضروری ہے کہ پہلے فجر پھرظہر پھر عصر پھر مغرب پھر عشا پھر وتر پڑھے ، خواہ یہ سب قضاہوں یابعض ادا بعض قضا ، مثلاً ظہر



[1]     ردالمحتار ، کتاب الصلاة ، باب قضاء الفوائت ، ۲ /  ۶۲۷ ۔

[2]     درمختار ، کتاب الصلاة ، باب قضاء الفوائت ، ۲ /  ۶۲۸ ، ماخوذ از بہار شریعت ، حصہ۴ ، ۱ /  ۷۰۱ ۔

[3]     بہار شریعت ، حصہ۴ ، ۱ /  ۷۰۱ ۔

[4]     نماز کے احکام ، ص۳۳۲ ۔

[5]     نماز کے احکام ، ص۳۳۸-۳۳۹ ، ملتقطاً  ۔

[6]     غنية المتملی ، فصل فی النوافل ، ص۳۹۷ ۔

[7]     ردالمحتار ، کتاب الصلاة ، باب الوتر والنوافل ، ۲ /  ۵۵۰ ۔

[8]     بہار شریعت ، حصہ۴ ، ۱ /  ۶۶۴ ، ۶۶۵ ۔

[9]     فتاوی ھندیة ، کتاب الصلاة ، الباب الحادی عشر فی قضاء الفوائت ، ۱ /  ۱۲۱ ۔

[10]     فتاوی رضویہ ، ۸ /  ۱۶۲ ۔

[11]     نماز کے احکام ، ص۳۳۶ ۔

[12]     درمختار ، کتاب الصلاة ، باب صلاة المریض ، ۲ /  ۶۹۲ ۔



Total Pages: 122

Go To