Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 02

ایک مانا ۔ “[1])

سوال      کتاب’’آدابِِ سالکین ‘‘ میں  فنا کے کتنے اور کونسے درجے بیان کیے گئے ہیں ؟

جواب     اعلیٰ حضرت کے دادامُرشِد حضرت سیِّد شاہ آلِ احمد اچھے میاں رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِمَا  ’’آدابِ سالکین ‘‘ میں فرماتے ہیں : فنا کے تین درجے ہیں :  (  1) فَنَا  فِی الشَّیْخ  (  2) فَنَا فِی الرَّسُول  (  3) فَنَا فِی اللہ  ۔  (  [2])

سوال      شجرۂ قادریہ عطاریہ میں کتنے ’’اوراد  و  وظائف‘‘اور کتنے مشائخ کرام کا تذکرہ ہے ؟

جواب     کم و بیش 51اَوراد و  وظائف ہیں اور41 مشائخ  کرام کا تذکرہ ہے ۔

سوال      شجرۂ عالیہ کے کل اشعار کتنے ہیں اور یہ اشعار کس نے لکھے ہیں؟

جواب     شجرۂ عالیہ قادریہ رضویہ عطاریہ کل ’’تئیس (  23) اشعار‘‘پر مشتمل ہے ، اس کے ابتدائی ’’اٹھارہ اشعار‘‘اور’’مَقْطع  (  یعنی آخری شعر) ‘‘امامِ اہلسنّت اعلیٰ حضرت  امام احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن کا کلام ہے ۔  (  [3])

سوال      شجرہ شریف کے اِس شعر’’عشقِ اَحمد میں عطا کر چشمِ تَر سوزِ جِگر ،   یا خدا ! اِلیاس کو اَحمد رضا کے واسطے ‘‘کا مطلب بتائیے ؟

جواب     اس شعرمیں شیخِ طریقت ، اَمِیرِاہلسنّتدَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہعرض کرتے ہیں :  اے اللہ عَزَّ  وَجَلَّ ! تجھے اعلیٰ حضرت ، امامِ اہلسنّت رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ کا واسطہ مجھے عشقِ رسول میں چشمِ تَریعنی رونے والی آنکھیں اورسوزِ جگریعنی اُن کی یاد میں تڑپنے والا دل عطا فرما ۔  (  آمین)

دعوتِ اِسلامی کا تَعَارُف

سوال      دعوتِ اسلامی کے زیرِاہتمام ’’پہلا اجتماعی اعتکاف‘‘کہاں ہوا تھا؟

جواب     دعوتِ اسلامی کے اوّلین مَدَنی مرکز’’گلزارِحبیب مسجد‘‘ (  گلستانِ اوکاڑوی ، باب المدینہ کراچی) میں ہوا جس میں  کم و بیش60 اسلامی بھائیوں نے اَمِیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ کے ساتھ اعتکاف  کرنے کی سعادت حاصل کی تھی  ۔  (  [4])

سوال      ہر ہفتے بعد نمازِ عشاء دعوتِ اسلامی کا کونسا خاص ایونٹ ہوتا ہے ؟

جواب     اَمِیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ کی صحبت درحقیقت بہت بڑی نعمت ہے ہر ہفتے بِالخُصُوص اور مختلف مواقع پر بِالعُموم بعد نمازِ عشاء شیخ طریقت ، اَمِیرِ اہلسنّت بانیٔ دعوتِ اسلامی ابوبلال محمد الیاس عطار قادری رضوی ضیائیدَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ ’’مدنی مذاکرہ‘‘ فرماتے ہیں جس میں مسلمانوں کے عقائد واَعمال کی اِصلاح کے ساتھ ساتھ اَخلاقیات واِسلامی معلومات ، معاشی ومعاشرتی وتنظیمی معاملات اور بہت سے موضوعات سے متعلق کئے گئے سوالات کے حکمت ونصیحت سے بھرپور جوابات مَرْحَمَت فرماتے ہیں ۔  (  [5])

سوال      دار الافتاء اہلسنّت کے بارے میں کچھ بتائیے ؟

جواب     اَلْحَمْدُلِلّٰہعَزَّ وَجَلَّمسلمانوں کے شرعی مسائل کے حل کیلئے مُتَعَدَّد ’’دارُالْافتاء اہلسنّت‘‘قائم کئے گئے ہیں جہاں دعوتِ اسلامی کے مُبَلِّغین مفتیانِ کرام بِالمُشَافَہ ، تحریری اور مکتوبات و فون و ای میل کے ذریعے شرعی مسائل کا حل پیش کررہے ہیں ۔  اکثر فتاویٰ کمپیوٹر پر کمپوز کرکے دئیے جاتے ہیں نیز گھر گھر شرعی مسائل کی آگاہی کے لیے بذریعہ مدنی چینل ”دار الافتاء اہلسنّت“ کا سلسلہ بھی ہے اوراب  دار الافتاء اہلسنّت کی موبائل فون ایپ بھی مَنظرِ عام پر آچکی ہے ۔  (  [6])

سوال      جامعۃ المدینہ کی سب سے پہلی شاخ  (  Branch) کب اور کہاں کھولی گئی؟

جواب     پہلی شاخ1995ء میں نیو کراچی کے علاقے مدرسۃ المدینہ گودھرا کالونی  (  باب المدینہ کراچی) کی دوسری منزل میں کھولی گئی ۔  (  [7])

سوال      دعوتِ اسلامی کا کونسا شعبہ درسِ نظامی میں پڑھائی جانے والی کتب پر کام کررہا ہے ؟

جواب     وہ شعبہ دعوتِ اسلامی کی مجلس اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَّۃ  کا” شعبہ درسی کُتُب‘‘ہے جو درسِ نظامی میں رائج کم وبیش 80 کتب کو عصری تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے لئے ان پر شروحات ، حواشی اور تسہیل کا کام کر رہا ہے ۔ اس شعبہ میں کئی وہ عُلمائے کرام بھی ہیں جو جامعۃ المدینہ میں تدریس کے ساتھ ساتھ اپنی تحریری خدمات بھی سرانجام دے رہے  ہیں ، تادمِ تحریر ’’درسِ نظامی‘‘  (  عالم کورس) میں پڑھائی جانے والی 55 سے زائد کتب اس شعبہ کی طرف سے منظرِ عام پر آچکی ہیں اورتقریباً 18 كتب پر کام جاری ہے ، اس  شعبہ کے اہداف میں درسِ نظامی میں شامل جملہ کتب کے عربی حواشی وشروحات  شامل ہیں ۔

سوال      جامعات المدینہ سے سَنَدِ فَراغت پانے والوں کے نام کے ساتھ کیا لکھا جاتا ہے ؟

 



[1]      ملفوظات اعلیٰ حضرت ، ص۴۹۳ ، ملخصاً ۔

[2]     احوال وآثار شاہ آل احمد اچھے میاں مارہروی ، ص۳۰۴ ۔

[3]     حیات اعلیٰ حضرت ، ۳ / ۵۴ ۔

[4]     دعوتِ اسلامی کا تعارف ، ص۱۹ ۔

[5]      دعوت اسلامی کا تعارف ، ص۲۷ ، ماخوذ اً ۔

[6]     دعوتِ اسلامی کی جھلکیاں ، ص۱۰ ، ماخوذ اً ۔

[7]     دعوت اسلامی کا تعارف ، ص۳۱ ۔



Total Pages: 122

Go To