Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 01

سوال   حضورِ اکرم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی رضاعی والدہ کا نام بتائیے؟

جواب   رحمتِ کونین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی رضاعی والدہ کا نام حضرت حلیمہ سعدیہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَاہے۔([1])

سوال   حضورنبیِّ کریمصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکےشہزادےکتنےتھے ؟

جواب   حضورنبیِّ رحمت صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے چار شہزادے ہوئے جن کے اسمائےمبارکہ یہ ہیں: (۱)حضرت سیدناقاسم (2)حضرت سیدناطیب(3)حضرت سیدناطاہر اور (4) حضرت سیدنا ابراہیم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ۔ان میں سے پہلے تین شہزادے اُم المؤمنین حضرت سیدتنا خدیجۃُ الکبریٰ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَاسے ہیں اور یہ ظہورِ اسلام سے پہلے انتقال فرماگئے تھے اور چوتھے شہزادے حضرت   سیدتنا ماریہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَاسے ہیں۔([2])

سوال   پیارے آقا صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی شہزادیاں کتنی تھیں ؟

جواب   رحمتِ کونینصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی چار شہزادیاں تھیں اور ان کے اسمائے مبارکہ یہ ہیں : (۱)حضرت سیدتنا زینب (۲)حضرت سیدتنا رُقیہ(۳) حضرت سیدتنا اُم کلثوم اور(۴)خاتون جنت حضرت سیدتنافاطمہ زہرہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی  عَنْہُن۔([3])

سوال   حضورِ اکرم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی پھوپھیوں کی تعداد بیان کریں ؟

جواب   آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی پھوپھیوں کی تعداد6 ہے ۔([4])

سوال   پیارے آقا صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے چاند کے جو دو ٹکڑے کرکے دکھائے تھے وہ کس کس پہاڑ پر دیکھے گئے تھے؟

جواب   ایک ٹکڑا ’’ جبل ابو قبیس ‘‘ اور دوسرا ٹکڑا  ’’ جبل ِقعیقعان ‘‘ پر دیکھا گیا۔([5])

سوال   سوال:  پیارے آقا صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے اخلاق کریمہ کے بارے میں کچھ بتائیے؟

جواب     آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے اخلاق حسنہ کے بارے میں خود خالقِ اَخلاق  عَزَّ  وَجَلَّ نے یہ فرما دیا: ( وَ اِنَّكَ لَعَلٰى خُلُقٍ عَظِیْمٍ(۴)) (پ۲۹،  القلم: ۴) ترجمۂ کنز الایمان:  ’’ اور بے شک تمہاری خوبو بڑی شان کی ہے۔ ‘‘ حضور نبی کریم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم محاسنِ اخلاق کے تمام گوشوں کے جامع تھے۔ یعنی حلم و عفو، رحم و کرم،  عدل و انصاف،  جود و سخا،  ایثار و قربانی،  مہمان نوازی،  عدمِ تشدد،  شجاعت،  ایفاء عہد،  حسن معاملہ، صبروقناعت، نرم گفتاری، خوش روئی،  ملنساری،  مساوات،  غمخواری،  سادگی وبے تکلفی،  تواضع وانکساری،  حیاداری کی اتنی بلند منزلوں پر آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم فائز و سرفراز ہیں کہ حضرت عائشہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہَا نے ایک جملے میں اس کی صحیح تصویر کھینچتے ہوئے ارشاد فرمایا کہ کَانَ خُلُقُہُ الْقُرْآنَ یعنی تعلیماتِ قرآن پر پورا پورا عمل یہی آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے اخلاق تھے۔([6])

سوال    آپ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکا وصال ظاہری کس سنِ ہجری میں ہوا؟

جواب     گیارہ سنِ ہجری۔([7])

سیدنا صدیقِ اکبر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ 

سوال      قرآنِ پاک میں کسے سب سے بڑا پرہیزگار کہا گیا؟

جواب     قرآن پاک میں حضرت سَيّدُناابو بکر صدیق رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کو سب سے بڑا پرہیزگار کہا گیا۔چنانچہ اللہ عَزَّ  وَجَلَّارشاد فرماتا ہے: (وَسَیُجَنَّبُهَا الْاَتْقَىۙ(۱۷) )(پ۳۰، اللیل: ۱۷) ترجمۂ کنز الایمان: اور بہت جلد اس(جہنم) سے دور رکھا جائے گا جو سب سے بڑا پرہیزگار۔اس آیت میںاَتْقٰی(سب سےبڑا پرہیزگار) سے مراد سَيّدُنا صدیقِ اکبر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ ہیں۔امام فخر الدین رازی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْقَوِی تفسیر ِکبیر میں ارشاد فرماتے ہیں: ”مفسرینِ کرام کا اس بات پر اِجماع ہےکہ یہ آیت مبارکہ امیر المؤمنین حضرت سَيّدُناابوبکر صدیق رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُکے بارے میں نازل ہوئی۔([8])

سوال      شان صدیق اکبر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کےبارے میں کچھ فرامینِ مصطفےٰ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم  بیان فرمائیں؟

جواب     حضرت سَيّدُنا ابوبکر صدیق رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُکی شان میں تین فرامینِ مصطفےٰ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم: (۱)”فرشتےابوبکرصدیق کوروزِ قیامت لائیں گے اور انبیا وصِدّیقین کے ساتھ جنت میں جگہ دیں گے۔“([9])(۲)مجھ پر جس کسی کا احسان تھا میں نے اس کا بدلہ چکا دیا ہے مگر ابوبکر کے مجھ پر وہ اِحسانات ہیں جن کا بدلہ اللہ تعالٰی روزِ قیامت انہیں عطا فرمائے گا۔“([10])(۳)”میری امت کے لیے سب سے زیادہ مہربان ابوبکر ہیں۔“([11])

سوال      انبیا ومرسلین عَلَیْہِمُ الصَّلَاۃُ السَّلَام کے بعد سب سے افضل کون ہیں؟

 



2   مسند ابویعلٰی، حدیث حلیمة بنت الحارث، ۶/ ۱۷۱، حدیث: ۷۱۲۷۔

3   بشیر القاری، ص۱۰۶۔

1   فقه الاکبر، ابناءرسول اللّٰه وبناته، ص ۱۹۹۔

2   مواهب اللدنية، المقصد الثانی، الفصل الرابع، ۱/۴۲۵۔

3   خصائص کبری، باب انشقاق القمر،

Total Pages: 99

Go To