Book Name:Adakari Ka Shoq Kaisay Khatam Hoa?

یہ ہے کہ آیت یا عبارت لکھنے میں ہر دائرے والے حرف کا دائرہ کھلا ہو یعنی اِس طرح مَثلاً ط،  ظ،  ہ،  ھ، ص،  ض،  و، م، ف، ق وغیرہ۔ اِعراب لگانا ضروری نہیں ،  لکھ کر موم جامہ  (یعنی موم میں تر کئے ہوئے کپڑے کا ٹکڑا لپیٹ لیں )  یا پلاسٹک کوٹنگ کر لیں پھر کپڑے،  ریگزین یا چمڑے میں تعویذ بنا لیں اور سر پر باندھ لیں جن کو عِمامہ شریف کا تاج سجانے کی سعادت حاصل ہے وہ چاہیں تو عمامہ شریف کی ٹوپی میں سی لیں ۔ اِسی طرح اسلامی بہنیں دوپٹیّ یابُرقع کے اُس حصّے میں سی لیں جو سر پر رہتا ہے۔ اگر اِعتقاد کامِل ہو گا تو اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّوَجَلَّ دردِ سر جاتا رہے گا۔  (فیضانِ سنّت،  باب ’’فیضانِ بِسم اﷲ‘‘،  ص68)  سر درد اور آدھے سر کے درد کے مزید علاج کے حوالے سے فیضانِ سنّت جلد اول کے صفحہ 68 تا 73 کا مطالعہ بے حد مفید ہے۔

اللہ عَزَّوَجَلَّ کی امیرِاہلسنّت پَر رَحمت ہو اور ان کے صد قے ہماری بے حسا ب مغفِرت ہو

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیْب!                                         صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 {10} نسبت کی برکت

باب المدینہ  (کراچی)  کے علاقہ نیا آباد کی اسلامی بہن کے حلفیہ بیان کا خلاصہ ہے کہ ہماری رقم پھنس گئی تھی جس کی وجہ سے ہم مالی طور پر زبوں حالی کا شکار ہوگئے تھے۔ گھر کے اخراجات پورے کرنا انتہائی مشکل ہو چکا تھا اور پھر وہ دِن بھی آیا کہ ہمارے ہاتھ بالکل خالی ہوگئے اور  کھانے کی بنیادی چیزیں خرید نے سے ہم عاجز آچکے تھے،  بھوک و افلاس کے یہ دن ہمیں دیکھنا پڑرہے تھے۔ پھر جب مصائب حد سے بڑہ گئے اور بار بار کے فاقوں سے ہم نڈھال ہوگئے تو ہم نے ڈوبتے شخص کی طرح آخری سہارا لیا اور اپنا وہ گھر جو ہماری اُنسیت کا محور اور ہمارے سر چھپانے کا ٹھکانہ تھا اُسے بیچ ڈالا اور اس طرح آفتوں اور مصیبتوں نے ہمیں اپنے گھیرے میں لے لیا۔انسان جب آزمائش میں آتا ہے تو اپنے پروردگار عَزَّوَجَلَّ کو پکارتا ہے اور اس سے فریادی ہوتا ہے،  میں نے بھی اللہ عَزَّوَجَلَّ کی بارگاہ میں اس آفت سے نجات کی دعائیں مانگیں ،  ان دعاؤں کی قبولیت کا اثر کچھ اس طرح ظاہر ہوا کہ مجھے وقت کے عظیم ولیِ کامل اور سنّتِ رسول کے زبردست عامل،  شیخِ طریقت،  امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہکا دامن نصیب ہوگیا،  یوں عطاری سلسلے کے ساتھ ساتھ قادری سلسلے کا فیضان بھی جاری ہوگیا۔ میں نے اس مبارک سلسلے کے شجرہ شریف  (جو شجرہ قادریہ رضویہ ضیائیہ عطاریہ کے نام سے موسوم ہے)  میں موجود وظائف پڑھنا شروع کردیے،  خصوصاً اپنی پریشانی سے متعلق اَورَاد وِرْدِ زباں کرلئے۔ گزرتے دنوں کے ساتھ اَ لْحَمْدُلِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ ان اَورَاد اور سلسلۂ عالیہ کی برکات کا ظہور ہونے لگا،  ایک ایک کرکے ہماری ساری پریشانیاں حل ہوتی گئیں اور رشتہ داروں  کی جانب سے بھی امداد کا سلسلہ شروع ہوگیا اور کرم بالائے کرم ہماری ڈوبی ہوئی رقم بھی واپس مل گئی ۔ اللہ والوں سے نسبت اور شجرہ عطاریہ کی برکت نے دعوتِ اسلامی کی حقّانیت ہم پر آشکار کردی،  یوں دعوتِ اسلامی کی محبت و عقیدت ہمارے دلوں میں راسخ ہوگئی۔ میں نے مدَنی ماحول سے وابستہ اسلامی بہنوں سے تعلق جوڑ لیا اور اِنہی کی انفرادی کوشش کی بدولت دعوتِ اسلامی کے تحت چلنے والے مدرسۃُ المدینہ بالغات میں داخلہ لے لیا،  یوں قرآنِ مجید صحیح انداز سےپڑھنے اور احکامِ اسلام سیکھنے کا مجھے موقع مل گیا۔  اللہ عَزَّوَجَلَّ دعوتِ اسلامی اور بانیِ دعوتِ اسلامی پر اپنی رحمتوں کا نزول فرمائے۔اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

اللہ عَزَّوَجَلَّ کی امیرِاہلسنّت پَر رَحمت ہو اور ان کے صد قے ہماری بے حسا ب مغفِرت ہو

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیْب!        صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

 



Total Pages: 12

Go To