Book Name:Bahar-e-Niyat

       رَسُوْلِ کریمصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمنےارشادفرمایا: جب تم مرغ کی پکارسنوتو اللہتعالٰی سےاُس کا فضل مانگو کیونکہ اُس نےفرشتےکودیکھااوراگرتم گدھےکا رینکنا سنو تو شیطان مردود سے اللہعَزَّ  وَجَلَّ کی پناہ مانگو کیونکہ اُس نے شیطان کودیکھا۔ ([1])

اَن دیکھی مخلوق:

       حضورنَبِیِّ اکرم، شفیْعِ اعظمصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمنےارشادفرمایا: جب رات میں کتوں کا بھونکنا اور گدھے کا رینکناسنو تو اُن سے اللہ تعالٰی کی پناہ مانگو کیونکہ وہ اُسے دیکھتے ہیں جسےتم نہیں دیکھ سکتے۔ ([2])

سواری وغیرہ خریدنے کی چارنِیَّتَیْں

           (1) …خودپراللہعَزَّ  وَجَلَّکی نعمتوں کا اظہارکروں گا۔ (2) …جوگاڑی وغیرہ نہیں خرید سکتے اُن کی مددکروں گا۔ (3) …اِسےخیروبھلائی کے کاموں میں استعمال کروں گا۔ (4) …لوگوں کی حاجتیں پوری کروں گا۔

گاڑی پر سوار ہونے کی دعا:

       بِسْمِ اللہِ، اَلْحَمْدُلِلّٰہِ، سُبْحَانَ الَّذِیْ سَخَّرَلَنَاہٰذَاوَمَاکُنَّالَہٗ مُقْرِنِیْنَ وَاِنَّااِلٰی رَبِّنَا لَمُنْقَلِبُوْنَ، اَلْحَمْدُلِلّٰہ، اَلْحَمدلِلّٰہِ، اَلْحَمْدُلِلّٰہِ، اَللہُ اَکْبَرُ، اَللہُ اَکْبَرُ، اَللہُ اَکْبَرُ، سُبْحَانَکَ اللّٰھُمَّ اِنِّیْ ظَلَمْتُ نَفْسِیْ فَاغْفِرْلِیْ فَاِنَّہٗ لَایَغْفِرُالذُّنُوْبَ اِلَّا اَنْتَیعنیاللہتعالٰی کے نام سے شروع، تمام تعریفیںاللہعَزَّ  وَجَلَّکےلیےہیں، پاک ہےوہ ذات جس نےاس سواری کو ہمارے بس میں کردیا اور یہ ہمارے  قابو میں آنے کی نہ تھی اور ہم اپنے رب تعالٰی کی طرف پھرنے والےہیں، تمام تعریفیںاللہتعالٰی کےلیے، وہ سب خوبیوں سراہاہے، تمام تعریفیںاللہعَزَّ  وَجَلَّ کےلئےہیں، اللہعَزَّ  وَجَلَّسب سےبڑاہے، اللہعَزَّ  وَجَلَّسب سےبڑاہے، اللہعَزَّ  وَجَلَّسب سے بڑا ہے، تیرے لیے پاکی ہےاے ہمارے پروردگار!بے شک میں نے اپنی جان پرظلم کیا پس تو مجھے بخش دے کیونکہ تیرے سوا کوئی بھی گناہوں کو بخشنے والا نہیں۔ ([3])

مریض  سے ملاقات کی چھ نِیَّتَیْں

           (1) …مسلمان کاحق اداکروں گا۔ (2) …حضورنَبِیِّ اکرمصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکےحکم پرعَمَل کروں گا۔ (3) …سنَّتِ رَسُول کی پیروی کروں  گا۔ (4) …مریض سے اپنے لیے عافیت کی دعاکرواؤں گا۔ (5) …اُس کے دل میں خوشی داخل کروں گا۔ (6) …اُس کی ضروریات میں تعاوُن  کروں گا۔

عیادت  کرتے وقت کی  دودُعائیں:

 (1) …مریض کےلیےیوں دعاکرو: لَابَاْسَ طَھُوْرٌاِنْ شَآءَ اللہیعنی  کوئی حرج کی بات نہیں،  اِنْ شَآءَاللہعَزَّ  وَجَلَّ یہ مرض گناہوں سے پاک کرنے والا ہے۔ ([4])

 (2) …سات بار یہ دعا پڑھے: اَسْاَلُ اللہَ الْعَظِیْمَ رَبَّ الْعَرْشِ الْعَظِیْمِ اَنْ یَّشْفِیَکَ یعنی میں عظمت والےاللہعَزَّ  وَجَلَّسےسوال کرتاہوں جوعرشِ عظیم کامالک ہےکہ وہ تجھ کو شفا دے۔ ([5])

عُرس وغیرہ میں حاضری کی آٹھ نِیَّتَیْں

           (1) …مزارات وقُبُور کی زیارت کروں گا۔ (2) …حضورنَبِیِّ رحمتصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی اِتِّباع کروں گا (کہ آپ ہرسال شہدائے اُحد کے مزارات پر تشریف لے جاتے تھے) ۔ (3) …اَہْلِ حق کےگروہ میں اضافہ کروں گا۔ (4) …سلف صالحین کی پیروی کروں گا۔ (5) …خیروبھلائی پرجمع ہونےوالوں کاحصہ بنوں گا۔ (6) …حاضرین کےساتھ دعامیں شرکت کروں گا۔ (7) …مسلمان بھائیوں سےجان پہچان بناؤں گا۔ (8) …بارگاہِ الٰہی سے کوئی نوازش وعطا پاؤں گا۔

ہسپتال وغیرہ جانے کی35نِیَّتَیْں

                 (1) …مریضوں کےلیےاللہتعالٰی سےشفاوعافیت طلب کروں گا۔ (2) …اُن کےعلاج میں  کوشش کروں گااِس نیت کے ساتھ کہ اللہعَزَّ  وَجَلَّ نے ہر مرض کے لیے دواپیدافرمائی ہے۔ (3) …اللہ عَزَّ وَجَلَّکےفضل وجودکاطلب گاررہوں گا۔ (4) …اللہ تعالٰی کی قدرت کےمناظردیکھوں گا۔ (5) …مریضوں اورزخمیوں کی غم خواری کروں گا۔ (6) …اُن کےدلوں میں خوشی وسُرورداخل کروں گا۔ (7) …نیکی وتقوٰی پر تعاوُن کروں گا۔ (8) …انہیں نصیحتیں کروں گا۔  (9) …اُن سےدعاکی درخواست کروں گا۔ (10) …قدرتِ الٰہی کےسامنےعاجزہونےکااِقرارکروں گا۔ (11)



[1]   بخاری،  کتاب بدء الخلق،  باب خیر مال المسلم غنم... الخ،  ۲ / ۴۰۵،  حدیث: ۳۳۰۳

[2]   ابو داود،  کتاب الادب،  باب نھیق الحمیر ونباح الکلاب، ۴ / ۴۲۳،  حدیث: ۵۱۰۳

[3]   ابو داود، کتاب الجھاد،  باب ما یقول الرجل اذا رکب،  ۳ / ۴۹،  حدیث