Book Name:Rasail e Madani Bahar

ہے اور اچھاوہ کہ موافقِ شرع ہو۔‘‘ (فتاوٰی رضویہ مُخَرَّجَہ ج ۲۸، ص۳۶۶)

        ان بہاروں کی اِفادیت کے پیشِ نظردعوتِ اسلامی کی مجلس اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَہ   مکتبۃ المدینہ کے تعاون سے زیاراتِ امیرِاہلسنّت کی بہاروں کے سلسلے میں رسالہ بنام’’نورانی چہرے والے بزرگ مع دیگر 12 بہاریں ‘‘ پیش کرنے کی سعادت حاصل کررہی ہے۔ ان بہاروں کو خود بھی پڑھئے اور دوسروں کو بھی ترغیب دلائیے۔

        اللّٰہ  تَعَالٰی ہمیں ’’اپنی اور ساری دنیاکے لوگوں کی اِصلاح کی کوشش‘‘ کرنے کے لئے مَدَنی انعامات پرعمل اور مَدَنی قافلوں میں سفرکرتے رہنے کی توفیق عطا فرمائے اور دعوتِ اسلامی کی تمام مجالس بشمول مجلس اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَہ کو دن پچیسویں رات چھبیسویں ترقی عطافرمائے۔

اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم

شعبہ امیرِاَہلِسُنَّت        مجلس اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَہ (دعوتِ اسلامی)

۰۳ذوالحجۃ الحرام ۱۴۳۲ ھ31 اکتوبر  2011 ء

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

دُرُود پاک کی فضیلت

       شیخِ طریقت، امیرِاہلسنّت، بانیٔ دعوت ِاسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمدالیاس عطّار قادری رضوی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہاپنے رسالے ’’خوفناک جادوگر‘‘ میں حدیثِ پاک نقل فرماتے ہیں کہ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کے محبوب، دانائے غُیُوب، مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیُوب صلَّی اللّٰہ  تَعَالٰی علیہ واٰلہٖ وسَلَّم کا فرمانِ حقیقت نشان ہے :  تمہارے دنوں میں سب سے افضل دن جمعہ ہے۔ اسی دن حضرت سیِّدُناآدم صَفِیُّ اللّٰہ عَلٰی نَبِیِّناوَعَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلام پیدا ہوئے، اسی میں ان کی روح قبض کی گئی، اسی دن صور پھونکا جائے گا، اوراسی دن ہلاکت طاری ہوگی لہٰذا اس دن مجھ پردرودِپاک کی کثرت کیا کرو کیونکہ تمہارا درود مجھ تک پہنچایا جاتا ہے۔ صحابۂ کرام عَلَیْہمُ الرِّضْوَان نے عرض کی :  ’’یارسول اللّٰہ صَلَّی اللّٰہ  تَعَالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم! آپ کے وصال کے بعد آپ تک درودِ پاک کس طرح پہنچایا جائے گا؟‘‘ ارشاد فرمایا کہ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  نے انبیائے کرام عَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کے اجسام کو زمین پر حرام فرمایا ہے۔ (سنن ابی داؤدج۱، ص۳۹۱الحدیث۱۰۴۷داراحیاء التراث بیروت)

تو زندہ ہے واللّٰہ تو زندہ ہے واللّٰہ                                                مری چشمِ عالَم سے چھُپ جانے والے   

(1)نورانی چہرے والے بزرگ

        مرادآباد (ہند) میں مقیم اسلامی بھائی کے مکتوب کا لُبِّ لُباب ہے :  تبلیغِ قراٰن وسنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کے مہکے مہکے مشکبار مدنی ماحول سے وابستہ ہونے سے قبل میں ایک رات سویا ہوا تھا، سر کی آنکھیں تو کیا بند ہوئیں دل کی آنکھیں کھل گئیں کیا دیکھتا ہوں کہ میرے سامنے ایک خوبصورت باغ ہے، جس میں سنّت کے مطابق سفید لباس میں ملبوس،  مہندی لگی داڑھی مبارک اور نور برساتے نورانی چہرے والے بزرگ سر پر سبز سبز عمامہ شریف سجائے نماز میں مشغول ہیں ۔ میں انتظار کرنے لگا کہ یہ نماز مکمل کریں تو میں ان سے مصافحہ کرکے ان کے متعلق کچھ معلومات حاصل کروں کہ یہ کون ہیں ؟ لیکن جیسے ہی انہوں نے نماز مکمل کر کے سلام پھیرا میری آنکھ کھل گئی۔ بیداری کے بعد دل میں ایک عجیب سی راحت اور مسرت محسوس ہو رہی تھی مگر بار بار یہ خیال بھی آ رہا تھا کہ آخر یہ بزرگ کون ہوسکتے ہیں ؟ کیونکہ خواب میں نظر آنے والے اس ’’نورانی چہرے والے بزرگ‘‘ کو میں نے پہلے کبھی نہیں دیکھا تھا۔ خواب میں اس بزرگ کی زیارت کرنے کی برکت سے میرا دل دنیوی جھمیلوں سے بیزار ہو کر نیک ماحول کی طرف راغب ہونے لگا۔ مجھے علمِ دین سیکھنے کا شوق ہوا اور نیک محافل میں شرکت کرنا میرا معمول بن گیا۔ اسی شوق میں ایک دن دعوتِ اسلامی کے ہفتہ وار سنّتوں بھرے اجتماع میں علمِ دین سیکھنے کی نیت سے حاضر ہونے کا اتفاق ہوا۔ یوں تو پورا اجتماع ہی پرُبہار تھا لیکن اجتماع کے آخر میں مانگی جانے والی رِقّت انگیز دعا کے دوران شرکا کی آہ و زاری نے تو میرے دل میں مدنی انقلاب برپا کر دیا۔ دعوتِ اسلامی کے مدنی ماحول سے متأثر ہونے میں اس دعا نے اہم کردار ادا کیا۔ اختتامِ اجتماع پر ایک مبلغِ دعوتِ اسلامی نے انفرادی کوشش کرتے ہوئے نہ صرف شیخِ طریقت، امیرِ اہلسنّت، بانیٔ دعوت ِاسلامی حضرت علامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطّار قادری رضوی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکے سنّتوں بھرے بیانات سننے کی ترغیب دلائی بلکہ ہاتھوں ہاتھ امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکے دو بیانات بنام ’’قبر کا امتحان‘‘ اور ’’باحیاپرندہ‘‘ سننے کے لئے بھی دے دیے۔ میں نے پہلی فرصت میں جب انہیں سنا تو قبرو حشر کے ہولناک مناظر میری نگاہوں میں گھومنے لگے میں نے گھبرا کر توبہ کی اور رفتہ رفتہ مدنی ماحول کے قریب سے قریب تر ہوتا گیا۔ انہی دنوں کانپور (ہند) میں دعوتِ اسلامی کا سنّتوں بھرا اجتماع ہوا جس میں امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہبھی تشریف لائے۔ میں نے بھی اجتماع میں شرکت کی سعادت حاصل کی۔ اجتماع گاہ میں جب میں امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکی زیارت سے مشرف ہوا تو میری حیرت کی انتہانہ رہی کہ یہ تووہی ہستی ہیں جن کی کچھ عرصہ قبل مجھے خواب میں زیارت ہوئی تھی اور میرے دل میں مَدَنی انقلاب انہی کی زیارت کی برکت سے وقوع پذیر ہوا تھا۔ آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہہی کے فیض کی برکتوں سے اَلْحَمْدُلِلّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  تادمِ تحریر حلقہ ذمہ دارکی حیثیت سے دعوتِ اسلامی کے مدنی کاموں کی دھومیں مچا رہا ہوں ۔

 اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کی امیرِاہلسنّت پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو۔

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیب!         صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

(2)ہیپاٹائٹس کے مرض سے نجات

 



Total Pages: 81

Go To