Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 02

جواب     بالغ نے نمازِ جنازہ میں قَہقَہہ لگایا تو نماز ٹوٹ گئی  مگر وضو باقی ہے ۔  (  [1])

سوال      قَے سے کب وضو ٹوٹتا ہے ؟

جواب        منہ بھر قے کھانے ، پانی یا صفرا (  یعنی پیلے رنگ کے کڑوے پانی ) کی وضو توڑ دیتی ہے ۔  (  [2])

سوال      منہ بھر قے سے کب وضو نہیں ٹوٹتا؟

جواب     جب وہ قے بلغم کی ہو تو اس صورت میں وضو نہیں ٹوٹے گا ۔  (  [3])

سوال      وُضو کے بعد سُورۃُ القَدْر پڑھنے کی فضیلت اور فائدہ بیان کیجئے ؟

جواب     حدیثِ مبارکہ میں ہے : جو وُضو کے بعد ایک مرتبہ سُورۃُ القَدْر پڑھے وہ صدّیقین میں سے ہے اور جو دو مرتبہ پڑھے  وہ شہدا میں شمار کیا جائے اور جو تین مرتبہ پڑھے گا اللہ عَزَّ  وَجَلَّ میدانِ محشر میں اسے اپنے انبیا کے ساتھ رکھے گا ۔  (  [4]) نیزجو وضو کے بعد آسمان کی طرف دیکھ کر سورۂ اِنَّا اَنْزَلْنٰہُ (  سورۃُ القدر) پڑھ لیا کرے اِنْ شَآءَالله اس کی نظر کبھی کمزور نہ ہو گی ۔  (  [5])

سوال      وُضو کے بعد کون سی دُعا پڑھی جاتی ہے ؟

جواب                     اَللّٰہُمَّ اجْعَلْنِیْ مِنَ التَّوَّابِیْنَ وَاجْعَلْنِیْ مِنَ الْمُتطَھِّرِیْنَ ترجمہ : اے اللہ عَزَّوَجَلَّ !  مجھے کثرت سے توبہ کرنے والوں میں بنادے اور مجھے پاکیزہ رہنے والوں میں شامل کردے ۔  (  [6])

تَیَمُّم

سوال      کس قسم کی بیماری میں وضو یا غسل کی جگہ تیمم کرنے کی اجازت ہے ؟

جواب     ایسی بیماری ہو کہ وُضو یا غُسل سے اس  (  بیماری) کے زِیادہ ہونے یا دیر میں اچھا ہونے کا صحیح اندیشہ ہو خواہ یوں کہ اس نے خود آزمایا ہو کہ جب وُضو یا غُسل کرتا ہے تو بیماری بڑھتی ہے یا یوں کہ کسی مسلمان اچھے لائق حکیم نے جو ظاہراً فاسق نہ ہو کہہ دیا ہو کہ پانی نقصان کرے گا (  تو ایسی صورت میں تیمم کی اجازت ہے ) ۔  (  [7])

سوال      کتنی مَسافَت تک پانی نہ ملے تو تیمم جائز ہوگا؟

جواب     چاروں طرف ایک ایک میل تک پانی کا پتا نہیں (  تو تیمم جائز ہے ) اگر یہ گمان ہو کہ ایک میل کے اندر پانی ہوگا تو تلاش کر لینا ضروری ہے ۔  بلا تلاش کیے تیمم جائز نہیں ۔  (  [8])

سوال      کس صورت میں نمازِ جنازہ کے لیے تیمم کرنے کی اجازت ہے ؟

جواب     غیر ولی کو نمازِ جنازہ فوت ہو جانے کا خوف ہو تو تیمم جائز ہے ولی کو نہیں کہ اس کا لوگ انتظار کریں گے ۔  خوفِ فوت کے یہ معنی ہیں کہ چاروں تکبیریں جاتی رہنے کا اندیشہ ہو اور اگر یہ معلوم ہو کہ ایک تکبیر بھی مل جائے گی تو تیمم جائز نہیں ۔  (  [9])

سوال      کس صورت میں مردے کو تیمم کروایا جائے ؟

جواب     مُردے کواگر غُسل نہ دے سکیں خواہ اس وجہ سے کہ پانی نہیں یا اس وجہ سے کہ اُس کے بدن کو ہاتھ لگانا جائز نہیں جیسے اجنبی عورت یا اپنی عورت کہ مرنے کے بعد اسے چُھو نہیں سکتا تو اسے تیمم کرایا جائے ، غیر مَحْرَم کو اگرچہ شوہر ہو عورت کو تیمم کرانے میں کپڑا حائل ہوناچاہئے ۔  (  [10])

سوال      قیدی کو جیل میں وضو نہ کرنے دیاجائے تو وہ کیا کرے ؟

جواب     قیدی کو قید خانہ والے وُضو نہ کرنے دیں تو تیمم کرکے نماز پڑھ لے اور اِعَادَہ کرے اور اگر وہ دشمن یا قید خانہ والے نماز بھی نہ پڑھنے دیں تو اشارہ سے پڑھے پھر اعادہ کرے ۔  (  [11])

سوال     ایسی جگہ جہاں پانی ملے نہ پاک مٹی تو نماز کیسے ادا کی جائے ؟

 



[1]     حاشیة طحطاوی ، کتاب الطھارة ، ص۹۲ ۔

[2]     فتاوی ھندیة ، کتاب الطھارة ، الباب الاول فی الوضوء ، الفصل الخامس فی نواقض الوضوء ، ۱ /  ۱۱ ۔

[3]     فتاوی ھندیة ، کتاب الطھارة ، الباب الاول فی الوضوء ، الفصل الخامس فی نواقض الوضوء ، ۱ /  ۱۱ ۔

[4]     کنز العمال ، کتاب الطھارة ، الفصل الثانی فی اداب الوضوء ، ۹ /  ۱۳۲ ، حدیث : ۲۶۰۸۵ ۔

[5]     مسائل القرآن ،  ص٢٩١ ۔

[6]     ترمذی ، کتاب الطھارة ، باب فیما یقال بعد الوضوء ، ۱ /  ۱۲۱ ، حدیث : ۵۵ ۔

[7]     فتاوی ھندیة ، کتاب الطھارة ، الباب الرابع فی التیمم ، ۱ /  ۲۸  ۔

[8]     فتاوی ھندیة ، کتاب الطھارة ، الباب الرابع فی التیمم ، ۱ /  ۲۹

[9]     فتاوی ھندیة ، کتاب الطھارة ، الباب الرابع فی التیمم ، ۱ /  ۳۱ ۔

[10]     درمختار مع ردالمحتار ، کتاب الصلاة ، باب صلاة الجنازة ، مطلب فی حدیث کل سبب ۔ ۔ ۔ الخ ، ۳ / ۱۰۶ ۔

بہارشریعت ، حصہ ۲ ، ۱ / ۳۵۲ ۔

[11]     فتاوی ھندیة ، کتاب الطھارة