Book Name:Qutub-e-Alam Ki Ajeeb Karamat Ma Deger Dilchasp Sawal Jawab

الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام نے اللہ عَزَّوَجَلَّ کی بارگاہ میں عرض کی:اے میرے  رب عَزَّوَجَلَّ !  جو اپنے بھائی کو نیکی کا حکم کرے اور بُرائی سے روکے اُس کی جَزا کیا ہے؟ اللہ عَزَّوَجَلَّ نے اِرشاد فرمایا:میں اُس کے ہر ہر کلمے کے بدلے ایک ایک سال کی عبادت کا ثواب لکھتا ہوں اور اُسے جہنم کا عذاب دینے میں مجھے حَیا آتی ہے۔ ([1]

 ’’ فیضانِ سُنَّت ‘‘  کا  دَرْس دینے اور سننے سے  علم میں اِضافہ ہوتا ہے اور یہ کم وقت میں زیادہ  علمِ دین حاصل کرنے کا ایک بہترین ذَریعہ ہے۔آج ہماری اکثریت علمِ دِین سے دُور ہوتی جا رہی ہے، بدقسمتی سے مسلمانوں کی اکثریت کے پاس اِتنا وقت نہیں کہ وہ کسی مدرسے یا جامعہ میں داخلہ لے کر باقاعدہ علمِ دِین حاصل کرے ، تو ایسے حالات میں ”فیضانِ سنَّت“ کا دَرس دینا اور سننا بھی غنیمت ہے۔ ([2]

میٹھے میٹھےاسلامی بھائیو!   گناہوں سے خود کو  بچانے، نیکیوں کا جذبہ پانے اور نیکی کی دعوت کی دھومیں مچانے کے لیے تبلیغِ قرآن و سنَّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کے مدنی ماحول سے وابستہ ہو کر مسجد،  گھر،  دُکان اوربازار  وغیرہ جہاں جہاں سہولت ہو خوب خوب فیضانِ سنت سے دَرس  دیجیے اور  سنیے،  یہ مدنی اِنعامات میں سے ایک مدنی اِنعام بھی ہے کہ ” کیا آج آپ نے فیضانِ سنَّت سے دو دَرس  (مسجد ،  گھر ، دُکان ، بازار وغیرہ جہاں سہولت ہو )   دیئے یا سنے؟ (دو میں سے گھر کا ایک دَرس ضروری ہے۔)  “اس مدنی اِنعام پر عمل  کی برکت سے اِنْ شَآءَ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ ہرطرف نیکی کی دعوت کی دھوم مچ جائے گی۔ اللہ عَزَّوَجَلَّ ہمیں دَرس دینے اور سننے کی توفیق عطافرمائے اور اس کی برکتوں سے مالا مال فرمائے ۔اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلہٖ وَسَلَّم

عمل کا ہو جذبہ عطا یاالٰہی

گناہوں سے مجھ کو بچا یاالٰہی  

سعادت ملے درسِ فیضانِ سنَّت      

کی روزانہ دو مرتبہ یاالٰہی     (وسائلِ بخشش

فیضانِ سُنَّت کے دَرس سے روکنا کیسا؟

سُوال :بعض مساجد کی  اِنتظامیہ بِغیر کسی معقول وجہ کے  ’’ فیضانِ سُنَّت ‘‘   کا  دَرْس نہیں دینے دیتی، ان کا ایسا کرنا کیسا ہے؟

جواب :مَساجد اللہ عَزَّ وَجَلَّ کا گھر ہیں جیسا کہ پارہ 29 سورۃُ الجن کی آیت نمبر 18میں خُدائے رحمٰن عَزَّ وَجَلَّ کا فرمانِ عالیشان



[1]    مُکاشَفَةُ القلوب، الباب الخامس عشر فی الأمر بالمعروف...الخ ، ص۴۸  دارالکتب العلميه بیروت

[2]    دِینی مدارس سے تعلق رکھنے والوں کو بھی  فیضانِ سنَّت سے دَرس دینے اور سننے کی عادت بنانی چاہیے کہ اس سے جہاں معلومات حاصل ہوتی ہیں وہیں اللہ عَزَّوَجَلَّ  کی رحمت سے ڈھیروں ڈھیر برکتیں بھی نصیب ہوتی ہیں  ۔ (شعبہ فیضانِ مدنی مذاکرہ)



Total Pages: 21

Go To