Book Name:Ijtimai Sunnat e itikaf ka Jadwal

حضرتِ سیِّدُنا عُقْبَہ بن عامررَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ فرماتے ہیں کہ میں نے رسولِ کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کو فرماتے ہوئے سنا کہ میری اُمت میں سے جو شخص رات کو بیدار ہوکر اپنے نفس کو طہارت کی طرف مائل کرتاہے حالانکہ اس پر شیطان گرہیں لگاچکاہوتاہے توجب وہ اپنے ہاتھ دھوتاہے تو ایک گرہ کھل جاتی ہے، جب وہ چہرہ دھوتاہے تو دوسری گرہ کھل جاتی ہے، جب وہ اپنے سر کا مسح کرتاہے تو تیسری گرہ کھل جاتی ہے جب وہ اپنے پاؤں دھوتاہے تو چوتھی گرہ کھل جاتی ہے تو اللہ عَزَّوَجَلَّ   حجاب کے پیچھے موجود فرشتوں سے فرماتاہے کہ میرے اس بندے کو دیکھو جو اپنے نفس کو مجھ سے سوال کرنے پر مائل کرتاہے ،یہ بندہ مجھ سے جو کچھ مانگے گاوہ اسے عطا کر دیا جائے گا ۔ ([1])  

حضرتِ سیِّدُناجابِررَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے کہ میں نے نبیٔ  کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کو فرماتے ہوئے سنا:بے شک رات میں ایک ایسی ساعت ہے کہ اس گھڑی میں مسلمان بندہ جب اللہ  عَزَّوَجَلَّ  سے دُنیا وآخرت کی کوئی بھلائی طلب کرتاہے تو اللہ عَزَّوَجَلَّ   اسے وہ بھلائی ضرور عطا فرماتاہے اوریہ ساعت ہر رات میں ہوتی ہے ۔ ([2])   

حضرتِ سیِّدُنا عَبْدُ اللّٰه بن سَلام رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ  فرماتے ہیں کہ جب حضورِ اکرمصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم مدینۂ منورہ (زَادَھَااللّٰہُ شَرَفًاوَّتَعْظِیْمًا)  تشریف لائے تو لوگ جُوق درجُوق حُضُور  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم  کی بارگاہ میں حاضر ہو نے لگے۔ میں بھی ان لوگوں میں شامل تھا ۔جب میں نے آپ  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمکے چہرۂ مبارک کو غور سے دیکھا تو جان لیا کہ یہ کسیجھوٹے کا چہرہ نہیں اور پہلی بات جو میں نے رسول ِاکرم  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمسے سُنی وہ یہ تھی کہ اے لوگو !سلام کو عام کرو اور محتاجوں کو کھاناکھلایا کرو اور صلۂ رحمی اختیا رکرو اور رات کو جب لوگ سو رہے ہوں تو نماز پڑھا کرو، جنت میں سلامتی کے ساتھ داخل ہو جاؤ گے۔ ([3])  

حضرتِ سیِّدُنااَبُومالِک اَشْعَری رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے کہ نبی مُکَرَّم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم نے  فرمایا:بے شک جنت میں کچھ ایسے محلات ہیں جن میں آرپار نظر آتاہے، اللہ عَزَّوَجَلَّ  نے وہ محلات ان لوگوں کے لیے تیار کئے ہیں جو محتاجوں کو کھانا کھلاتے ہیں ،سلام کو عام کرتے اور رات کو جب لوگ سورہے ہوں تو نماز پڑھتے ہیں۔ ([4])  

نوافل (وقت 10منٹ)

نوافل میں قراءت درمیانی رفتار میں ہو ، زیادہ تیز تیز نہ پڑھا جائے اور نہ ہی بالکل آ ہستہ پڑھیئے،خوش الحانی سے پڑھیے۔ (ایسے اسلامی بھائی کا درست مخارج اور درست قراءت والا ہونا ضروری ہے ورنہ امامت کی اجازت ہرگز نہ دی جائے۔)  ہر وقت اس بات کا خیال رکھیے کہ ہمیں جدول پر دئیے گئے وقت پر نظر رکھتے ہوئے آگے بڑھتے جانا ہے چاہے کسی حلقے میں اسلامی بھائیوں کی تعداد پوری ہو یا کم ہمیں وقت کو مدِنظر رکھنا ہے۔

تَحِیَّۃُالْوُضُو

 ( صبحِ صادق سے 20منٹ قبل یہ اِعلان کیجئے )

اللہ عَزَّوَجَلَّ  کی رضاپانے اور ثواب کمانے کے لئے مدنی انعام نمبر20 کے جز تَحِیَّۃُالْوُضُو  کے نفل ادا کرنے کی سعادت حاصل کریں گے۔ اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ

تَحِیَّۃُالْمَسْجِد

 ( اب اس طرح اعلان کیجئے )

اللہ عَزَّوَجَلَّ  کی رضا پانے اور ثواب کمانے کے لئے مدنی انعام نمبر 20 کے جُز تَحِیَّۃُ الْمَسْجِد کے نفل ادا کرنے کی سعادت حاصل کریں گے۔ اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ 



2      صحیح ابن حبان ،  کتاب الطھارة ،  باب فضل الوضوء، ۲/۱۹۴، حدیث: ۱۱۴۹

3     مسلم،  کتا ب صلاة المسافرین...الخ،  با ب فی اللیل ...الخ، ص۳۸۰، حدیث: ۷۵۷

4     ترمذی ، کتا ب صفة القیامة،  با ب : ۴۲ ، ۴/۲۱۹، حدیث: ۲۴۹۳

5     صحیح ابن حبان ، کتا ب البر ...الخ، باب افشا ء السلام ...الخ، ۱/۳۶۳،  حدیث: ۵۰۹



Total Pages: 43

Go To