Book Name:Faizan e Farooq e Azam jild 1

٭…عربی ،  اُردو اور فارسی تینوں   طرح کی مختلف کتب کے علاوہ خاص  ’’ سیرت فاروق اعظم ‘‘  پر لکھی گئی مشہور ومعروف کتب کو بھی سامنے رکھا گیا ہے نیز بعض کتب کی عدم دستیابی کے سبب اُن کے مطبوعہ کمپیوٹر نسخے انٹرنیٹ سے بھی ڈاؤن لوڈ کیے گئے ہیں  ۔

٭… ’’ المدینۃ العلمیۃ ‘‘  کی کتب سے مواد کے لیے مجلس المدینۃ العلمیہ اور مجلس آئی ٹی کی مشترکہ پیش کش  ’’ المدینہ لائبریری ‘‘   سافٹ ویئر سے مدد لی گئی ہے۔

٭…عربی مواد کے لیے مختلف مطبوعہ عربی کتب کے علاوہ عربی کتب کے کمپیوٹر سافٹ ویئرز سے بھی مدد لی گئی ہے۔

٭…سیرت فاروقِ اعظم کے حوالے سے مشہورومعروف مگر مستند واقعات کو لیا گیا ہے۔

٭…جس مقام سے مواد لیا گیا فقط اُسی مقام پر اکتفا نہیں   کیا گیا بلکہ اُس مواد کے اصلی ماخذ کتب احادیث ،  شروح حدیث ،  کتب تفاسیر ،  کتب سیر وتاریخ وفقہ وغیرہ تک پہنچنے کی حتی المقدور کوشش کی گئی ہے۔

٭…جدید دور کے تقاضوں   کے مطابق انٹرنیٹ کے ذریعے مختلف ویب سائٹ سے بھی مواد لیا گیا ہے۔

٭… ’’ سیرت فاروقِ اعظم ‘‘  کے حوالے سے لکھے گئے مختلف مضامین (Articles)سے بھی مدد لی گئی ہے۔

٭…مواد جمع کرتے وقت اِس بات کا خصوصی خیال رکھا گیا ہے کہ موضوع ومن گھڑت روایات سے احتراز کیا جائے ،  

نیز مواد جمع کرنے کے بعد تخریج کرتے وقت بھی اِس بات کا خصوصی خیال رکھا گیا ہے۔

(2)…جمع شدہ مواد کی ترتیب واُسلوب:

کسی بھی کتاب کی اہمیت اور اُس کے مصنف یا مؤلف کی تصنیفی یا تالیفی صلاحیت کا اندازہ اُس کتاب کی ترتیب واسلوب سے ہوتاہے کہ مصنف نے موضوع کے اعتبار سے مواد کو مرتب کیا ہے یا نہیں  ؟  ’’ فیضانِ فاروقِ اعظم  ‘‘  میں   مواد کی ترتیب واسلوب کے حوالے سے درج ذیل اُمور کو پیش نظر رکھا گیا:

٭اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  ’’ المدینۃ العلمیۃ ‘‘   تبلیغ قرآن وسنت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کا ایک علمی وتحقیقی شعبہ ہے ،  اِس کی کتابوں   کو علمائے کرام ،  مفتیانِ عظام کے علاوہ چونکہ عام اِسلامی بھائی بھی کثرت سے پڑھتے ہیں   اِسی لیے اِس کتاب کی ترتیب میں   تحقیقی واِصلاحی دونوں   اسالیب کو پیش نظر رکھا گیا ہے۔

٭… ’’ فیضانِ فاروقِ اعظم ‘‘   کو مرتب کرتے ہوئے مشکل اور پیچیدہ الفاظ سے احتراز کرتے ہوئے عام فہم زبان استعمال کی گئی ہے۔البتہ جہاں   ضرورتاً اصطلاحات یا مشکل الفاظ ذکر کیے گئے ہیں   وہاں   ہلالین  ’’ (…) ‘‘   میں   اُن کا ترجمہ یا تسہیل کردی گئی ہے۔

٭…صحابہ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان  کی سیرت طیبہ کو بیان کرنے کا معاملہ نہایت ہی حساس اور ایک تیز دھار والی تلوار پر چلنے کے مترادف ہے جس میں   چھوٹی سی غلطی کسی بڑے نقصان کا سبب بھی بن سکتی ہے ،  یہی وجہ ہے کہ  ’’ فیضانِ فاروقِ اعظم ‘‘   سمیت علمیہ کی تمام کتب میں   ادب واحترام سے بھرپور اِنتہائی محتاط زبان کا التزام کیا جاتا ہے۔

٭…سیرت کو بیان کرنے کے کئی اسلوب ہیں  :  (۱)تاریخ کے اعتبار سے (۲)واقعات کے اعتبار سے (۳) حالات زندگی کے اعتبار سے (۴) اور مختلف ابواب بنا کر مکمل حیات کو بیان کرنا وغیرہ ۔ ’’ فیضانِ فاروقِ اعظم ‘‘   میں   سیِّدُنا امام جلال الدین سیوطی شافعی عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللّٰہِ الْقَوِی  کی مشہور کتاب  ’’ تاریخ الخلفاء ‘‘   کا اسلوب یعنی  ’’ مختلف ابواب بنا کر مکمل حیات کو بیان کرنا ‘‘   اختیار کیا گیا ہے۔

٭…مواد کو مرتب کرتے ہوئے مختلف روایات وواقعات کے تحت اِصلاحی مدنی پھول بھی پیش کیے گئے ہیں  ۔

٭…جسروایت یا واقعے سے کوئی عقیدۂ اہلسنت ثابت ہوتا ہے تو اُس کی نشاندہی بھی کی گئی ہے۔

٭…بعض جگہ اختلافی اقوال کوبیان کرنے کے ساتھ ساتھ اُن میں   مطابقت بھی ذکر کردی گئی ہے۔

٭…مواد کو مرتب کرتے ہوئے اس بات کا خاص التزام کیا گیا ہے کہ کتاب علمی وتحقیقی مواد سے بھرپور ہو ،  فقط سرخیاں   (Heading)لگانے پر اکتفاء نہیں   کیا گیا۔

٭… روایات وواقعات کو بیان کرتے ہوئے حتی المقدور اِس بات کی کوشش کی گئی ہے کہ قاری(یعنی کتاب پڑھنے والے) کا ذوق وشوق برقرار رہے۔

٭…انبیائے کرام عَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام ،  صحابہ کرام عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان  اور اولیائے عظام رَحِمَہُمُ اللّٰہُ السَّلَام کے اسمائے مبارکہ کے ساتھ دعائیہ کلمات کا التزام کیا گیا ہے۔

٭…علمائے کرام ،  واعظین وخطباء حضرات کے لیے مختلف روایات وواقعات میں   مخصوص جملوں   کی عربی عبارت مع ترجمہ بھی ذکر کردی گئی ہے۔

٭…اِس بات کا خاص خیال رکھا گیا ہے کہ جو بات جس باب سے تعلق رکھتی ہے اُسی باب میں   ذکر کی جائے۔

٭…بعض جگہوں   پر سیِّدُنا فاروق اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہسے منسوب غلط باتوں   کی نشاندہی بھی کی گئی ہے۔

٭…اگر کسی روایت یا واقعہ کا تعلق چند ابواب سے ہے تو ایک باب میں   اُسے تفصیلی بیان کرکے دیگر ابواب میں   اجمالاً بیان کیا گیا ہے نیز بعض جگہ تفصیلی واقعے والے صفحے کی طرف اِشارہ بھی کردیا گیا ہے۔

 



Total Pages: 349

Go To