Book Name:Bunyadi Aqaid Aur Mamolat e Ahlesunnat

جواب : آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا اسم مبارک عبداللّٰہبن ابی قحافہ ہے  ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا رنگ گورا، جسم دبلا پتلا، رُخسار رستے  ہوئے ، آنکھیں حلقہ دار، پیشانی اُبھری ہوئی تھی ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  والدین، بیٹے  اور پوتے  سب صحابی رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ ہیں اور یہ فضیلت صحابۂ کرام رِضْوَانُ اللّٰہِ تَعَالٰی عَلَیْھِمْ اَجْمَعِیْنَ میں کسی کو حاصل نہیں۔عامُ الفیل کے  دو برس چار ماہ بعد مکۂ مکرمہ میں آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی ولادت ہوئی ۔اپنی عمر شریف میں حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کی جدائی کبھی گوارا نہ کی ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  بہت فضائل ہیں احادیث میں بہت تعریفیں آئی ہیں ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا لقب صدیق و عتیق ہے  حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم نے  فرمایا کہ انبیاء و مُرسَلین عَـلَـيْهِمُ الصَّلٰوۃُ  وَ السَّلَام کے  سوا کسی شخص نے  حضرت ابو بکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  برابر فضل و شرف نہیں پایا۔([1])22 جمادی الآخر  13ھ شب سہ شنبہ (منگل)مدینۂ منورہ مغرب و عشاء کے  درمیان تریسٹھ سال کی عمر میں آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا وصال ہوا ۔حضرت عمر بن خطّاب رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ نے  نمازِ جنازہ پڑھائی ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی خلافت2سال 4 ماہ رہی۔([2])   

سوال : حضرت ابوبکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کو یارِ غار کیوں کہاجاتاہے ؟

جواب : جب آقا صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم نے  مکۂ مکرمہ سے  مدینۂ منورہ ہجرت فرمائی تو راستے  میں غارِ ثور میں تین دن تک آقا صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کے  ساتھ قیام فرمایا اور اسی نسبت سے  ’’یار ِ غار‘‘کہلائے ۔

سوال : حضرت ابوبکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم سے  کیا رشتہ ہے ؟

جواب : حضرت ابوبکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ ، حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کی زوجۂ مطہرہ امُّ المؤمنین حضرت عائشہ صدیقہ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہَا کے  والدہیں ۔([3])

سوال : خلفائے  راشدین رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمْ میں سے  دوسرے  خلیفہ کون ہیں ، ان کے  بارے  میں کچھ بتائیے ؟

جواب : حضرت ابوبکرصدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  بعد دوسرے  خلیفہ حضرت عمر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا مرتبہ ہے  اور وہ باقی سب سے  افضل ہیں ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا نامِ نامی عمر بن خطّاب، لقب فاروق، کنیت ابو حفص ہے  ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ نبوّت کے  چھٹے  سال چالیس مردوں اور گیارہ عورتوں کے  بعد ایمان لائے  اور آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  اسلام لانے  کے  دن سے  اسلام کا غلبہ شروع ہوا۔سب سے  پہلے  آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ ہی کا لقب امیرُالمومنین ہوا ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا رنگ سفید سُرخی مائل، درازقد، چشم مبارک سُرخ تھیں ۔آپرَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  عہدِ خلافت میں بہت فتوحات ہوئیں ۔([4])

سوال : کیا حضرت عمر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی کوئی کرامات بھی مشہور ہیں؟

جواب : جی ہاں!آپ کی بہت سی کرامات مشہور ہیں جیسے  آپ کا ہزاروں میل دور موجود اسلامی فوج کے  سپہ سالار حضرت ساریہ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کو آواز دینااور ان کا سن لینا، دریائے  نیل کا آپ کے  خط ڈالنے  سے  جاری ہوجانا وغیرہ۔

سوال : حضرت عمر رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم سے  کیا رشتہ ہے ؟

جواب : آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی صاحبزادی حضرت حفصہ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہَا حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کی زوجۂ محترمہ تھیں۔

سوال : حضرت سیدنا عمرفاروق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی کب اور کیسے  شہادت ہوئی؟

جواب : آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ مدینۂ طیبہ میں آخر ذی الحجہ  23ھ میں ساڑھے  دس سال خلافت کر کے  تریسٹھ سال کی عمرمیں ایک مجوسی غلام ابو لؤلؤ فیروز کے  ہاتھوں شہید ہوئے ۔([5])

سوال : کون سے  دوصحابۂ کرام رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا کے  مزارات حضور صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کے  مزار مبارک کے  برابر میں سنہری جالیوں کے  اندر ہیں ؟

جواب : حضرت سیّدنا ابوبکر صدیق اور حضرت سیّدناعمرفاروق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا کے  ۔اورقیامت کے  قریب حضرت عیسیٰ عَلَيْهِ الصَّلٰوۃُ  وَ السَّلاَمتشریف لائیں گے  اور بعدِ وفات اسی روضۂ انور میں مدفون ہوں گے ۔

    سوال : حضرت سیّدناعمرفاروق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  بعد خلیفہ کون ہیں ، ان کے  کچھ حالات بیان کیجئے ؟

جواب : حضرت سیّدناعمرفاروق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  بعد خلیفۂ سوم حضرت عثمان بن عفان رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا مرتبہ ہے  ۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کا اسم مبارک عثمان بن عفان ہے 



[1]    فردوس الاخبار، ۲/ ۳۲۸، حدیث : ۶۵۸۱، مفہوماً

[2]    کتاب العقائد، ص۴۳   

[3]     ابو بکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  فضائل اور دیگر معلومات حاصل کرنے  کے  لئے  کتاب ’’فیضانِ صدیقِ اکبر‘‘ (مطبوعہ مکتبۃ المدینہ) کا مطالعہ فرمائیں۔

[4]     کتاب العقائد، ص۴۴

[5]     فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے  فضائل اور دیگر معلومات حاصل کرنے  کے  لئے  کتاب ’’فیضانِ فاروقِ اعظم‘‘ (مطبوعہ مکتبۃ المدینہ) کا مطالعہ فرمائیں۔



Total Pages: 50

Go To