Book Name:Sarkar ka Andaz e Tableegh e Deen

ارشاد: سرکارِ عالی وقار، مدینے کے تاجدار صَلَّی اللّٰہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّمکے اَخلاقِ کریمہ کے کیا کہنے کہ خودخالق ومالک عَزَّ وَجَلَّ اپنے پیارے محبوب صَلَّی اللّٰہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے اخلاقِ کریمہ کےبارے میں پارہ 29 سُورۂ قلم کی آیت نمبر4 میں ارشاد فرماتا ہے :

وَ اِنَّکَ لَعَلٰی خُلُقٍ عَظِیۡمٍ 0

 

ترجمۂ کنز الایمان:اور بے شک تمہاری خوبو بڑی شان کی ہے۔

حضرتِ سیِّدناسعدبن ہشّام رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ سے روایت ہے کہ میں اُمُّ الْمؤمنین حضرتِ سیِّدَتُنا عائشہ صِدّیقہرضی اللّٰہ تعالٰی عنہا کے پاس آیا اور عرض کی: اے اُمُّ الْمؤمنین(رضی اللّٰہ تعالٰی عنہا)! مجھے رسولِ خداصَلَّی اللّٰہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کے اَخلاق کے بارے میں بتائیے؟ آپ رضی اللّٰہ تعالٰی عنہا نے ارشاد فرمایا: کَانَ خُلُقُہُ الْقُرْآن یعنی آپصَلَّی اللّٰہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا خُلق قرآن تھا،کیا تُو نے اللہ عَزَّ وَجَلَّ کا یہ فرمان نہیں پڑھا: ]وَاِنَّکَ لَعَلٰی خُلُقٍ عَظِیۡمٍ0[(ترجمۂ کنز الایمان:اور بے شک تمہاری خوبو بڑی شان کی ہے۔) ([1])اعلیٰ حضرت،امام اہلسنّت مولانا شاہ امام احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحمَۃُ الرَّحْمٰن اپنے مشہورِ زمانہ نعتیہ دیوان حدائق بخشش میں فرماتے ہیں:

 



[1]…… مُسندِ احمد،ج۹،ص۳۸۰،حدیث ۲۴۶۵۵



Total Pages: 32

Go To