Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 01

شخص کے پاس نہ بیٹھیں۔ ([1])

سوال   ساداتِ کرام سے بغض رکھنے کا کیا نقصان ہے ؟

جواب   حدیث شریف میں ہے : جو شخص ہم سے بغض یا حسد کرے گا اسے قیامت کے دن حوضِ کوثر سے آگ کے چابکوں کے ساتھ دور کیا جائےگا۔([2])

سوال   علمائے کرام سے بغض رکھنے والے کا کیا حکم ہے؟

جواب    (عالم دین سے) اگر بے سبب رنج (یعنی بغض) رکھتا ہے تو مریضُ القلب،  خبیثُ الباطن اور اس کے کفر کا اندیشہ ہے۔ ([3])

سوال   اولیائے کرام سے بغض رکھنے پرکیا وعید آئی ہے؟

جواب   حدیث شریف میں ہے : جو اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کے کسی ولی سے دشمنی رکھے تحقیق  اس نے اللہ عَزَّوَجَلَّ کے ساتھ اِعلانِ جنگ کردیا۔([4])

 

سوال      کیا مال ودولت کی فراوانی بغض وکینہ  کا سبب بنتی ہے؟

جواب     جی ہاں ! یہ بھی آپس میں بغض وکینہ کا ایک سبب ہے۔حضورِاکرم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلہٖ وَسَلَّمَنے ارشادفرمایا: ”لَا تُفْتَحُ الدُّنْیَا عَلٰی اَحَدٍ اِلَّا اَلْقَی اللہُ بَیْنَہُمُ الْعَدَاوَۃَ وَالْبَغْضَاءَ اِلٰی یَوْمِ الْقِیَامَۃِ ‘‘  یعنی دنیا کسی پر کشادہ نہیں کی جاتی مگراللہعَزَّ  وَجَلَّ تاقیامت ان کے درمیان بغض وعداوت  رکھ دیتا ہے۔([5])

سوال      بغض و کینہ سے بچنے کے کوئی دو علاج بتائیے ؟

جواب     (۱)ایمان  والوں کے کینے سے بچنے کی دعا کیجئے، پارہ 28سورۂ حشر، آیت نمبر10 کو یاد کرلینا اور وقتاً فوقتاً پڑھتے رہنا بھی مفید ہے: (وَ لَا تَجْعَلْ فِیْ قُلُوْبِنَا غِلًّا لِّلَّذِیْنَ اٰمَنُوْا رَبَّنَاۤ اِنَّكَ رَءُوْفٌ رَّحِیْمٌ۠(۱۰)) ترجمۂ کنزالایمان: اور ہمارے دل میں ایمان والوں کی طرف سے کینہ نہ رکھ  اے رب ہمارے بیشک تو ہی نہایت مہربان رحم والا ہے۔(۲)مسلمانوں سے اللہ عَزَّوَجَلَّ کی رضا کے لئے محبت کرنا  کیونکہ محبت کینے کی ضد ہے۔ ([6])

سوال      کیا شبِ براءت میں بغض وکینہ رکھنے والے کی مغفرت ہوجاتی ہے ؟  

جواب     جی نہیں! حضور نبیِّ محترم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا: اللہعَزَّ وَجَلَّ   شعبان کی پندرہویں رات اپنے بندوں  پرخاص  تجلی فرماتا ہے ،  مغفرت چاہنے والوں کی مغفرت فرماتا ہے  اور رحم طلب کرنے والوں پر رحم فرماتا ہے جبکہ کینہ        رکھنے والوں کو ان کی حالت پر  چھوڑ دیتا ہے۔([7])

سوال    دوسروں کو اپنے کینے سے کیسے بچایا جاسکتا ہے؟

جواب   اس کے لیے پانچ مدنی پھول پیشِ خدمت ہیں : (1)کسی کی بات کاٹنے سے بچئے (2) تعزیت کے دوران مسکرانے سے بچئے (3) کسی کی غلطی نکالنے میں احتیاط کیجئے (4)موقع محل کے مطابق عمل کیجئے (5)خواہ مخواہ حوصلہ شکنی نہ کیجئے۔([8])

سوال    کیا اہلِ جنت کے درمیان بھی بغض و کینہ ہوگا؟

جواب   جی نہیں۔ حدیث شریف میں ہے : اہلِ جنت میں آپس میں اختلاف نہ ہوگا ،  نہ بغض و کدورت۔ سب کے دل ایک ہوں گے،  صبح و شام اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کی پاکی بیان کریں گے ۔([9])

حسد

سوال   حسد کسے کہتے ہیں؟

جواب   کسی کی دینی یا دُنیاوی نعمت کے چھن جانےکی تمنا کرنا یا یہ خواہش کرنا کہ فُلاں شخص کو یہ  نعمت نہ ملے، اسے ’’ حسد ‘‘ کہتے ہیں۔([10])

سوال   حسد کرنے والے اور جس سے حسد کیا جائے اُسے کیا کہتے ہیں؟

جواب   حسد کرنے والے کو ’’ حاسِد ‘‘ اورجس سے حسد کیا جائے اُسے ’’ مَحسُود ‘‘ کہتے ہیں۔

سوال      غِبْطَہ کسے کہتے ہیں؟

جواب     غِبْطَہ یعنی رشک کے یہ معنی ہیں کہ دوسرے کو جو نعمت ملی ویسی مجھے بھی مل جائے اوریہ آرزو نہ ہو کہ اسے نہ ملتی یا اس سے جاتی رہے۔([11])

 



2   سوانح کربلا، ص ۳۱۔

3   معجم اوسط ، ۲/۳۳ ، حدیث : ۲۴۰۵۔

4   فتاوی رضویہ ، ۲۱/۱۲۹۔

5   ابن ماجہ ، کتاب الفتن ، باب من ترجی لہ سلامۃ الفتن ، ۴/۳۵۰ ، حدیث  :۳۹۸۹۔

1   مسند احمد، مسند عمر بن الخطاب ، ۱/۴۵، حدیث:۹۳۔

2   باطنی بیماریوں کی معلومات ، ص ۵۵-۵۶۔

1   شعب الایمان، باب فی الصیام، ماجاء فی لیلۃ النصف من شعبان، ۳/۳۸۲، حدیث:۳۸۳۵۔

2   بغض و کینہ ، ص ۶۲۔

3   بخاری ، کتاب بدءالخلق ، باب ماجاء فی صفۃ الجنۃ   الخ ، ۲/۳۹۱ ، حدیث : ۳۲۴۵۔

4   طریقۃ محمدیۃ مع حدیقۃ ندیۃ، الخلق الخامس عشر من الاخلاق الستّین المذمومۃ    الخ، ۱/۶۰۰-۶۰۱۔

1   احیاء العلوم، کتاب ذم الغضب والحقد والحسد، القول فی ذمّ الحسد وفی حقیقتہ    الخ، ۳/۲۳۴۔



Total Pages: 99

Go To