Book Name:Guldasta e Durood o Salam

ہے آپ اُس کی پیٹھ میں نیزہ ماریں گے ، اُس سے وہ واصِلِ جہنَّم ہوگا ۔  

آپ عَلَیْہِ السَّلام کے زمانے میں ہر طرف اَمْن قائم ہوگا ، بُغْض وعَداوَت اُخُوَّت ومَحَبَّتمیں بدل جائے گی، کُفر و ضَلالت کی تاریکیاں خَتْم ہوجائیں گی اور ہر طرف پرچمِ اسلام لہراتا نظر آئے گا ۔ آپ نکاح کریں گے اَولاد بھی ہوگی پھر آپ وَفات فرمائیں گے ۔ بعدِ وفات آپ روضۂ رسول میں مَدفون ہوں گے ۔

ان کے علاوہ بھی اور بہت سی عَلامات ہیں ۔ جب یہ نشانیاں پوری ہوجائیں گی تو مسلمانوں کی بغلوں کے نیچے سے ایک خُوشبودار ہوا گزرے گی جس سے تمام مسلمانوں کی وَفات ہو جائے گی، اس کے بعدپھر چالیس برس کا زَمانہ ایسا گُزرے گا کہ اس میں کسی کے اَولاد نہ ہو گی، یعنی چالیس برس سے کم عُمر کا کو ئی نہ رہے گا اور دُنیا میں کافِر ہی کافِر ہوں گے ۔

پھر اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ حضرت اِسرافیل عَلَیْہِ السَّلام کو صُور پھو نکنے کا حکم ارشاد فرمائے گا ، شُروع شُروع اس کی آواز بہت باریک ہوگی اور رَفتہ رَفتہ بہت بُلَنْد ہو جائے گی، لوگ کان لگا کر اس کی آوازسُنیں گے اور بے ہوش ہو کر گِر پڑیں گے اور مر جائیں گے ، آسمان، زمین، پہاڑ، یہاں تک کہ صُور اور اِسرافیل اور تمام مَلائکہ فَنا ہو جائیں گے ، اُس وَقت سوائے اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ کے کوئی نہ ہوگا، وہ فرمائے گا :  ’’لِمَنِ الْمُلْکُ الْیَوْمَ‘‘آج کس کی بادشاہت ہے ۔ کوئی جَواب دینے والا نہ ہوگا ، پھر خُود ہی فرمائے گا  :  لِلّٰہِ الْوَاحِدِ الْقَہَّارِیعنی صرف اللّٰہ واحدقَہَّار کی سَلْطَنَت ہے ۔

پھر جب اللّٰہتعالیٰ چاہے گا ، اِسرافیل کو زِندہ فرمائے گا اورصُور کو پیدا کرکے دوبارہ پھونکنے کا حکم دے گا، صُور پھونکتے ہی تمام اَوَّلین و آخِرین، مَلائکہ و اِنس و جن اور تمام حیوانات موجود ہو جائیں گے ۔ سب سے پہلے حُضُورِ اَنورصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمقَبرِ مُبارک سے یوں برآمد ہونگے کہ دَہنے ہاتھ میں سیِّدُنا صدیقِ اکبر رَضِیَ اﷲ تَعالٰیعَنْہ کا ہاتھ، بائیں ہاتھ میں سیِّدُنا فاروقِ اعظم رَضِیَ اﷲُ تَعَالٰی عَنْہ کا ہاتھ ہوگا ، پھر مکہ مُعظَّمہ ومَدینہ طیبہ کے مَقابر میں جتنے مسلمان دَفن ہیں ، سب کو اپنے ہمراہ لے کر میدانِ حشر میں تشریف لے جائیں گے ۔          (بہارشریعت، ۱ / ۱۱۶تا ۱۲۹، ملتقطا)

قیامت کے دن لوگ اپنی اپنی قَبروں سے بَرہَنہ بدن اُٹھیں گے کوئی پیدل ہوگا ، کوئی سوار ، جب کہ کافرمُنہ کے بَل چلتے ہوئے میدان حشرکو جائیں گے اور کسی کو فِرِشتے گھسیٹ کرلے جائیں گے ۔ پچاس ہزار سال کا دن ہوگا، تانبے کی دَہکتی ہوئی زمین ہوگی ۔ سورج ایک میل کے فاصلے پر رہ کر آگ برسارہا ہوگا ہر ایک اپنے پسینے میں نہا رہا ہوگا، شِدَّتِ پیاس سے زبانیں سوکھ کر کانٹا ہوجائیں گی ۔ نَفْسِی نَفْسِی کاعالَم ہوگا اوراس کڑے وَقت میں کوئی پُرسانِ حال نہ ہوگا ۔ اس پریشانی سے نَجات کے لیے اَہلِ محشر سفارشی تلاش کریں گے جو اُنہیں اس مُصیبت سے نَجات دلائے  ۔ چُنانچہ لوگ گرتے پڑتے حضراتِ اَنبیاء کرام عَلَیْھِمُ السَّلامکی بارگاہ میں حاضرہوں گے اور اپنی سفارش کے لئے دَرْخَواست کریں گے لیکن (یکے بعد دیگرے ) تمام اَنبیاء یہی کہیں گے کہ کسی اور کے پاس جاؤ ۔  یہاں تک کہ لو گ حضرت عیسٰی عَلَیْہِ السَّلام کے پاس آئیں گے آپ عَلَیْہِ السَّلامبھی یہی جواب دیں گے تولوگ عرض کریں گے ہم کس کے پاس جائیں ؟ آپ عَلَیْہِ السَّلام  فرمائیں گے تم محمدِعَرَبی صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے پاس جاؤ وہی تمہاری شَفاعت فرمائیں گے  ۔

اب لوگ ٹھوکریں کھاتے ، روتے چلاتے شَفِیْعُ الْمُذْنِبِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی بارگاہِ بیکس پناہ میں حاضِر ہوکر شَفاعت کے لئے عرض کریں گے حُضُور فرمائیں گے شَفاعت کے لئے میں ہی ہوں ۔ پھرآپ بارگاہِ الہٰی میں سجدہ کریں گے ارشاد ہوگا اے محمد صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم! اپنا سر اُٹھاؤ اور کہو تمہاری سنی جائے گی، جو مانگوگے ملے گا اور شَفاعتکرو تمہاری شَفاعت قبول کی جائے گی ۔  اب شَفاعت کا سلسلہ شُروع ہوگا ، حُضُور علیہ الصلوۃ و السلام اپنی گُنہگار اُمَّت کی  شَفاعت فرماکرا نہیں  جَنَّت میں داخل فرمائیں گے ۔ (ملخص از بہارشریعت)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

            میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! مَدینے کے تاجدار، شفیعِ روزِشُمار صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی  شَفاعتپانے کا ایک ذَرِیعہ آپعَلَیْہِ السَّلام کی ذاتِ بابَرَکت پر کثرت سے دُرُودِپاک پڑھنا بھی ہے ۔ چُنانچہ

حضرتسَیِّدُنا  ابُو دَرداء رَضِیَ اللّٰہ تَعَالٰیعَنْہسے روایت ہے کہ نبیِّ کریم، رؤف رَّحیم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمنے فرمایا : ’’مَنْ صَلَّی عَلَیَّ حِینَ یُصْبِحَ عَشْراً، وَحِینَ یُمْسِیَ عَشْراً یعنی جس نے مجھ پر دس مرتبہ صبح اور دس مرتبہ شام دُرُودِپاک پڑھا ، اَدْرَکَتْہُ شَفَاعَتِی یَوْمَ الْقِیَامَۃِاسے روزِ قیامت میری شَفاعت نصیب ہو گی ۔ ‘‘ (مجمع الزوائد، کتاب الاذکار، باب مایقول اذا اصبح واذا امسی، ۱۰ / ۱۶۳، حدیث :  ۱۷۰۲۲)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

اے ہمارے پیارے اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ!ہمیں حُضُور صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی ذاتِ طیبہ پر کثرت سے دُرُودِپاک پڑھنے کی توفیق عطافرما اورروزِ محشر آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی شَفاعت سے بہرہ مند فرما ۔  اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

بیان نمبر : 52

سَتَّر ہزار فِرِشتوں کا نُزُول

حضرت سَیِّدُنا کَعْب رَضِی اللّٰہ تَعالٰیعَنْہنے فرمایا  :  ’’مَا مِنْ فَجْرٍ یَطْلُعُ اِلَّا نَزَلَ سَبْعُوْنَ اَلْفًا مِنَ الْمَلَائِکَۃِحَتّٰی یَحُفُّوْا بِالْقَبْرِ، ہر صُبح ستر ہزار فِرِشتوں کا نُزُول ہوتا ہے یہاں تک کہ وہ قَبرِ انور کو گھیر لیتے ہیں  ۔ ’’یَضْرِبُوْنَ بِاَجْنِحَتِہِمُ الْقَبْرَ وَیُصَلُّونَ عَلَی النَّبِیِّ صَلَّی اللَّہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ، اپنے پروں کو روضئہ رسول سے مَس کرکے نبیِّ کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمپر دُرُود شریف پڑھتے رہتے ہیں ، ’’ حَتّٰی اِذَا اَمْسَوْا عَرَجُوْا وَہَبَطَ سَبْعُوْنَ أَلْفًاحَتّٰی یَحُفُّوْا بِالْقَبْر، شام ہوتے ہی یہ فرشتے واپس چلے جاتے ہیں اور مزید ستّر ہزار فِرِشتے نازِل ہوتے ہیں  جو قبرِ انور کو گھیر لیتے ہیں ، ’’ یَضْرِبُوْنَ بِاَجْنِحَتِہِمْ فَیُصَلُّونَ عَلَی النَّبِیِّ، وہ بھی اپنے پروں کو اُس سے مَس کرکے نبیِّ کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمپر دُرُود شریف پڑھتے رہتے ہیں (یونہی) ستَّر ہزار فِرِشتے رات اور ستَّر ہزار فِرِشتے دن کو ہوتے ہیں  ۔ یہاں تک کہ قیامت کے دن جب سرکارِ مدینہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی قبرِ انور کھلے گی تو آپ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمستَّر ہزار فِرِشتوں کے جُھرمٹ میں باہر تشریف لائیں گے جواپنے پر پھیلائے دوڑتے ہوں گے ۔  (جلاء الافہام، ص۶۰)

 



Total Pages: 141

Go To