Book Name:Doodh Pita Madani Munna

{۳۷} دودھ میں ادرک کے چند ٹکڑے یا ادرک پوڈر اور تھوڑی کشمش ملا کر اُبال کر پینے سے اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ وَجَلَّ گیس نہیں ہوگی۔

{۳۸} دَمے  (Asthma کے مریض اور بلغمی مزاج   (People having phlegmوالوں کو چاہیے کہ وہ دودھ  میں ’’اِلائچی ‘‘ یا’’چھوہارے‘‘  (Dry datesیا شہد ملا کر پئیں ۔

{۳۹}بھینس   (Buffaloکا دودھ بھاری ہوتا ہے،  عموماً بھینس کے دودھ کا مکھن اور گھی بنایا جاتا ہے،   یہ بلغم بناتا ،   کولیسٹرول  (Cholesterol بڑھاتا اور موٹاپا لاتا ہے،  ہاں جوہَضم کر سکے اُس کیلئے بھینس کا دودھ سب سے زیادہ طاقت ور مانا جاتا ہے۔  

{۴۰}گائے   (Cowکا دودھ بھینس کے دودھ سے ہلکا   (Light)   ہے،  یہ جلدہضم ہو جاتاہے۔

{۴۱}گائے کا دودھ سرطان   (Cancerسے بھی بچاتا ہے۔

{۴۲}بکری کا دودھ سب سے بہتر مانا جاتا ہے۔  اس سے جسم کوطاقت ملتی ،  ہاضمہ دُرُست ہوتااور بھوک بڑھتی ہے۔  

{۴۳}بھیڑ  (Sheep کا دودھ مِزاجاً گر م ہوتا ہے ۔ یہ قبض کرتا اور گیس بناتا ہے،  اس کا ذائقہ  (Taste)   نمکین سا ہوتا ہے۔  بال لمبے کرتا ہے،   موٹاپے میں کمی لاتا ہے مگر آنکھوں کو نقصان پہنچاتا ہے،  بعض اوقات منہ میں اس سے دانے نکل آتے ہیں۔  بچوں کو یہ دودھ نہیں دینا چاہیے۔

خالص دودھ کی پہچان کے چار مدنی پھول

{۴۴}یہ ممکن ہے کہ دودھ خالص توہو مگر گاڑھا  (Thick نہ ہو۔

{۴۵} ڈراپر وغیر ہ کے ذریعے دودھ کا ایک قطرہ ماربل وغیرہ کے ستون یاایسی ہی ہموار   (Plain)   دیوارسے نیچے کی طرف ٹپکایئے  اگر دودھ خالص ہوا تو قطرہ فوری طور پر نہیں بہے گا۔

{۴۶}خالص دودھ کی بالائی  (یعنی مَلائی)   موٹی ہوتی ہے۔

{۴۷} انگلی دودھ میں ڈبوکر نکالئے اگر انگلی پر دودھ لگا رہے تو یہ خالص ہے ورنہ پانی ملا ہوا ہے ۔  دودھ پہچاننے کے ماہر زیادہ تر دودھ کو ہاتھ میںلے کر اس کا گاڑھا پن اور چکناہٹ دیکھ کر اس کے خالص ہونے یا نہ ہونے کا بتادیتے ہیں۔    



Total Pages: 15

Go To