Book Name:Ihtiram e Muslim

         بے چین دلوں کے چین،  رحمتِ دارین  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا :  ’’لڑکا یتیم ہو تو اس کے سر پر ہاتھ پھیرنے میں  آگے کی طرف لے آئے اور بچّے کا باپ ہو تو ہاتھ پھیرنے میں  گردن کی طرف لے جائے۔‘‘    (مُعْجَم اَ وْسَط ج۱ ص۳۵۱ حدیث۱۲۷۹)

عورت سے نبہانے کی کوشش کیجئے

          مرد کو چاہئے کہ اپنی زَوجہ کے ساتھ حسن سلوک کرے ۔اور اُس کو حکمتِ عملی کے ساتھ چلائے۔ چنانچِہ میٹھے میٹھے آقا صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ   کا فرمانِ حکمت نشان ہے :  ’’بیشک عورت پسلی سے پیدا کی گئی ہے تمہارے لئے کسی طرح سیدھی نہیں  ہوسکتی اگر تم اس سے نفع چاہتے ہوتو اس کے ٹیڑھے پن کے ساتھ ہی نفع حاصِل کرسکتے ہو اور اگر اس کو سیدھا کرنے لگو گے تو توڑ ڈالو گے

اور اس کا توڑنا طلاق دینا ہے۔‘‘ ( مُسلِم ص۷۷۵ حدیث۱۴۶۸)

 زوجہ کے ساتھ نَرمی کی فضیلت

          معلوم ہوا کچھ نہ کچھ خلافِ مزاج حرکتیں  اس سے سرزد ہوتی ہی رہیں  گی۔مرد کو چاہئے کہ صبر کرتا رہے ۔ نبیوں  کے سروَر،  حسنِ اَخلاق کے پیکر ،  محبوب رب اکبر  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کا فرمانِ روح پرور ہے : ’’کامل ایمان والوں  میں  سے وہ بھی ہے جو عمدہ اَخلاق والا اور اپنی زَوجہ کے ساتھ سب سے زیادہ نَرم طبیعت ہو۔‘‘     (ترمِذی ج۴ص۲۷۸ حدیث۲۶۲۱)

عورت کے ساتھ درگزر کا معاملہ رکھئے

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو ! اِس حدیثِ پاک میں  اُن لوگوں  کے لئے دعوتِ فکر ہے جو بات بات پر اپنی زَوجہ کو جھاڑتے بلکہ مارتے ہیں۔ ایک صنف نازُک پر قوت کا مظاہرہ کرنا اور خوامخواہ رعب جھاڑنا مردانگی نہیں۔اگرچہ عورت کی بھول ہو تب بھی درگزرسے کام لینا چاہئے کہ جب عورت سے کثیرمنافع بھی حاصل ہوتے ہیں  تو اُس کی نادانیوں پر صبربھی کرنا چاہئے ۔نبی رحمت،   شفیع امت صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ   کا فرمانِ عالیشان ہے : ’’مؤمن مرد مومنہ عورت سے دشمنی نہیں  رکھ سکتا۔اگر اس کی ایک خصلت بری لگے گی تو دوسری پسند آجائے گی۔‘‘( مُسلِم ص۷۷۵ حدیث۱۴۶۹)

 نمک زیادہ ڈال دیا

          کہتے ہیں   : ایک آدَمی کی بیوی نے کھانے میں  نمک زیادہ ڈال د یا۔ اسے غصّہ  تو بَہُت آیامگر یہ سوچتے ہوئے وہ غصے  کو پی گیا کہ میں  بھی تو خطائیں  کرتا رَہتا ہوں اگر آج میں  نے بیوی کی خطا پر سختی سے گرفت کی تو کہیں  ایسا نہ ہوکہ کل بروزِقیامت اللہ عَزَّ وَجَلَّ  بھی میری خطاؤں  پر گرفت فرمالے ۔چنانچہ اُس نے دل ہی دل میں  اپنی زَوجہ کی خطا معاف کردی۔ اِنتقال کے بعد اس کوکسی نے خواب میں  دیکھ کر پوچھا،   اللہ عَزَّ وَجَلَّ نے آپ کے ساتھ کیا معاملہ فرمایا  ؟  اُس نے جواب دیا کہ گناہوں  کی کثرت کے سبب عذاب ہونے ہی والاتھا کہ اللہ عَزَّ وَجَلَّ  نے فرمایا :  میری بندی نے سالن میں  نمک زیادہ ڈال دیا تھا اور تم نے اُس کی خطا معاف کردی تھی ،  جاؤ میں بھی اُس کے صلے میں  تم کوآج معاف کرتا ہوں۔

        میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو !  عاشقان رسول کے مدنی قافلے میں سفرکی سعادت اور ہر ماہ مَدَنی اِنعامات کا رسالہ پر کر کے جمع کروانے کی برکت سے  اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ وَجَلَّ  بطفیل مصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  گھریلو شکر رَنجیاں  دُور ہوں  گی اور آپ کا گھر خوشیوں  کا گہوارہ بنے گا اور  اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ وَجَلَّ آپ کے خاندان کو مدینۂِ منوّرہ زَادَھَا اللہُ شَرَفاً وَّ تَعْظِیْماً   کا نظارہ نصیب ہوگا۔    ؎  

سویا ہوا نصیب جگا دِیجئے حضور                    میٹھا مدینہ مجھ کو دکھا دیجئے حضور

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب !                      صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

شوہر کے حُقُوق

          بیوی کو بھی چاہئے کہ اپنے شوہر کیساتھ نیک سلوک کرے۔ چنانچہ میٹھے میٹھے آقا،  مدینے والے مصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کا فرمانِ



Total Pages: 14

Go To