Book Name:Bunyadi Aqaid Aur Mamolat e Ahlesunnat

۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا رنگ گورا، جلد نازک ، چہرہ حسین، سینہ چوڑا اور داڑھی بڑی تھی ۔آپ یکم محرم 24ھ کو خلیفہ بنائے  گئے  ۔([1])

سوال : حضرت عثمان رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ غنی کیوں مشہورہوئے  ؟

جواب : آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ بہت مالدار تھے  اور ہمیشہ اپنا مال خدمتِ اسلام میں خرچ کرتے  رہتے  تھے ۔

سوال :  حضرت عثمان رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کو ذُوالنّورَین کیوں کہاجاتاہے ؟

جواب : حضورِ اقدس صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کی شہزادیاں حضرت رُقیّہ و حضرت اُمِّ کلثوم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا یکے  بعد دیگرے  آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  نکاح میں آئیں اسی وجہ سے  آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کو ذُوالنّورَین یعنی دو نوروں والاکہتے  ہیں۔

سوال : حضرت عثمان غنی رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی وفات کیسے  ہوئی؟

جواب : آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ قریب بارہ سال کے  خلافت فرما کر مدینۂ طیبہ میں بیاسی سال کی عمر میں 18ذو الحجہ 35ھ میں سبائی باغیوں کے  ہاتھوں شہید ہوئے  جو عبداللّٰہبن سبا یہودی منافق کے   پیر وکار تھے ۔

    سوال : نوعمروں میں سے  سب سے  پہلے  کس نے  اسلام قبول کیا؟

جواب : نو عمروں میں حضرت سیّدنا علیُّ المرتضیٰ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ سب سے  پہلے  اسلام لائے  ۔اسلام لانے  کے  وقت آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی عمر شریف پندرہ یا سولہ سال یا اس سے  کچھ کم و زیادہ تھی۔

سوال :  مسلمانوں کے  چوتھے  خلیفہ کون ہیں ، ان کے  بارے  میں کچھ بتائیے ؟

جواب : خلیفۂ چہارم امیرُ المؤمنین حضرت علی بن ابی طالب رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ ہیں ۔آپ کا اسم مبارک علی اور کنیت ابو الحسن اور ابو تراب ہے  ۔آپ کا رنگ گندمی، آنکھیں بڑی، قد مبارک غیر طویل، داڑھی چوڑی اور سفید تھی ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ ، حضرت عثمان رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی وفات کے  دن خلیفہ بنائے  گئے ۔([2])

سوال : حضرت علی کَرَّمَ اللّٰہُ تَعَالٰی وَجْہَہُ الْکَرِیْم کا لقب کیا ہے ؟

جواب : اسدُاللّٰہ یعنی اللّٰہ کا شیر۔

سوال : حضرت علیُّ المرتضیٰ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم سے  کیا رشتہ ہے ؟

جواب : حضور نبی کریم صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کی صاحبزادی خاتونِ جنت حضرت فاطمۃُ الزّہراء رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہَا آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی زوجۂ محترمہ تھیں۔

سوال : حضرت سیّدنا علی مشکل کشا رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی وفات کب ہوئی؟

جواب : آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ 21رمضان  40ھ کو چار سال نو مہینے  اورچند روز خلافت فرما کر تریسٹھ سال کی عمر میں ایک خارجی عبد الرحمٰن ابن ملجم کے  ہاتھوں کوفہ میں شہید ہوئے  ۔

٭۔۔۔٭۔۔۔٭۔۔۔٭۔۔۔٭۔۔۔٭

عشرۂ مبشرہ

سوال : عشرۂ مبشرہ کسے  کہتے  ہیں؟

جواب : حضور عَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کے  وہ دس اصحاب جن کے  جنّتی ہونے  کی دنیا میں خبر دے  دی گئی انہیں’’عشرۂ مبشرہ‘‘کہتے  ہیں۔

سوال : یہ دس صحابۂ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان کون ہیں؟

جواب : ان میں چار تو یہی خلفاءِ راشدین رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ یعنی حضرت صدیق اکبر، حضرت فاروقِ اعظم ، حضرت عثمانِ غنی، حضرت علیُّ المرتضیٰ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ ہیں ان کے  علاوہ باقی حضرات کے  اسماءِ گرامی یہ ہیں : حضرت طلحہ ، حضرت زبیر، حضرت عبد الرحمٰن بن عوف، حضرت سعد بن ابی وقاص، حضرت سعید بن زید ، حضرت ابو عبیدہ بن جراح رِضْوَانُ اللّٰہِ تَعَالٰی عَلَیْھِمْ اَجْمَعِیْنَ۔

سوال : کیا عشرۂ مبشرہ  رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ کے  علاوہ بھی کسی کو جنّت کی بشارت دی گئی ہے ؟

جواب : جی ہاں!احادیثِ مبارکہ میں بعض اور صحابۂ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان کو بھی جنّت کی بشارت دی گئی ہے  چنانچہ خاتونِ جنت حضرت فاطمہ زہرا رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہَا کے  حق میں وارد



[1]     کتاب العقائد، ص۴۴

[2]    کتاب العقائد، ص۴۵



Total Pages: 50

Go To