Book Name:Sirat ul Jinan Jild 9

وَ لَوْ شَآءَ اللّٰهُ لَجَعَلَهُمْ اُمَّةً وَّاحِدَةً وَّ لٰكِنْ یُّدْخِلُ مَنْ یَّشَآءُ فِیْ رَحْمَتِهٖؕ-وَ الظّٰلِمُوْنَ مَا لَهُمْ مِّنْ وَّلِیٍّ وَّ لَا نَصِیْرٍ(۸)

ترجمۂ کنزالایمان: اور اللہ چاہتا تو ان سب کو ایک دین پر کردیتا لیکن اللہ اپنی رحمت میں  لیتا ہے جسے چاہے اور ظالموں  کا نہ کوئی دوست نہ مددگار۔

ترجمۂ کنزُالعِرفان: اوراگر اللہ چاہتا تو ان سب کو ایک امت بنا دیتا لیکن اللہ اپنی رحمت میں  داخل فرماتا ہے جسے چاہتا ہے اور ظالموں  کیلئے نہ کوئی دوست ہے اورنہ مددگار۔

{وَ لَوْ شَآءَ اللّٰهُ لَجَعَلَهُمْ اُمَّةً وَّاحِدَةً: اوراگر اللہ چاہتا تو ان سب کو ایک دین پر کردیتا۔} یعنی اگر اللہ تعالیٰ چاہتا تو تمام لوگوں  کو دنیا میں  ایک ہی گروہ بنا دیتا کہ سب ہدایت یافتہ ہوتے یا سبھی گمراہ ہوتے، لیکن اللہ تعالیٰ جسے چاہتا ہے اپنی جنت میں  داخل فرماتا ہے اور جسے چاہتا ہے (اس کے مستحق ہونے کی وجہ سے) عذاب میں  مبتلا کر دیتا ہے، اسی لئے اللہ تعالیٰ نے یہ نہیں  چاہا کہ سب کو ایک ہی گروہ بنا دے بلکہ انہیں  دو گروہ بنایااور ان دوگروہوں  میں  جوکافروں  کا گروہ ہے اس کا کوئی دوست نہیں  جو ان سے عذاب دور کر سکے اور نہ ان کا کوئی مددگار ہے جو ان سے عذاب روک سکے۔( روح البیان ،  الشوریٰ ،  تحت الآیۃ: ۸ ،  ۸ / ۲۹۰ ،  خازن ،  الشوریٰ ،  تحت الآیۃ: ۸ ،  ۴ / ۹۱ ،  ملتقطاً)

گناہگار مسلمانوں  کے لئے قیامت کے دن مددگار ہوں  گے:

            علامہ احمد صاوی رَحْمَۃُاللہ تَعَالٰی  عَلَیْہِ فرماتے ہیں ’’اس آیت میں  ظالم سے مراد کفارہیں  اور جو لوگ کفر کے علاوہ دیگر گناہوں  میں  مشغول ہو کر اپنی جانوں  پر ظلم کر رہے ہیں  تو ان کے لئے مددگارہوں  گے جو ان سے عذاب دور کریں  گے، کیونکہ حدیث ِپاک میں  ہے،تاجدارِ رسالت صَلَّی اللہ تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے ارشاد فرمایا: ’’میری شفاعت میری امت میں  سے کبیرہ گناہ کرنے والوں  کے لئے ہے۔( صاوی  ،  الشوریٰ  ،  تحت الآیۃ : ۸  ،  ۵ / ۱۸۶۴ ،  ملخصاً ،  ترمذی ،  کتاب صفۃ القیامۃ۔۔۔ الخ ،  ۱۱-باب منہ ،  ۴ / ۱۹۸ ،  الحدیث: ۲۴۴۳)

اَمِ اتَّخَذُوْا مِنْ دُوْنِهٖۤ اَوْلِیَآءَۚ-فَاللّٰهُ هُوَ الْوَلِیُّ وَ هُوَ یُحْیِ الْمَوْتٰى ٘-وَ هُوَ عَلٰى كُلِّ شَیْءٍ قَدِیْرٌ۠(۹)

ترجمۂ کنزالایمان: کیا اللہ کے سوا اور والی ٹھہرالیے ہیں  تو اللہ ہی والی ہے اور وہ مُردے جِلائے گا اور وہ سب کچھ کرسکتا ہے۔

ترجمۂ کنزُالعِرفان: کیاکافروں  نے اللہ کے سوا مددگار ٹھہرالیے ہیں تو اللہ ہی مددگار ہے اور وہ مُردوں  کو زندہ کرے گااور وہ ہر شے پر قادر ہے۔

{اَمِ اتَّخَذُوْا مِنْ دُوْنِهٖۤ اَوْلِیَآءَ: کیاکافروں  نے اللہ کے سوا مددگار ٹھہرالیے ہیں ۔} یعنی کیا کفار نے اللہ تعالیٰ کو چھوڑ کر بتوں  کو اپنا مددگار بنا لیا ہے حالانکہ اللہ تعالیٰ کے سوا اور کوئی (حقیقی)مددگار نہیں ،اگر انہوں  نے کسی کو اپنا مددگار بنانے کا ارادہ کیا ہے تو اللہ تعالیٰ کے علاوہ اور کوئی ا س بات کا حق دار نہیں  کہ اسے مددگار بنایا جائے کیونکہ وہ مُردوں  کو زندہ کرے گا اور وہ ہر شے پر قادر ہے اور جس کی یہ شان ہے وہی اس بات کا حق دار ہے کہ اسے مددگار بنایا جائے جبکہ یہ بت تو خود عاجز ہیں  اور ان میں  کسی طرح کی کوئی قدرت نہیں  توپھران کی یہ اوقات کہاں  ہے کہ انہیں  مددگار تسلیم کیا جائے۔(مدارک، الشوریٰ، تحت الآیۃ: ۹، ص۱۰۸۲-۱۰۸۳، خازن، الشوریٰ، تحت الآیۃ: ۹، ۴ / ۹۱، تفسیرکبیر، الشوریٰ، تحت الآیۃ: ۹، ۹ / ۵۸۱، ملتقطاً)

وَ مَا اخْتَلَفْتُمْ فِیْهِ مِنْ شَیْءٍ فَحُكْمُهٗۤ اِلَى اللّٰهِؕ-ذٰلِكُمُ اللّٰهُ رَبِّیْ عَلَیْهِ تَوَكَّلْتُ ﳓ وَ اِلَیْهِ اُنِیْبُ(۱۰)

ترجمۂ کنزالایمان:  تم جس بات میں  اختلاف کرو تو اس کا فیصلہ اللہ کے سپرد ہے یہ ہے اللہ میرا رب میں  نے اس پر بھروسہ کیا اور میں  اس کی طرف رجوع لاتا ہوں ۔

ترجمۂ کنزُالعِرفان: (اور اے لوگو!)تم جس بات میں اختلاف کرو تو اس کا فیصلہ اللہ کے سپرد ہے ۔یہ اللہ میرا رب ہے ،میں  نے اسی پر بھروسہ کیا اور میں  اسی کی طرف رجوع کرتاہوں  ۔

{وَ مَا اخْتَلَفْتُمْ فِیْهِ مِنْ شَیْءٍ فَحُكْمُهٗۤ اِلَى اللّٰهِ: تم جس بات میں اختلاف کرو تو اس کا فیصلہ اللہ کے سپرد ہے۔} اللہ تعالیٰ نے جس طرح نبیٔ  اکرم صَلَّی اللہ تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کو اس بات سے منع فرمایا کہ وہ کفار کو ایمان قبول کرنے پر مجبور نہ کریں  اسی طرح ایمان والوں  کو کفار کے ساتھ اختلافات میں  پڑنے سے منع فرمایا ،چنانچہ ارشاد فرمایا کہ اے لوگو! تم دین کی باتوں  میں  سے جس بات میں  کفار کے ساتھ اختلاف کرو تو ان سے یہ کہہ دو کہ اس کا فیصلہ اللہ تعالیٰ کے سپرد ہے ،وہ قیامت کے دن تمہارے درمیان فیصلہ فرمائے گا ۔اور اپنے حبیب صَلَّی اللہ تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ سے ارشاد فرمایا کہ اے حبیب! صَلَّی اللہ تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ، آپ ان مشرکین سے فرما دیں  کہ ’’یہ اللہ عَزَّوَجَلَّ میرا رب ہے جو اختلاف کرنے والوں  کے درمیان فیصلہ فرمائے گا ،میں  نے اپنے تمام اُمور میں  اسی پر بھروسہ کیا اور میں  ہر کام میں  اسی کی طرف رجوع کرتاہوں۔(تفسیرکبیر  ،  الشوریٰ  ،  تحت الآیۃ : ۱۰  ،  ۹ / ۵۸۱ ،  خازن ،  الشوریٰ ،  تحت الآیۃ: ۱۰ ،  ۴ / ۹۱ ،  تفسیرطبری ،  الشوریٰ ،  تحت الآیۃ: ۱۰ ،  ۲۱ / ۵۰۶ ،  ملتقطاً)

فَاطِرُ السَّمٰوٰتِ وَ الْاَرْضِؕ-جَعَلَ لَكُمْ مِّنْ اَنْفُسِكُمْ اَزْوَاجًا وَّ مِنَ الْاَنْعَامِ اَزْوَاجًاۚ-یَذْرَؤُكُمْ فِیْهِؕ-لَیْسَ كَمِثْلِهٖ شَیْءٌۚ-وَ هُوَ السَّمِیْعُ الْبَصِیْرُ(۱۱)

ترجمۂ کنزالایمان: آسمانوں  اور زمین کا بنانے والاتمہارے لیے تمہیں  میں  سے جوڑے بنائے اور نر و مادہ چوپائے اس سے تمہاری نسل پھیلاتا ہے اس جیسا کوئی نہیں  اور وہی سنتا دیکھتا ہے۔

ترجمۂ کنزُالعِرفان: وہ آسمانوں  اور زمین کا بنانے والاہے، اس نے تمہارے لیے تم میں  سے جوڑے بنائے اور چوپایوں  سے جوڑے بنائے۔ اس (جوڑے)سے تمہاری نسل پھیلاتا ہے، اس جیسا کوئی نہیں  اور وہی سننے والا،دیکھنے والا ہے۔

{فَاطِرُ السَّمٰوٰتِ وَ الْاَرْضِ: وہ آسمانوں  اور زمین کا بنانے والاہے۔} یعنی اللہ تعالیٰ زمین و آسمان اور ان کے درمیان موجود تمام چیزوں  کو بنانے والاہے اور اس نے اپنے فضل سے تم پر احسان کرتے ہوئے تمہارے لیے تمہاری جنس میں  سے جوڑے بنائے اور چوپایوں  سے بھی نر و مادہ کے جوڑے بنائے۔ ان جوڑوں سے وہ تمہاری نسل پھیلاتا ہے اور ان جوڑوں  کو پیدا کرنے والے خالق جیسا کوئی نہیں  کیونکہ وہ یکتا اور بے نیازہے اور وہی سننے والا،دیکھنے والا ہے۔( ابن کثیر ،  الشوریٰ ،  تحت الآیۃ: ۱۱ ،  ۷ / ۱۷۷-۱۷۸)

لَهٗ مَقَالِیْدُ السَّمٰوٰتِ وَ الْاَرْضِۚ-یَبْسُطُ الرِّزْقَ لِمَنْ یَّشَآءُ وَ یَقْدِرُؕ-اِنَّهٗ بِكُلِّ شَیْءٍ عَلِیْمٌ(۱۲)

ترجمۂ کنزالایمان:  اُسی کے لیے ہیں  آسمانوں  اور زمین کی کنجیاں  روزی وسیع کرتا ہے جس کے لیے چاہے اور تنگ فرماتا ہے بے شک وہ سب کچھ جانتا ہے۔

ترجمۂ کنزُالعِرفان: آسمانوں  اور زمین کی کنجیاں اسی کی مِلک ہیں ، وہ جس کے لیے چاہتا ہے روزی وسیع کرتا ہے اور تنگ فرماتا ہے۔بیشک وہ سب کچھ خوب جاننے والاہے۔

{لَهٗ مَقَالِیْدُ السَّمٰوٰتِ وَ الْاَرْضِ: آسمانوں  اور زمین کی کنجیاں اسی کے لیے ہیں ۔} اس آیت کا خلاصہ یہ ہے کہ آسمان وزمین کے تمام خزانوں  کی کنجیاں  خواہ وہ بارش کے خزانے ہوں  یا



Total Pages: 250

Go To