Book Name:Maflooj ki Shifa Yabi ka Raaz

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ علٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

درودشریف کی فضیلت

          شیخِ طریقت، امیرِاہلسنّت، بانیِ دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمدالیاس عطّار قادری رضوی ضیائی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ العَالِیَہ اپنی کتاب  ’’ پردے کے بارے میں سوال جواب ‘‘  صفحہ 1 پر ترمذی شریف کے حوالے سے ایک حدیثِ پاک نقل فرماتے ہیں :  حضرتِ سیِّدُنا اُبَی بن کَعب رَضِی اللہ تَعالٰی عَنْہ نے خَاتَمُ الْمُرْسَلین، رَحْمَۃٌ لِّلْعٰلمین، شَفِیعُ الْمُذنِبین، اَنِیسُ الْغَرِیبِین، سِراجُ السّالکین، مَحبوبِ ربُّ الْعٰلمِین، جنابِ صادِق و اَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلہٖ و سلَّم کی بارگا ہِ بے کس پناہ میں حاضر ہو کر عرض کی کہ میں اپنا سارا وقت دُرُود خوانی میں صَرف کروں گا۔ تو سرکارِ مدینہ صَلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ و سلَّم نے فرمایا : ـ ’’ یہ تمہاری فِکروں کودُور کرنے کے لئے کافی ہوگا اور تمہارے گناہ مُعاف کر دئیے جائیں گے۔ (ترمذی ۴ / ۲۰۷، حدیث: ۲۴۶۵)

صلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب! صلَّی اللہ تعالٰی علٰی محمَّد

 {1} مفلوج کی شفایابی کا راز

          بابُ المدینہ (کراچی) کے علاقے کورنگی کے مقیم اسلامی بھائی مدنی قافلے سے حاصل ہونے والی برکات کا تذکرہ کچھ اس طرح کرتے ہیں کہ ایک مرتبہ دعوتِ اسلامی کے مشکبار مدنی ماحول سے وابستہ عاشقانِ رسول کے ہمراہ مدنی قافلے میں شرکت کی سعادت نصیب ہوئی۔ مدنی قافلے کے شرکاء میں ایک فالج زدہ اسلامی بھائی بھی تھے۔ فالج کی وجہ سے ان کاایک ہاتھ بالکل حرکت نہیں کرتا تھا اور چلنے پھرنے میں بھی انہیں کافی دشواری کا سامنا تھا مگر اس تکلیف کے باوجود بھی ان کے جذبات قابلِ تحسین تھے کہ وہ بڑی ہمّت اور صبرکا مظاہرہ کرتے ہوئے راہِ خدا کے مسافروں کی رفاقت میں مدنی قافلے کی برکتیں سمیٹ رہے تھے۔ ہمارا مدنی قافلہ نیکی کی دعوت کی دھومیں مچاتے ہوئے باب الاسلام سندھ کے علاقے جنگ شاہی  (ضلع ٹھٹھہ)  کی ایک مسجد میں پہنچا، جہاں مدنی قافلے کے عاشقانِ رسول نے اپنا زادراہ مسجد کے ایک کونے میں رکھ دیا اور وضو وغیرہ سے فارغ ہوکر تحیّۃ المسجد کے نوافل ادا کئے اور تمام اسلامی بھائی حلقے کی صورت میں بیٹھ گئے۔ تلاوتِ قراٰنِ پاک سے مدنی حلقے کا آغاز ہوا ، ایک اسلامی بھائی نے نعتِ رسولِ مقبول پڑھنے کی سعادت حاصل کی پھر امیرقافِلہ نے جَدْوَل کی تفصیلات بتائے ہوئے باہم مشورے سے ذمہ داریاں تقسیم کیں ۔ امیرِقافلہ نے مسجد کی صفائی اور سامان کی دیکھ بھال کی ذمہ داری اس مفلوج  (فالج زدہ)  اسلامی بھائی کو دے دی کہ کیا بعید مسجد کی خدمت کی برکت سے ان کی محتاجی دور ہوجائےچنانچہ ان اسلامی بھائی نے بھی بخوشی اس ذمہ داری کو قبول کر لیا اور تینوں دن نہایت جوش و جذبہ کے ساتھ مسجد کی صفائی وغیرہ اور اسلامی بھائیوں کے سامان کی حفاظت بھی کرتے رہے۔ اس دوران ان اسلامی بھائی کی صحت یابی کے لئے خصوصی دعائوں کا سلسلہ بھی رہا جن کی برکتوں کا ظہور کچھ یوں ہوا کہ جب ہمارا مدنی قافلہ واپسی آرہا تھا تو سڑک عبور کرتے ہوئے ہم نے جب ان مفلوج اسلامی بھائی کو دیکھا تو ہماری آنکھیں حیرت سے کھلی کی کھلی رہ گئیں کہ انہوں نے دیگر عاشقانِ رسول کے ہمراہ تیز تیز قدم چلتے ہوئے بڑی پھرتی کے ساتھ سڑک عبور کی، ایسا لگا کہ انہیں کبھی کوئی معذوری ہی نہیں تھی۔ یہ مدنی بہار دیکھ کر تمام اسلامی بھائیوں کے چہرے خوشی سے کھِل اٹھے اور جب ان سے اس کا راز دریافت کیا گیا تو مدنی قافلے کی برکتیں بیان کرتے ہوئے کہنے لگے  ’’ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ دعوتِ اسلامی کے مدنی قافلے میں سفر اور عاشقانِ رسول کی صحبت میں مانگی جانے والی دعاؤں کی برکت سے میرا فالج زدہ حصہ ٹھیک ہو چکا ہے ‘‘ ۔

 



Total Pages: 11

Go To