Book Name:Faizan e Farooq e Azam jild 1

Description: D:miladf.faruq e aazam part 1,2farooq e azam jild 1image3.PNG

اَوصاف فاروقِ اعظم

میٹھےمیٹھےاسلامی بھائیو!امیر المؤمنین حضرت سیِّدُنا عمر فاروقِ اعظمرَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ کی ذات مبارکہ میں   سب سے عظیم  ،  ظاہری وباطنی وصف  ’’ عشقِ رسول ‘‘   تھا اور اسی پر آپ کی پوری حیات طیبہ کا مدار تھا۔اس کے علاوہ آپ کی ذات مبارکہ میں   بے شمار ایسے اوصاف تھے جو آپ کی شخصیت کی عکاسی کرتے تھے اور دیکھنے والا اُن اَوصاف کے سبب آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ کی حیات طیبہ سے متاثر ہوجاتاتھا۔ یقیناً یہ تمام اوصاف آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ کو بارگاہِ رسالت سے عطا ہوئے تھے۔آپ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ سراپا خیر ہی خیر تھے۔چنانچہ ،

فاروقِ اعظم کی ذات سراپا خیر ہے :

حضرت سیِّدُنا جابربن عبداللہ رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہسےروایت ہے کہ ایک بار امیرالمؤمنین حضرت سیِّدُناعمر فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ نے خلیفۂ رسول اللہ حضرت سیِّدُنا ابوبکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہ کو یوں   پکارا:  ’’ یَا خَیْرَ النَّاسِ بَعْدَ رَسُولِ اللہ یعنی اے رسول اللہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَا لٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے بعد امت میں   بہترین شخص! ‘‘  یہ سن کر امیر المؤمنین حضرت سیِّدُناابوبکر صدیق رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہنے ارشاد فرمایا:  ’’ اَمَا اِنَّكَ اِنْ قُلْتَ ذَاكَ فَلَقَدْ سَمِعْتُ رَسُولَ اللہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ یَقُولُ مَا طَلَعَتِ الشَّمْسُ عَلَى رَجُلٍ خَيْرٍ  مِنْ عُمَرَ یعنی آپ نے مجھے یوں   کہہ دیا ہے تو سنیےکہ میں   نے رسول اللہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَا لٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم سے سنا ہےکہ  ’’ عمر سے بہتر کسی انسان پر آج تک سورج طلوع نہیں   ہوا۔ ‘‘   ([1])

مدینہ منورہ میں   سب سے بہتر:

حضرت سیِّدُنا ثابت بن حجاج رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہسے روایت ہے کہ امیر المؤمنین حضرت سیِّدُنا عمر فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہنے حضرت سیِّدُنا ابوسفیان رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہکی بیٹی کے لیے نکاح کا پیغام بھجوایا ،  انہوں   نے انکار کردیاتو دو عالم کے مالِک و مختار ،  مکی مَدَنی سرکار صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم  نے فرمایا:  ’’ مَا بَیْنَ لَابَتَیِ  الْمَدِ یْنَۃِ رَجُلٌ خَیْرٌ مِنْ عُمَرَ

تیسرا باب

اوصاف فاروقِ اعظم

 



[1]     ترمذی  ، کتاب المناقب ،  مناقب عمر بن خطاب  ،  ج۵ ،  ص۳۸۴ ،  حدیث: ۳۷۰۴۔



Total Pages: 349

Go To