Book Name:Aarabi kay Sawalat aur Arabi Aaqa kay jawabat

(۱۴شکوہ وشکایت مت کرو

        اَعرابی کا چودھواں  سوال یہ تھا کہ معزز یعنی زیادہ عزت والا بننا چاہتا ہوں  ۔ 

 خاتَمُ الْمُرْسَلین، رَحمَۃٌ لِّلْعٰلمین   صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے ارشاد فرمایا : لوگوں  کے سامنے  اللّٰہ   عَزَّوَجَلَّ     کے بارے میں  شکوہ وشکایت مت کرو، سب سے زیادہ عزت دار بن جا ؤگے۔

مخلوق کے سامنے شکایت نہ کرو

        حضرتِ سیِّدُنا وَہب بن مُنبہ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ   فرماتے ہیں  :  اللّٰہ   عَزَّوَجَلَّ     نے حضرتِ سیِّدُنا عُزیر عَلٰی نَبِیِّناوَعَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلام کی طرف وحی فرما ئی  کہ جب بھی کو ئی  مصیبت نازِل ہو تومخلوق سے اس کی شکایت کرنے سے بچو اورمیرے ساتھ اسی طرح معاملہ کرو جس طرح میں کرتا ہوں کہ جب مجھ تک تیرے خلافِ اَولی اعمال پہنچتے ہیں  تومیں  فرشتو ں  کے سامنے ظاہر نہیں  کرتا اسی طرح جب تجھ پر مصیبت نازل ہوتو میری مخلوق سے میر ی شکایت نہ کر۔(تنبیہ المغترین، ص۱۷۳)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !              صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

اعلیٰ حضرت، امامِ اہلِسنّت، مجدِّدِ دین وملّت ، مولانا شاہ امام احمد رضاخان  عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰنمختلف اوقات میں  مختلف قسم کی جسمانی بیماریوں  میں  مبتلا رہے لیکن کسی طرح کا شکوہ وشکایت منقول نہیں  بلکہ آپ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  نے آزما ئشوں  میں  بھی صبرکا دامن تھامااور شدیدتکلیف میں  بھی  اللّٰہ   عَزَّوَجَلَّ      کا شکر ادا کیا، چنانچہ

حکایت:32

شکایت کیسی؟

        صَدرُ الشَّریعہ، بدرُ الطَّریقہحضرتِ  علّامہ مولانامفتی محمد امجد علی اعظمی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ القَوِی کا بیان ہے :  ایک مرتبہ اعلیٰ حضرت( رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  ) علیل تھے ، میں  عیادت کو گیا ، حسبِ محاورہ پوچھا : حضور! اب شکایت کا کیا حال ہے ؟ فرمایا :  شکایت کس سے ہو ؟اللّٰہ سے نہ تو شکایت پہلے تھی نہ اب ہے ، بند ہ کو خدا سے کیسی شکایت!(صَدرُ الشَّریعہ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  فرماتے ہیں  : ) میں  نے زندگی بھر کے  لئے اس محاورے سے توبہ کر لی ۔(فتاویٰ امجدیہ ، ۲/ ۳۸۸)

بخار کی شکایت، درد کی شکایت؟

    اعلیٰ حضرت، امامِ اہلِسنّت، مجدِّدِ دین وملّت ، مولانا شاہ امام احمد رضاخان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن فرماتے ہیں  : عوام و خواص کے یہ بھی زبان زدہے کہ بخار کی شکایت ہے ، دردِ سر کی شکایت ہے، زکام کی شکایت ہے ، وغیرہ وغیرہ ۔ یہ نہ (کہنا )چاہیے، اس لیے کہ جملہ اَمراض کا ظہور مِنْجانِبِ اللّٰہہوتا ہے تو شکایت کیسی !(حیاتِ اعلیٰ حضرت ، ۳ / ۹۴)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                  صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

شکوہ عبادت کی لذت کو ختم کردیتا ہے

        مشہور بزرگ حضرتِ سیِّدُنا شَقِیق بَلْخِی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ القَوِی فرماتے ہیں  :  جس نے اپنی مصیبت کاکسی سے شکوہ کیا اسے کبھی عبادت کی لذت نصیب نہیں  ہوگی ۔

   (منہاج القاصدین، کتاب الصبر والشکر، ص۱۰۵۶)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد   

حکایت:33

ایک لاکھ دینار اور محتاجی کا شکوہ

        منقول ہے کہ ایک بزرگ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  بہت زیادہ محتاج ہو گئےاور پریشان حالی نے اُن کے گھر میں  بسیرا کرلیا ۔ ایک رات وہ سو ئے  تو خواب میں  کسی نے کہا :  کیا تم یہ چاہتے ہو کہ تمہیں  ’’سورۂ ھُود‘‘ بھول جا ئے  اور تمہیں  ہزار دینار مل جا  ئیں ؟ بولے :  نہیں  ۔ کہا : اور اگر سورۂ یُوسُف ؟ بولے :  نہیں  ۔ (یونہی 100 سورتوں  کے بارے میں  سوالات ک ئے  اور سب کے جواب میں  انہوں  نے ’’نہیں ‘‘ بولا) ۔ کہا :  تمہارے پاس تو ایک لاکھ دینار کا مال ہے پھر بھی تم محتاجی کا شکوہ کر تے ہو ؟ جب صبح ہو ئی  تو اس خواب کی وجہ سے ان کا غم دور ہو چکا تھا ۔

 (منہاج القاصدین، کتاب الصبر والشکر، ص۱۱۲۲)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !         صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

حکایت:34

بخار کا تذکرہ زبان پر نہیں  لا ئے

        حَنْبَلِیُوں  کے عظیم پیشوا حضرتِ سیِّدُنا اِمام اَحمد بن حنبل رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ  سے کسی نے پوچھا :  اے ابو عبدُ اللّٰہ ! آپ کیسے ہیں  ؟ فرمایا :  خیر و عافیت سے ہوں  ۔ کہنے لگا :  سنا ہے کل رات آپ کو بخار تھا ؟ فرمایا :  جب تمہیں  کہہ چکا ہوں  کہ خیر و عافیت سے ہوں  تو کافی ہے ، جو بات کہنا نہیں  چاہتا وہ مت پوچھو ۔  (منہاج القاصدین، کتاب الصبر والشکر، ص۱۰۵۶)

             صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !        صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد   

(۱۵رزق میں  فراخی

        اَعرابی کا پندرھواں  سوال یہ تھا کہ رِزْق میں  کشادگی چاہتا ہوں ۔حضورِ پاک، صاحبِ لَولاک، سیّاحِ افلاک  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا : ہمیشہ باوضو رہو، تمہارے رِزْق میں  فراخی آ ئے  گی ۔

شہادت کی فضیلت پانے کا نسخہ

 



Total Pages: 32

Go To