We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Yateem kisay kehtay hain?

قلعہ کی دیواریں نہ بچا سکیں۔بزرگانِ دِین(رَحِمَہُمُ اللّٰہُ  الْمُبِیْن) فرماتے ہیں کہ حرم کے کبوتر اسی کبوتری کی نسل ہیں جس نے وہاں انڈے دیئے تھے ان کا اب تک احترام ہے۔(1)امام بوصیری عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللّٰہِ الْقَوِی فرماتے ہیں:

ظَنُّوا الْحَمَامَ وَظَنُّوا الْعَنْکَبُوْتَ عَلٰی

                                                خَیْرِ الْبَرِیَّةِ لَمْ تَنْسُجْ وَلَمْ تَحُمٖ                                         (قصیدۂ بردہ )

یعنی مشرکین نے کبوتری اور مکڑی کے بارے میں گمان کیا کہ یہ خیرُالْبَرِیّہ، سَیِّدُ الْوریٰ، جنابِ محمدِمُصطَفٰے صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم پر(ان کی حفاظت کے لیے)جالا تَنْنے والی اور انڈے دینے  والی نہیں ہیں ۔   

کبُوترکے پاؤں سُرخ ہونے کا واقعہ

سُوال:کہتے ہیں کہ امامِ عالی مقام حضرتِ سیِّدُنا امامِ حُسینرَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی شہادت کے بعد کبوتر نے اپنے پاؤں خونِ امام سے تَرکیے اور کربلائے مُعلّٰی سے پرواز کرتا ہوا مدینۂ منوّرہ زَادَہَا اللّٰہُ شَرَفًا وَّ تَعْظِیْماً میں سرکارِ مدینہصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم کی بارگاہ میں فریاد کے لیے حاضِر ہوا اُس وقت سے کبوتر کے پاؤں سُرخ ہو گئے۔ یہ بات کہاں تک دُرُست ہے؟

جواب:امامِ عالی مقام حضرتِ سیِّدُنا امامِ حُسینرَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ  کی شہادت کے بعد کبوتر کا

مـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــدینـــہ

1…… مرآۃ المناجیح ،۸/۲۵۵


 

 



Total Pages: 28

Go To