Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 01

جواب   رسولِ اکرم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کا فرمانِ عِبْرَت نشان ہے : جو کسی عورت سےاس کی عزت کے باعث نکاح کرے گااللہ عَزَّوَجَلَّاس کی ذلت میں اضافہ کرے گا اورجوکسی عورت سےاس کےمال کےسبب نکاح کرے گا اللہ تعالٰی اس کی محتاجی ہی بڑھائےگا۔([1])

سوال   کم سے کم مَہرکتناہے؟

جواب   مہرکم سے کم دس درہم(یعنی دوتولہ ساڑھے سات ماشہ(618.30گرام)چاندی یااس کی قیمت)ہےاس سے کم نہیں ہوسکتا۔([2])

سوال   کیاعورت کے مہرمعاف کردینے سے معاف ہوجائےگا؟

جواب   عورت کُل مَہریاجُز(بعض)معاف کردے تومعاف ہوجائے گابَشَرطیْکہ شوہر نے انکارنہ کردیاہو۔([3])

سوال   مَہرکی کتنی قِسمیں ہیں؟

جواب   مہرتین قسم( کا)ہے: (۱)مُعَجَّل کہ خَلْوَت سے پہلےمہردیناقرارپایاہے۔(۲) مُؤجَّل جس کے لئےکوئی میعادمقررہو۔(۳)مُطْلَق جس میں نہ وہ ہونہ یہ(یعنی نہ خَلْوَت سے پہلے دیناقرارپایاہو، نہ ہی اس کے لئے کوئی مدت مقررہو)۔ ([4])

سوال   مہرنہ دینے کی نیت سے نکاح کرنے والے کےلئے کیاوعیدہے؟

جواب   حضورنبی پاک صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے ارشادفرمایا: جوشخص نکاح کرے اورنیت یہ ہوکہ عورت کومہرمیں سے کچھ نہ دے گا، توجس روزمَرے گازانی مرے گا۔([5])

سوال   کیامردکاپَری سے اورعورت کاجن سے نکاح ہوسکتاہے؟

جواب   مردکا پری سے یاعورت کاجن سے نکاح نہیں ہوسکتا۔([6])

سوال   بچے کو ماں کا دودھ کتنے سال تک پلانے کی اجازت ہے؟

جواب   بچہ کو دو برس تک دودھ پلایا جائے، اس سے زیادہ کی اجازت نہیں اور برس سےمرادہجری برس ہے۔([7])

سوال   کیالڑکے اور لڑکی کو دودھ پلانے کی مدت میں کوئی فرق ہے؟

جواب   جو بعض عوام میں مشہور ہے کہ لڑکی کو دو برس تک اور لڑکے کو ڈھائی برس تک پلا سکتے ہیں یہ صحیح نہیں ۔([8])

سوال   کیامدت پوری ہونے کے بعدبَطَورِ علاج دودھ پلایا جاسکتا ہے؟

جواب   مدت پوری ہونے کے بعد بطورِ علاج بھی دودھ پلانا جائز نہیں ۔([9])

سوال      حُرْمَتِ رَضاعَت یعنی نکاح حرام ہونےکے لیے دودھ پلانے کی مدت کیا ہے ؟

جواب     نکاح حرام ہونے کے لیے ڈھائی برس کا زمانہ ہے یعنی دو برس کے بعد اگرچہ دودھ پلانا حرام ہے مگر ڈھائی برس کے اندر اگر دودھ پلا دے گی حُرْمَتِ نکاح  ثابت ہو جائے گی۔([10])

طلاق،  عدّت  اور سوگ

سوال      اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کو کونسی حلال  چیز سب سے  زیادہ ناپسندہے؟

جواب     حدیث شریف میں ہے: اَبْغَضُ الْحَلَالِ اِلَی اللہِ تَعَالٰی اَلطَّلَاق.یعنیاللہ عَزَّ  وَجَلَّ کےنزدیک حلال چیزوں میں سب سے ناپسندیدہ شے طلاق ہے۔([11])

سوال      طلاق کسے کہتے ہیں ؟

جواب     نکاح سے عورت شوہر کی پابند ہو جاتی ہے اس پابندی کے اُٹھا دینے کو طلاق کہتے ہیں اوراس کے لیے کچھ الفاظ مُقَرَّر ہیں۔([12])

سوال  طلاقِ بائن اوررَجعی میں کیافرق ہے؟

جواب  طلاق کی دوصورتیں ہیں: ایک یہ کہ عورت اسی وقت نکاح سے باہرہوجائے اسے بائن کہتے ہیں۔دوم یہ کہ عِدَّت گزرنے پرباہرہوگی، اسے رَجعی کہتے ہیں۔([13])

 



1   معجم اوسط، ۲/ ۱۸، حدیث:۲۳۴۲۔

2   فتاوی ھندیۃ، کتاب النکاح، الباب السابع فی المھر، الفصل الاول، ۱/ ۳۰۳۔

3   درمختار، کتاب النکاح، باب المھر، ۴/ ۲۳۹۔

4   بہارشریعت، حصہ۷، ۲/ ۷۴۔

1   معجم کبیر، ۸/ ۳۵، حدیث:۷۳۰۲۔

2   درمختاروردالمحتار، کتاب النکاح، ۴/ ۷۰۔

3   بہارشریعت، حصہ۷، ۲/۳۶۔خزائن العرفان، پ۱، البقرۃ، تحت الآیۃ: ۱۸۹، ص ۶۳ماخوذًا۔

4   بہار شریعت، حصہ۷، ۲/۳۶۔

5   درمختار، کتاب النکاح، باب الرضاع، ۴/ ۳۸۹۔

1   بہارشریعت، حصہ۷، ۲/ ۳۶۔

2   ابوداود، کتاب الطلاق، باب کراھیۃ الطلاق، ۲/۳۷۰، حدیث: ۲۱۷۸۔

3   بہارِ شریعت، حصہ   ٨، ۲/۱۱۰۔

4   بہارِ شریعت، حصہ   ٨، ۲/۱۱۰۔



Total Pages: 99

Go To