Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 01

سوال   بینک میں دُگنا ہونے کے لیے پیسہ جمع کرناکیسا ہے ؟  

جواب   بینک میں اس طرح پیسہ جمع کروانا ناجائز و حرام ہے کیونکہ اس پر جو منافع مل رہا ہے یہ سود ہے اور سود کواللہ جَلَّ مَجْدُہُ نے قرآن ِ مجید میں حرام قرار دیا ہے۔([1])

سوال   دکاندار کو مخصوص رقم پیشگی دینا اور تھوڑاتھوڑا سامان خریدکر پیسے کٹواتے رہنا کیساہے؟

جواب   اس طرح روپیہ دینا ممنوع ہے کہ اس قرض سے یہ نفع ہوا کہ اپنے پاس رہنے میں پیسے ضائع ہونے کا احتمال تھا اب یہ احتمال جاتا رہا اور قرض سے نفع اٹھانا جائزنہیں۔ ([2])

سوال   کیاموبائل  کمپنی  سے ایڈوانس بیلنس لینا سودی معاملہ ہے؟

جواب   یہ ہر گز سود نہیں ہے ،  بلکہ ایک جائز طریقہ ہے ،  کیونکہ یہ اجارہ ہے قرض نہیں ہے،  کیونکہ یہاں کمپنی سے پیسے وصول نہیں کئے جارہے بلکہ ان کی سروس استعمال کی جارہی ہے ۔ البتہ اس کو لون(Loan) کا نام نہ دیا جائے کیونکہ اس سے یہ شبہ ہوتا ہے کہکمپنی قرض دے کر اس پر نفع وصول کررہی ہے۔([3])

سوال   سود سے بچنے کے کوئی دو علاج بیان کیجئے ؟

جواب   (۱) انسان قناعت اختیار کرے ،  اس طرح وہ مال کی حرص سے بچے گا اور حرام ذرائع اختیار نہیں کرے گا ۔(۲) ہر دم موت کو یاد رکھا جائے ،  جب یہ سوچ بن جائے گی کہ مرنا ہے اور موت کا کوئی بھروسا نہیں کب آجائے تو حرام روزی کی طرف بڑھنے سے رکنا نصیب ہوجائے گا (اِنْ شَآءَالله عَزَّ  وَجَلَّ)۔ ([4])

سوال    کوئی چیز گروی رکھوا کر قرض لیا ہو تو کیااُس چیزکواستعمال کرسکتے ہیں ؟

جواب   جی نہیں ، اسے استعمال کرناجائزنہیں ہے ۔([5])

سوال   احادیثِ کریمہ میں قرض دینے کے کیا فضائل آئے ہیں ؟

جواب    حضورتاجدارِ رِسالت صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمنے ارشاد فرمایا : ہر قرض صدقہ ہے ۔([6]) اوریوں ہی ارشاد فرمایا : صدقے کا ثواب دس گنا جبکہ قرض دینے کا ثواب اٹھارہ گنا ہے ۔([7])

سوال   اعلیٰ حضرت رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ قرض  کی واپسی کا مطالبہ کرتے تھے نہ قرض کو ہبہ  کرتے اس کی کیا وجہ تھی ؟

جواب   امام اہلسنّت امام احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ المَنَّانْ فرماتے ہیں : میرے پندرہ سو روپے لوگو ں پر قرض ہیں ،  جب قرض دیا  یہ خیال کرلیا کہ دے دے تو خیر و رنہ طلب نہ کرو ں گا ۔ جن صاحبوں نے قرض لیا دینے کا نام نہ لیا۔ (پھر فرمایا) جب یوں قرض دیتا ہوں تو ہبہ کیوں نہیں کر دیتا؟ اس کی وجہ یہ ہے کہ حدیث شریف میں ارشاد فرمایا : جب کسی کا دوسرے پر دَین (یعنی قرض )ہو اور اس کی میعاد گزر جائے تو ہر روز اسی قدر روپیہ کی خیرات کا ثواب ملتا ہے جتنا دَین ہے ۔([8]) اِس ثوابِ عظیم کے لئے میں نے قرض دیئے،  ہبہ نہ کئے کہ پندرہ سوروپے روز میں کہا ں سے خیرات کرتا ۔([9])

سوال   مقروض اگرتنگدست ہو تو اسے مہلت دینے کی کیا فضیلت ہے؟

جواب   رسولُ اللہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلہٖ وَسَلَّمَ نے ارشاد فرمایا: جس کو یہ بات پسند ہو کہ قیامت کی سختیوں سےاللہعَزَّ  وَجَلَّ   اُسے نجات بخشے، وہ تنگ دست کو مہلت دے یامعاف کردے۔([10])

سوال   قرض لیتے وقت چیز کی قیمت کم تھی مگر لوٹاتے وقت زیادہ ہوجائے تو کیااب  وہی چیز دینی ہوگی یا کم قیمت شے بھی دے سکتے ہیں؟

جواب   قرض کی ادائیگی میں چیز کے سستے اور مہنگے ہونے کا اعتبار نہیں ہوتا،  وہی چیز واپس کرنی ہوتی ہے۔لہٰذا چیزمہنگی ہوجائے یاسستی وہی چیز لوٹائی جائے گی۔([11])

کھانا

سوال         کس صورت میں کھانا کھانا فرض ہے ؟

جواب   اگر بھوک کا اتنا غلبہ ہو کہ جانتا ہو کہ نہ کھانے سے مرجائے گا تو اتنا کھالینا جس سے جان بچ جائے فرض ہے اور اس صورت میں اگر نہیں کھایا یہاں تک کہ مر گیا تو گنہگار ہوا۔([12])

سوال         پیٹ کا قفلِ مدینہ کسے کہتے ہیں؟

جواب   اپنے پیٹ کو حرام غذا سے بچانا اور حلال خوراک بھی بھوک سے کم کھانا  ’’ پیٹ کا قفلِ مدینہ  ‘‘ لگانا ہے۔([13])

 



2   دار الافتاء اہلسنت۔

3   درمختار، کتاب الحظر والإباحۃ، فصل في البیع، ۹/۶۴۹۔

4   دار الافتاء اہلسنت۔

1   حرص ، ص۵۸- ۶۵ماخوذا۔

2   فتاوی ھندیۃ، کتاب البیوع، الباب التاسع عشرفی القرض...الخ، ۳/۲۰۳، ۲۰۴۔

3   معجم اوسط ، ۲/۳۴۵ ، حدیث : ۳۴۹۸۔

4   ابن ماجہ ، کتاب الصدقات، باب القرض ، ۳/۱۵۴ ، حدیث : ۲۴۳۱۔

1   مسند امام احمد ، مسند عمران بن حسین، ۷/۲۲۴، حدیث: ۱۹۹۹۷۔

2   ملفوظات اعلیٰ حضرت ، ص ۹۱۔

3   مسلم، کتاب المساقاۃ   الخ، باب فضل انظار المعسر ، ص ۸۴۵ ، حدیث:۱۵۶۳۔

4   درمختار، کتاب البیوع، باب المرابحۃوالتولیۃ، فصل فی القرض، ۷/۴۰۸۔

1   درمختار، کتاب الحظر والاباحة، ۹/۵۵۹۔

2   فیضانِ سنت ، ص ۶۴۳۔



Total Pages: 99

Go To